سندھ میں بھارتی کورونا کی انٹری

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)سندھ میں کورونا کا انڈین ویرینٹ سر اٹھانے لگا۔ پارلیمانی سیکریٹری صحت قاسم سومرو نے تصدیق کر دی ہے کہ لیاری کے ایک خاندان میں انڈین ویرینٹ سے نو افراد متاثر ہیں۔محکمہ صحت کے مطابق سندھ میں انڈین ویرینٹ کے 35 کیسز سامنے آگئے ہیں اور ان افراد کو بچانا مشکل ہو رہا ہے اور چار افراد کی حالت تشویشناک ہے۔پارلیمانی سیکریٹری صحت قاسم سومرو نے کہا کہ انڈین ویرینٹ سے متاثرہ افراد کے کانٹیکٹ ٹریسنگ کا عمل تیزی سے جاری ہے، سندھ حکومت کو انڈین ویرنیٹ سے بچاؤ کی تجاویز دے دی ہیں کیوں کہ وائرس کا یہ ویرینٹ انتہائی تیزی سے پھیلتا ہے۔سندھ میں کورونا کی بھارتی قسم کے 35کیسزسامنے آگئے،پارلیمانی سیکریٹری صحت سندھ نے مزید بتایا کہ ویکسین کرانے والے 9 افراد میں دوبارہ کورونا سے متاثر ہونے کے کیسز بھی سامنے آئے ہیں۔ کراچی میں بھارتی کورونا کی خطرناک قسم ڈیلٹا سے ایک ہی گھر کے 9 افراد متاثر ہوگئے ہیں۔تمام متاثرہ افراد کو لیاری جنرل اسپتال کے کورونا ایچ ڈی یو میں داخل کیا گیا ہے۔ انچارج کورونا آئی سی یووارڈ پروفیسر انجم رحمن کا کہنا ہے کہ متاثرہ افراد میں میاں، بیوی، بچے اور دیگر افرد شامل ہیں، جن کی عمریں دس سے 55 سال کے درمیان ہیں۔ متاثرہ فیملی ملیر کی رہائشی ہے۔ تمام افراد کو طبی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں، عملے کو بھی الرٹ کر دیا گیا ہے۔یاد رہے گزشتہ ہفتے راولپنڈی میں 20 افراد کورونا کی بھارتی قسم کی تشخیص ہوئی تھی۔خیال رہے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں ڈیلٹا وائرس کے کیسز سامنے آنے لگے، جو کورونا کی چوتھی لہر بھی ہو سکتی ہے، ڈیلٹا وائرس جو درحقیقت انڈین وائرس ہے، انتہائی خطرناک قرار دیا جارہا ہے۔