Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 20  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

سندھ حکومت نے کراچی ڈبودیا

قومی نیوز منگل 30 جولائی 2019
سندھ حکومت نے کراچی ڈبودیا

کراچی ۔۔۔۔ شہرمیں پیر کے روز ہونے والی بارش سے کراچی ڈوب گیا‘ ندی نالوں میں طغیانی آگئی ‘ شہر میں بارش کے دوران کرنٹ لگنے سمیت 19 افراد ہلاک ہوگئے۔

شہریوں کاکہنا ہے کہ محکمہ موسمیات نے ایک ہفتہ قبل کراچی سمیت سندھ بھر میں شدید بارش ہونے کی اطلاع دے دی تھی

شہری انتظامیہ نے اخباری بیانات کی حد تک بارش سے نمٹنے کی تیاریاں کرلی تھیں‘ لیکن گزشتہ روز ایک دن کی بارش نے تمام تیاریوں کو بہا کر سمندر میں پھینک دیا

صوبائی حکومت اور شہر ی انتظامیہ کی کارکرگی کھل کر سامنے آگئی اور کراچی کا بیشتر علاقہ بارش کے پانی میں ڈوب گیا‘ شہر کی60 فیصد سڑکیں دریا کامنظر پیش کرتی رہیں

برسوں سے کچر کے اٹے نالوں کے اطراف نشیبی آبادیوں میں بارش کے پانی کے ساتھ گندا پانی بھی بھر گیا۔

یہ بھی پڑھیں : بارش سے بجلی کانظام پھر بیٹھ گیا

ڈیفنس‘ کلفٹن‘ پی ای سی ایچ سوسائٹی‘ ایڈمن سوسائٹی ‘ بفرزون‘ نارتھ ناظم آبادسمیت 100 آبادیوں میں سیلابی ریلہ داخل ہوگیا‘ رات گئے سکھن ندی کے قریب ڈیم ٹوٹ گیا‘ قریبی آبادی زیر آب آگئی اور میٹھادرکے گھروں کی چھتیں گرگئیں

شہر میں 500 عمارتوں نے بھی خطرے کا الارم بجادیا‘ پمپنگ اسٹیشنوں پر بجلی کے تعطل کے بعد واٹر بورڈز نے شہر میں پانی کے سنگین بحران کا خدشہ ظاہر کردیا ‘ شہریوں کو پانی احتیاط سے استعمال کرنے کی ہدایت کی ہے

یہ بھی پڑھیں : بارش کا سلسلہ شروع ، ہنگامی حالت نافذ

بارش کے باعث حکومت سندھ نے آج پرائیویٹ اور سرکاری تعلیمی اداروں میں چھٹی کا اعلان کیا ہے‘ جامعہ کراچی‘ وفاقی اردو یونیورسٹی کے تحت آج ہونے والے امتحانات بھی ملتو ی کردیئے گئے جبکہ شہرمیں ایک دن کی بارش کے باعث تاجروں کو 3 ارب روپے کا نقصان ہوگیا

شہر کی اہم مارکیٹیں اور بازار بھی زیر آب آگئے‘اولڈ سٹی ایریا کے ہول سیل تاجروں نے آج کا کاروبار بند کرنے کا اعلان کیا ہے

محکمہ موسمیات کے ڈائریکٹر سرفراز نے آج صبح قومی اخبار کو بتایا کہ 24 گھنٹے کے دوران کراچی میں 119 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہے‘ آج دوپہرکے بعد اور شام کو ایک بار پھر طوفانی بارش ہوگی

آج رات کو یہ سسٹم کمزورا ہوجائے گااور بدھ کے روز ختم ہوجائے گا‘ انہوںنے بتایا کہ آج صبح شہر کا درجہ حرارت 27 ڈگری سینٹی گریڈہے

یہ بھی پڑھیں : کراچی میں 27،28 جولائی کو بارش کا امکان

شہر میں سب سے زیادہ بارش سرجانی میں 119ملی میٹر اور سب سے کم ناظم آباد 39 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی‘ نارتھ کراچی میں 65 ‘ گلستان جوہر 52 ‘ اولڈ سٹی ایریا ‘پہلوان گوٹھ میں 54 ‘ پی ایف فیصل بیس پر 71‘ پی ایف مسرور بیس 40 ‘ جناح ٹرمینل پر 60 ‘ لانڈھی میں 43 ‘کیماڑی میں 40 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی

موسلا دھار بارش کے باعث شہر کے 10 نالوں میں طغیانی آگئی‘ محمودآباد نالہ اوور فلو ہونے کے باعث پی ای سی ایچ سوسائٹی میں سیلابی ریلہ داخل ہوگیا‘ بینکوں میں پانی داخل ہونے کی وجہ سے فرنیچر اور الیکٹرانکس کا سامان تباہ ہوگیا

ڈیفنس فیز فائیو ‘ فیز 8 ‘ فیز 4 کے علاقوں میں بھی بینکوں میں پانی داخل ہوگیا‘ جبکہ نیو کراچی‘ سرجانی‘ کورنگی ‘ لانڈھی‘ گڈاپ ‘ گلشن اقبال ‘ اورنگی ٹاﺅن ‘ بلدیہ ‘ سہراب گوٹھ کی 100 سے زائد کچی آبادیوں میں سیلابی کیفیت تھی

