یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز لاہور نے کورونا سے بچاؤ کی ویکسین تیار کرنے کا دعویٰ کیا ہے ۔

 پنجاب حکومت کی 10 کروڑ روپے کی فنڈنگ سے کورونا ویکسین کی تیاری کیلئے جانوروں پر 6 ماہ تک ٹرائل کیے گئے

یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز لاہور نے کورونا سے بچاؤ کی ویکسین تیار کرنے کا دعویٰ کیا ہے ۔ 

ڈائریکٹر مائیکروبائیولوجی ویٹرنری یونیورسٹی پروفیسر طاہر یعقوب کا کہنا ہے کہ بندر ، چوہے اور خرگوش پر 6 ماہ تک ٹرائل کیے گئے جس کے بعد اب ویکسین انسانوں پر ٹرائل کیلئے تیار ہے۔

 پروفیسرطاہر یعقوب نے جیو نیوز کو بتایا کہ پنجاب حکومت کی 10 کروڑ روپے کی فنڈنگ سے کورونا ویکسین کی تیاری کیلئے جانوروں پر 6 ماہ تک ٹرائل کیے گئے۔

انہوں نے بتایا کہ کورونا کی پہلی اور چوتھی لہر کے ویرینٹ کو غیر فعال بنا کر چوہے، خرگوش اور بندر پر تجربہ کیا گیا ، جانوروں پر کامیاب ٹرائلز کے بعد کورونا سے بچاؤ کی 167 خوراکیں انسانی ٹرائلز کیلئے تیار ہیں لہٰذا محکمہ صحت پنجاب اب اسے انسانوں پر استعمال کرسکتا ہے۔

پروفیسر طاہر یعقوب کا دعویٰ ہے کہ ویکسین کی دو خوراکیں 21 دن کے وقفے کے بعد لگائی جاسکیں گی جب کہ بین الاقوامی ویکسین کے مقابلے میں یہ ویکسین معیار میں کسی طرح کم نہیں۔

پروفیسر طاہر یعقوب نے مزید دعویٰ کیا کہ یونیورسٹی ہر قسم کے وائرس کی ویکسین تیار کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