Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
اتوار 01 نومبر 2020
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

بجلی کے تعطل پر ہنگامے

ویب ڈیسک جمعرات 17  ستمبر 2020
بجلی کے تعطل پر ہنگامے

کراچی (کرائم رپورٹرO راؤعمران)شہر میں گزشتہ 4روز سے گرمی کی شدت میں اضافے کے بعد کے الیکٹرک نے گیس کی کمی کا جواز بنا کر شہر میں بد ترین لوڈشیڈنگ کا سلسلہ شروع کر دیا۔12گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کے باعث شہری بلبلا اٹھے۔ گارڈن‘ اورنگی‘ نیوکراچی میں بجلی کے تعطل پر ہنگامے گارڈن میں کے الیکٹرک کے دفتر پر علاقہ مکینوں کا دھاوہ، دفتر کے باہر احتجاج کیا گیا درجنوں موٹر سائیکلوں کو نقصان پہنچایا گیا اور وہاں موجود افراد کو بھی زدو کوب کیا۔ دو گھنٹے سے زائدجاری رہنے والے احتجاج کے باعث ٹریفک کی روانی بری طرح متاثر ہوئی ترجمان کے الیکٹرک کے مطابق گیس پریشر کی بحالی کے ساتھ صورتحال بہتر ہو جائیگی۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں ایک بار پھر بد ترین لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ شروع کر دیا گیا ہے اور اس بار کے الیکٹرک نے گیس کی کمی کا جواز بنایا ہے۔ شہر کے مختلف علاقوں جن میں لیاقت آباد‘نارتھ کراچی‘لا نڈھی‘ملیر‘شاہ فیصل کالونی‘بلدیہ ٹاؤن‘ سعید آباد‘اولڈ سٹی ایریا کے علاوہ مضافاتی آبادیوں میں 12 گھنٹے تک کی لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے جس کی وجہ سے شہر یو ں کو شد ید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے اور شہر یوں کی زندگی اجیرن ہوگئی ہے۔کراچی شدید گرمی کی لپیٹ میں ہے۔ گرمی میں شہری بلبلا رہے ہیں جبکہ کے الیکٹرک کی جانب سے منگل اور بدھ کی رات بیشترعلاقے تا ریکی میں ڈوبے رہے اور مستثنیٰ علاقوں میں بھی 4 سے 6 گھنٹے لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے جبکہ لوڈ شیڈنگ سے مثتثنی علاقوں میں بھی تین سے چار گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے۔شہر یوں نے بتایاکہ ایک جانب اضافی بل اور دوسری جانب بجلی کی طو یل بندش ہے، رات کا چین اور دن کا سکون کے الیکٹرک نے چھین لیا ہے گارڈن، اورنگی، نیوکراچی میں بجلی کے تعطل پرمشتعل شہری دڑکو پر نکل آئے جبکہ دوسرے روز بھی بجلی کی طویل بندش پر گارڈن جیلانی سینٹر کے قریب واقع کے الیکٹرک کے دفتر کے باہر علاقہ مکینوں کی کثیر تعداد جمع ہوگئی اور کے الیکٹرک کے خلاف نعرے بازی شروع کردی۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ ہر دوسرے روز کسی نہ کسی نئے بہانے کے ساتھ ہمیں پریشان کیا جاتا ہے اور شکایات پر کوئی سنوائی نہیں ہوتی۔ مظاہرین نے مشتعل ہوکر کے الیکٹرک کے دفتر پر پتھراؤ کیے اور وہاں موجود درجنوں موٹر سائیکلوں کو نیچے گرادیا اور انکے شیشے توڑنا شروع کردیے، احتجاجی مظاہرے کے باعث اطراف کی سڑکوں پر بد ترین ٹریفک جام ہوگیا۔ مظہارے کے باعث کیالیکٹرک کے ملازمین دفتر میں محصور ہو کر رہ گئے۔ احتجاج کے باعث ٹریک جام کی اطلاع پر پولیس کی بھاری نفری موقعر پر پہنچی اور مظاہرین سے مزاکرات شروع کیے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ گزشتہ روز بھی اس مقام پر احتجاج کیا گیا تھا تاہم مظاہرینکو مزاکرات کے بعد منتشر کر کے ٹریک کی روانی کو بحال کرایا گیادوسری جانب ترجمان کے الیکٹرک کے مطابق گیس پریشر میں کمی کے باعث چند علاقوں میں بجلی کی فراہمی میں تعطل آیا ہے۔-ایس ایس جی سی کی جانب سے کے الیکٹرک کو گیس پریشر کی بحالی کے ساتھ صورتحال بہتر ہو جائیگی۔کے الیکٹرک اور ایس ایس جی سی انتظامیہ مسلسل رابطے میں ہیں۔

(156 بار دیکھا گیا)

تبصرے