یہ بھی پڑھیں : کے الیکٹرک ناکام‘ بجلی بحران سنگین

ان آبادیوں میں مسجدوں سے اذانیں دی گئی اور خطرے کے سائرن بجائے گئے‘ مکینوں نے رات جاگ کر گزاریاسٹیل ٹاﺅن کے علاقے میں دیہہ ڈانڈو میں سکھن بری کے ڈیم ٹوٹ جانے سے بڑی آبادی میں زیر آب آگئی

آج صبح ابوالحسن اصفہانی روڈ پر بکرا گوٹھ میں مکان کی چھت گرنے سے 6 افراد ابراہیم‘ عامر‘ عمیر‘ الہ دین‘ ممتاز‘ میرخان زخمی ہوگئے‘ جبکہ میٹھا در ‘ فیریئر گل میں چھت کا ملبہ گرنے سے 35سالہ عمیر اور اس کی بیوی مہک زخمی ہوگئے

بارش کے باعث شہر کی 500 مخدوش عمارتوں کے مکینوں کو عمارتیں خالی کرنے کیلئے الرٹ جاری کیا گیاہے‘ ان عمارتوں میں زیادہ عمارتیں اولڈ سٹی ایریا میں ہیں‘ تاہم عمارتوں کے مکینوں نے عمارتیں خالی کرنے سے منع کردیا

مختلف علاقوں میں کرنٹ لگنے کے واقعات میں کم عمر چار بچوں اور ایک خاتون سمیت 19افراد جاں بحق ہوگئے جبکہ ملیر اور بلدیہ میں کے الیکٹرک کی بے حسی پر علاقہ مکینوں نے احتجاج بھی کیا۔

یہ بھی پڑھیں : ترقی کا سفر شروع ہوگیا‘ عمران خان

ملیرسٹی کے علاقے ملیر ڈاکخانے والی گلی میں پانی میں کھیلتے ہوئے دودوستوں کو کرنٹ لگ گیا ایس ایچ او زاہد حسین نے بتایا کہ متوفی بچوں کی شناخت 9سالہ عمر ولد رضا اور 10سالہ مہراب ولد محمد جبران کے نام سے ہوئی جو آپس میں دوست اور پڑوسی تھے

انھوں نے بتایا کہ علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کے الیکٹرک کی ہائی ٹیشن کے تارسے بچوں کوکرنٹ لگا جس پر علاقہ مکینوں نے کے الیکٹرک کے خلاف شدید احتجاج کیا۔ بوٹ بیسن کے علاقے ٹکری کالونی میں واقع ورکشاپ کے قریب کرنٹ لگنے سے30 سالہ اسماعیل جاں بحق ہوگیامتوفی شخص کا ذہنی توازن درست نہیں تھااورمتوفی شخص ٹکری کالونی کے راستے میں بجلی کے گھمبے سے کرنٹ لگنے سے جاں بحق ہو گیا۔

رضویہ کے علاقے ناظم آبادنمبر2 خاموش کالونی بجلی کے پول سے کرنٹ لگنے سے 35 سالہ عظیم ولد ضیاءالحسن ،ڈیفنس کے علاقے فیز فائیو خیابان تنظیم میں گھر کے اندر بجلی کا کرنٹ لگنے سے 30سالہ شرافت، گلستان جوہر تھانے کی حدود بلاک 19میں 18سالہ محمد رسول ولد فضل مولاہلاک ہوگئے

محمود آباد کے علاقے اختر کالونی میں بارش میں نہاتے ہوئے بجلی کے پول سے کرنٹ لگنے سے 11سالہ فرزانہ، فیروز آباد تھانے کی حدود نرسری اسٹاپ کے قریب بجلی کا کرنٹ لگنے 18سالہ ارشاد ولد بشیرناظم آباد پاپوش نگر صرافہ بازار میں بجلی کا کرنٹ لگنے سے 30سالہ سعد ولد احمد حسین بلدیہ 3 نمبر میں کرنٹ لگنے سے 35 سالہ ابراہیم جاں بحق ہوگیا علاقہ مکینوں نے ابراہیم کی ہلاکت پر حکومت اور کے الیکٹرک کے خلاف سراپا احتجاج کیا جس کے باعث بدترین ٹریفک جام ہوگیا

یہ بھی پڑھیں : تین تلوار میدان جنگ بن گیا

پولیس نے موقع پر پہنچ کر مشتعل افراد کو بات چیت سے منتشر کردیا۔سائٹ ایریا غنی چورنگی کے قریب 20 سالہ شاہ زمان، سہراب گوٹھ کے علاقے ایوب گوٹھ میں کرنٹ لگنے سے 48 سالہ خاتون گل بی بی کورنگی صنعتی ایریا کے علاقے علاقے کورنگی قیوم آباد گلی نمبر31میں قائم گھر میں کرنٹ لگنے سے 13 سالہ طالبعلم اکمل خان ولد دارو خان ۔چاکیواڑہ کے علاقے لیاری جونا مسجد کے قریب گھر میںپانی کی موٹر چلاتے ہوئے کرنٹ لگنے سے 30سالہ آدم ولد عثمان جاں بحق ہوگیا

سول ، جناح اور عباسی شہید اسپتال کے ایم ایل اوز کا کہنا ہے کہ بارش میں زیادہ تر کرنٹ لگنے کے واقعات پانی کی موٹر چلاتے ہوئے اور بجلی کے پول کے لگنے سے رونما ہوئے ہیں جس کی حکومت کی ان بارشوں میں میڈیا کے ذریعے عوام کو آگاہی دینا چاہیے۔

(277 بار دیکھا گیا)

تبصرے