Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 14 دسمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

بلاول کی امریکہ روانگی کی تیاری

قومی نیوز هفته 06 جولائی 2019
بلاول کی امریکہ روانگی کی تیاری

کراچی…وزیراعظم عمران خان کے دورہ امریکا سے محض چند روز قبل پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری بھی وہاں پہنچ رہے ہیں ‘ ٹائمنگ کے اعتبار سے پاکستان کے حکومتی سربراہ اور اپوزیشن کے ایک بڑے رہنما کا ایک ہی وقت میں ڈورہ امریکا خاصا اہم محسوس ہوتا ہے‘ وزیراعظم عمران خان 20 جولائی کو امریکا کے دورے پر روانہ ہونے والے ہیں اور 22 جولائی کو ان کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے اہم ملاقات شیڈول ہے جبکہ پیپلز پارٹی کے چیئرمین کی 15 جولائی کو امریکا روانگی متوقع ہے۔

پیپلز پارٹی کے معاملات سے واقفیت رکھنے والے حلقوں کا کہنا ہے کہ بلاول بھٹو زرداری کے دورہ امریکا کا پروگرام کافی عرصے پہلے طے کرلیا گیا تھا‘ تاہم توقع تھی کہ وہ 25 جولائی کے بعد امریکا کے دورے پر روانہ ہوں گے کیونکہ اپوزیشن کی جماعتوں نے گزشتہ دنوں مولانا فضل الرحمن کی میزبانی میں ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس کے موقع پر اتفاق رائے سے یہ فیصلہ کیا تھا کہ اپوزیشن کی تمام جماعتیں 25 جولائی کو موجودہ حکومت کے خلاف یوم سیاہ منائیں گی۔

اس فیصلے کو پیپلز پارٹی کی بھی تائید حاصل تھی۔ سابق صدر آصف علی زرداری کی نیب مقدمات میں گرفتاری کے بعد اس وقت پیپلز پارٹی کی سیاسی کمان بلاول بھٹو زرداری کے ہاتھ میں ہے اور موجودہ حکومت کے خلاف اپوزیشن کے پہلے ملک گیر احتجاج کے موقع پر بلاول بھٹو کی پاکستان میں موجودگی اپوزیشن کے سیاسی شو کو مؤثر ثابت کرنے کے لئے بہت ضروری تھی لیکن نئی پیش رفت کے بعد اب یہ بات سامنے آئی ہے کہ وہ 25 جولائی کو ملک میں موجود نہیں ہوں گے۔

یہ بھی پڑھیں : خان صاحب نئے انکل الطاف ہیں،بلاول بھٹو

بلاول بھٹو زرداری کی فی الوقت پاکستان میں موجودگی اس اعتبار سے بھی ضروری سمجھی جارہی تھی کہ پیپلز پارٹی 18 جولائی کو گھوٹکی میں ہونے والے ضمنی انتخاب میں اپنی کامیابی کے لئے اپنی بھرپور سیاسی قوت استعمال کررہی ہے‘ سندھ میں پیپلز پارٹی اپنی سیاسی ساکھ کا بھرم رکھنے کے لئے ہر قیمت پر اس الیکشن میں کامیابی حاصل کرنے کی خواہاں ہیں‘ اس الیکشن کی خصوصی اہمیت کے باعث پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اس ضمنی انتخاب کی براہ راست خود نگرانی کررہے ہیں لیکن اب ایسا محسوس ہوتا ہے کہ انہوں نے اپنی دوسری تمام سیاسی مصروفیات کو ادھورا چھوڑ کر دورہ امریکا کو سب پر فوقیت دی ہے۔

وزیراعظم عمران خان تو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملنے امریکا جارہے ہیں لیکن یہ راز ابھی تک نہیں کھل سکا ہے کہ بلاول بھٹو زرداری سیاسی مشکلات میں گھری ہوئی اپنی جماعت کو پریشانیوں سے نکالنے کے لئے کس ٹرمپ کارڈ کی تلاش میں امریکا جارہے ہیں۔

25 جولائی سے قبل بلاول بھٹو کی امریکا یاترا کا مطلب ہے کہ اس روز اپوزیشن نے یوم سیاہ کا جو پروگرام بنایا ہے وہ محض خانہ پری تک محدود رہے گا اور دن اپوزیشن کی سیاسی جماعتیں حکومت پر سیاسی دبائو ڈالنے کے حوالے سے کوئی قابل ذکر سیاسی شو نہیں کرسکیں گی اس وقت صرف پیپلز پارٹی نہیں بلکہ مسلم لیگ (ن) بھی سخت سیاسی آزمائشوں س دوچار ہے‘ اس کی پوری مرکزی قیادت جیلوں میں ہے یا پھر جیل جانے کی منتظر ہے‘ اس صورت حال میں اس کے لئے ممکن نہیں ہے کہ وہ 25 جولائی کے یوم سیاہ پر پنجاب میں کوئی کامیاب سیاسی شو کرسکے۔

باخبر سیاسی حلقوں کا کہنا ہے کہ اپوزیشن کی 2 بڑی جماعتیں مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی اس وقت حکومت کے خلاف کوئی بڑی احتجاجی تحریک منظم کرنے کا کٹھن راستہ اختیار کرنے کے بجائے موجودہ گرداب سے نکلنے کے لئے دوسرے محفوظ راستوں کی تلاش میں زیادہ سرگرداں ہیں۔

(476 بار دیکھا گیا)

تبصرے