کراچی میں مکمل لاک ڈاؤن کی مخالفت

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سربراہ این سی اوسی اسد عمر نے کراچی میں مکمل لاک ڈاؤن کی مخالفت کردی اور کہا شہر بند کرنا کورونا کاعلاج نہیں، ایس اوپیز پر عملدرآمد کیلئے سندھ حکومت سے ہرممکن تعاون کریں گے۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے سربراہ اسد عمر نے ملک میں کورونا صورتحال کے حوالے سے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا سندھ حکومت کورونا کا پھیلاؤ روکنے کیلئے ہرممکن کوشش کررہی ہے، لاک ڈاؤن لگانے کے بعد دوبارہ کھولتے ہیں تو پھیلاؤ پھر ہوجاتاہے، کئی لوگ اب بھی کورونا کو سنجیدہ نہیں سمجھ رہے ہیں، جیسے ہی وبا کم ہوتی ہے تو لوگ سمجھتے ہیں یہ ختم ہوگئی ہے۔اسد عمر نے کراچی میں مکمل لاک ڈاؤن کی مخالفت کرتے ہوئے کہا پورے پورے شہر بند کرنا اس وبا کا علاج نہیں ہے، ایس اوپیزپر اچھے طریقے سے عملدرآمد ہو جائے تو کامیابی حاصل ہوسکتی ہے، سندھ حکومت کو ایس اوپیز پرعملدرآمد کیلئے ہرممکن تعاون کریں گے، سندھ حکومت کورینجرز،فوج سمیت ہر سہولت مہیاکی جائے گی، وباسے مکمل طورپر نکلنا چاہتے ہیں تو ویکسین واحد ہے۔وفاقی وزیر نے کہا کہ سندھ حکومت انتہائی متحرک انداز میں کام کر رہی ہے لیکن ملک کو بند نہیں کر سکتے کیونکہ اس طرح دیہاڑی دار طبقہ بری طرح متاثر ہوگا۔اسد عمر نے کہا کہ کراچی میں کورونا سے متعلق تمام تر احتیاطی تدابیر پر عمل ہونا چاہئے جس کے لئے ہم رینجرز اور آرمی کی مدد فراہم کرنے کو تیار ہیں۔ معاون خصوصی صحت ڈاکٹرفیصل سلطان کا کہنا تھا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا کیسزکی شرح میں اضافہ ہوا ہے، ملک بھرمیں کورونامثبت کیسزکی شرح7.5 فیصد ہے، تشویشناک مریضوں کی تعداد 3 ہزار سے تجاوز کرگئی ہے۔معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ کراچی سمیت بڑے شہروں میں دباؤ بڑھ رہا ہے، بالخصوص کراچی میں کوروناکیسزمیں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے، کراچی میں 50 فیصد بیڈز پر کورونا مریض موجود ہیں۔