Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 16 جولائی 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

مالی کروڑوں روپے کی 162گاڑیوں کا مالک نکلا

ویب ڈیسک جمعه 05 جولائی 2019
مالی کروڑوں روپے کی 162گاڑیوں کا مالک نکلا

لاہور /کراچی … کیبنٹ ڈویژن نے عدالتی فیصلے کے بعد نواز شریف کی ملنے والی مرسڈیز گاڑی کو برآمد کرلیا ہے جو مریم نواز ذاتی طور پر استعمال کررہی تھیں ، اس کے علاوہ جاتی امراء سے دیگر مسروقہ سامان بھی برآمد کیا گیا ہے۔

عدالتی فیصلے کے بعد حکومت نے شریف خاندان کو سرکاری گاڑی واپس کرنے کے لیے خط لکھا تھا۔ وزیراعلیٰ پنجاب کے ترجمان شہبازگل کے مطابق جرم ثابت ہونے پر تمام مراعات واپس کرنا ہوتی ہیں تاہم مریم نواز گاڑی واپس نہیں کررہی تھیں تاہم کیبنٹ ڈویژن نے کارروائی کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نوازشریف کو دی جانے والی مرسیڈیز گاڑی واپس لے کر سنٹرل پول میں جمع کرادی۔

سرکاری نوٹیفکیشن کے مطابق یہ گاڑی سابق وزیراعظم نواز شریف کو 31 مئی 2017 کو دی گئی تھی لیکن آج کل ان کے زیراستعمال نہیں تھی۔ ذرائع نے دعویٰ کیا کہ یہ گاڑی اس وقت مریم نواز کے زیراستعمال تھی۔

وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے ٹویٹ کیا شریف فیملی کی رہائشگاہ جاتی عمرہ سے مال مسروقہ برآمد ہونا شروع ہو گیا،قوم غربت کی چکی میں پس رہی تھی اور یہ لگڑری گاڑیوں کے مزے اٹھا رہے تھے ،میاں صاحب قوم کے پیسے پر مہنگی گاڑیوں کے مزے لوٹتے رہے ، آج جیل میں بیٹھ کر عوام کی باتیں محض دھوکا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : پاک افعان میچ میں تشدد ، برطانیہ کی مذمت

ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے معاون خصوصی کی ٹویٹ پرجوابی ٹویٹ میں کہافردوس باجی لوگوں کو سچ بتائیں،قانون کے تحت ہرسابق وزیراعظم کو ایک بلٹ پروف گاڑی حفاظت کیلئے دی جاتی ہے جوآپ نے زبردستی واپس لے لی،یہ آپ کیلئے فخرکانہیں شرم کا مقام ہے ،یہ ہرسابق وزیراعطم کا قانونی حق ہے جو اس کو پاکستان دیتاہے۔

اطلاعات کے مطابق رات گئے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے بھی سرکاری گاڑی واپس لے لی گئی۔نیب ذرائع کے مطابق بی ایم ڈبلیوگاڑی کیبنٹ ڈویڑن نے واپس لی۔ دوسری طرف سندھ میں مالی کے نام پر کروڑوں روپے مالیت کی 162گاڑیاں نکل آئی ہیں۔

خیرپور کا رہائشی مالی کھجور کے باغات میں کام کرتا ہے جس کا کہنا ہے کہ میرا گاڑیوں سے کوئی تعلق نہیں، تاہم ایف بی آر نے محنت کش کو شوکاز نوٹس جاری رکتے ہوئے اصل مالک کے خلاف کارروائی کی کوششیں تیز کردی ہیں۔

ذرائع کے مطابق تمام گاڑیاں کراچی سے خریدی گئیں اور ان کی خریداری میں سندھ کی حکمران جماعت کے رہنما ملوثٖ ہیں۔

(310 بار دیکھا گیا)

تبصرے