Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 18 نومبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

نواز شریف علاج کیلئے باہرگئے تو سنگین غلطی ہوگی

ویب ڈیسک پیر 28 اکتوبر 2019
نواز شریف علاج کیلئے باہرگئے تو سنگین غلطی ہوگی

کراچی (رپورٹ Oصابر علی) پاکستان کی سیاست میں اس وقت یہ سوال انتہائی اہمیت اختیار کرگیا ہے کہ سابق وزیراعظم میاں نواز شریف علاج کے لئے ملک سے باہر جائیں گے یا ملک میں رہ کر اپنا علاج کرائیں گے۔

نواز شریف کا علاج کہاں ہونا ہے‘ طے نہیں

 

حکومت کے ایوانوں میں سیاسی و عوامی حلقوں خود مسلم لیگ (ن) میں بھی یہ سوال موضوع بحث بنا ہوا ہے‘ خصوصاً ایسی صورت میں عدالت نے طبی بنیادوں پر نواز شریف کی رہائی کے احکامات دے دیئے‘ خود وزیراعظم عمران خان بھی نواز شریف کی صحت پر متفکر ہیں۔ وزیر داخلہ اعجاز شاہ نے کہا ہے کہ نواز شریف جہاں چاہیں علاج کراسکتے ہیں‘ حکومت کے سب سے بڑے اتحادی سینئر سیاستدان اور نواز شریف کے بدترین مخالف چوہدری شجاعت حسین نے بھی وزیراعظم عمران خان کو مشورہ دیا ہے کہ وہ نواز شریف کو علاج کے لئے ملک سے باہر جانے کی اجازت دے دیں۔

 

وفاقی وزیر شیخ رشید نواز شریف کی رہائی کے عمل کو ڈیل کاحصہ قرار دیتے ہوئے یہ دعویٰ کررہے ہیں کہ وہ ملک سے باہر جارہے ہیں‘ خود شہباز شریف بھی چاہتے ہیں کہ نواز شریف علاج کے لئے ملک سے باہر چلے جائیں‘ لیکن حکومت اور حکومت کے اتحادیوں کی تمام تر کوششوں اور خواہش کے باوجود میاں نواز شریف علاج کی غرض سے ملک سے باہر جانے کے لئے اب تک رضامند نہیں ہیں اور اب ان کی یہ خواہش ہے کہ وہ ملک میں ہی علاج کرائیں گے‘ اس لئے وہ شریف میڈیکل سٹی منتقل ہوگئے ہیں۔ بعض سیاسی حلقوں کا خیال ہے کہ اگر نواز شریف ان حالات میں علاج کی غرض سے ہی سہی بیرون ملک چلے گئے تو اُن کی سیاسی ساکھ کو بہت بڑا دھچکا پہنچے گا۔‘

 

جس طرح ماضی میں پرویز مشرف کے زمانے میں وہ ڈیل کرکے بیرون ملک چلے گئے تھے جس کے نتیجے میں ان کی سیاسی ساکھ بُری طرح متاثر ہوئی تھی اور اب پے درپے قربانیوں خصوصاً اپنی اہلیہ کلثوم نواز کو آخری سانسوں میں چھوڑ کر جس طرح وہ گرفتاری دینے کے لئے وطن واپس آئے‘ اس عمل سے ان کا سیاسی قد بڑھا تھا اور ان کی یہ قربانی ان کی سیاسی ساکھ کو بہتر بنانے میں بہت مددگار ثابت ہوئی تھی‘ تاہم اب جبکہ خود حکومت انہیں طویل عرصہ قید رکھ کر پریشانی میں مبتلا ہے اور چاہتی ہے کہ وہ بیرون ملک چلے جائیں۔ اس موقع پرا نہوں نے حکومت کی خواہش پر بیرون ملک جانے کا فیصلہ کیا تو وہ ایک اور بڑی سیاسی غلطی کریں گے۔

 

نواز شریف اس مشکل ترین حالات اور تمام تر طبیعت خرابی کے باوجود ان حالات کا مقابلہ کرنے کے لئے ڈٹے ہوئے دکھائی دیتے ہیں۔ شہباز شریف اور خاندان کے دیگر افراد سمیت اہم حلقے بھی انہیں اس بات پر رضامند کرنے کی کوشش کررہے ہیں کہ وہ اپنی بگڑتی ہوئی صحت کی فکر کرتے ہوئے علاج کے لئے بیرون ملک چلے جائیں۔ لندن میں موجود ان کے ڈاکٹر نے بھی ان کی حالیہ طبی رپورٹ اور ٹیسٹ کا معائنہ کرکے یہ ہی مشورہ دیا ہے کہ وہ علاج کے لئے لندن آجائیں گے‘ تاہم نواز شریف اس حوالے سے کیا فیصلہ کرتے ہیں‘ یہ انتہائی اہم ہے اور آئندہ چندروز میں اس حوالے سے اصل صورت حال سامنے آجائے گی۔

(204 بار دیکھا گیا)

تبصرے