Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 18  ستمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

ہاکس بےاسکینڈل، مرکزی کردار دانش سعید گرفتار

قومی نیوز بدھ 04  ستمبر 2019
ہاکس بےاسکینڈل، مرکزی کردار دانش سعید گرفتار

کراچی …. ہاکس بے میں اربوں روپے مالیت کی اراضی کی غیر قانونی منتقلی میں ملوث 20 گریڈ کے ممبر ایل یو دانش سعید کو اینٹی کرپشن پولیس نے منگل کو گرفتار کرلیا ۔

جرمن کٹنگ میں ملوث مزید سرکاری افسران لینڈ گریبرز کی گرفتاری کیلئے اینٹی کرپشن نے ڈیفنس‘ کلفٹن اور دیگر علاقوں میں چھاپے مارے ۔

3 روز قبل ہاکس بے کی 159ایکٹر اراضی کی غیر قانونی منتقلی اور حکومتی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچائے جانے پر وزیر اعلیٰ سندھ نے سختی سے نوٹس لیتے ہوئے ایک ہنگامی اجلاس طلب کیا تھا جس میں بورڈ آف ریونیو کے متعدد افسران و ملازمین سمیت ممبر لینڈ یوٹیلائزیشن دانش سعیدکو معطل کردیا تھا۔

دانش سعید نے اپنی جان بچانے کیلئے وزیر اعلیٰ کو گمراہ کیااور ایم ڈی اے کے ایڈیشنل ڈائریکٹر سہیل احمد خان کا نام لیا۔ جس پر وزیر اعلیٰ سندھ نے سہیل احمد خان کو بھی معطل کرکے اینٹی کرپشن کو شفاف انکوائری کا حکم دیا۔

یہ بھی پڑھیں :

ایل ڈی اے کی کرپشن کا ملبہ ایم ڈی اے پر ڈال دیاگیا

”سیون ونڈر سٹی فیز 2“جی ایف ایس بلڈرزکاایک اورشاندارمنصوبہ

اینٹی کرپشن نے تحقیقات کے بعد سہیل احمد خان کو کلین چٹ دی ‘ ذرائع کا کہنا ہے کہ اینٹی کرپشن کی تحقیقات میں ممبر لینڈ یوٹیلائزیشن دانش سعید نے ہوشربا انکشافات کئے ہیں اس سلسلے میں اینٹی کرپشن کی ٹیم باریک بینی سے تحقیقات میں مصروف ہے

تحقیقات کے بعد چیئرمین اینٹی کرپشن نے اپنی ابتدائی رپورٹ وزیر اعلیٰ سندھ کو پیش کردی ہے اور ملزم دانش سعید کی گرفتاری کے بعد تحقیقات کا دائرہ وسیع کردیا گیا ہے اور اینٹی کرپشن پولیس نے مزید ملزمان کی گرفتاری کا بھی عندیہ دیا ہے۔

واضح رہے کہ ملیر کی اربوں روپے مالیت کی 159ایکڑ زمین کو متبادل کے طور پر ہاکس بے میں الاٹ کرنے کی تفتیشی رپورٹ سوموار کو وزیراعلیٰ سندھ کو پیش کردی گئی تھی، رپورٹ میں ممبر ایل یو دانش سعید کو اس کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے سسٹم کے خالد یوسفی اور دیگر کو بھی ملوث قرار دیا گیا تھا

رپورٹ میں انکشاف کیاگیا تھا کہ ملزمان نے 50کروڑ روپے رشوت کے عوض اربوں روپے مالیت کی زمین صرف چھ کروڑ روپے کا چالان جاری کرکے الاٹ کرنے کی کوشش کی جبکہ زمین کی ملیر میں ملکیت بھی متنازعہ تھی

کیس کے تحقیقاتی افسر ضمیر عباسی کاکہنا ہے کہ وزیراعلیٰ کی جانب سے مزید احکامات کا انتظار ہے۔ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ دانش سعید کا پاسپورٹ اینٹی کرپشن نے گذشتہ روز ہی ضبط کرلیا تھا اور تفتیش کی حتمی کارروائی تک ان کی تحویل میں رہے گا

وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے سخت احکامات کے بعد دانش سعید کو معطل اورواقعہ میں ملوث ایل یو کے افسران عماد چاچڑ ، سہیل میمن، ایم اے شاہ اور دیگر عملے میر لیاقت علی‘ غضنفر علی عباسی‘ فیصل نظامانی‘محمد متین‘محمد زاہد ‘ عمران حمید‘شعیب خان‘ شمیم عباس‘ انیل احمد‘ عمران میمن‘ عامر علی‘ اشفاق ویسر‘ایاز احمد‘ علی اکبر اور امیر بخش کو فوری طور پر دیگر محکموں میں تبادلے کردیئے گئے تھے جس کا باقاعدہ نوٹیفکیشن نمبر1591/2019 ءبھی جاری کردیاگیا تھا۔

اینٹی کرپشن ذرائع کے مطابق دانش سعید نے ماضی میں تھر کول پروجیکٹ میں اپنی تعیناتی کے دوران بھی کرپشن کی تھی‘ اینٹی کرپشن ذرائع نے بتایا کہ سرکاری افسران کی مدد سے لینڈ گریبرز نے جرمن کٹنگ کرکے سینکڑوں ایکڑ سرکاری اراضی فروخت کی۔

طاقتور قبضہ مافیا میں ملوث سرکاری افسران اور قبضہ مافیا کے خلاف وزیر اعلیٰ نے سخت کارروائی کا حکم دیا جس کے بعد اینٹی کرپشن نے ڈیفنس ‘ کلفٹن اورشہر کے دیگر علاقوںمیں طاقتو ر مافیا کی گرفتارکیلئے چھاپے بھی مارے ۔

(127 بار دیکھا گیا)

تبصرے