Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعه 23  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

عمران مودی ملاقات کےلئے بیک ڈور رابطے

ویب ڈیسک هفته 01 جون 2019
عمران مودی ملاقات کےلئے بیک ڈور رابطے

کراچی … حالیہ کشیدگی کی لہر کو کم کرنے کے لیے پاکستان اور بھارت نے کرغستان میں شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس کے دوران دونوں وزرائے اعظم کی ملاقات کیلئے بیک ڈور رابطے تیز کر دئیے ہیں اور مشترکہ دوست ممالک اس سلسلے میں تعاون کررہے ہیں ۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس میں بتا یا گیا ہے کہ مودی سرکار دوبارہ اقتدار میں آنے کے بعد فی الحال اپنے پڑوسی ملک سے کشیدگی بڑھانے کے موڈ میں نہیں اور اسی تناظر میں آئندہ ماہ کرغیزستان کے شہر بشکیک میں ہونے والے شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس کے دوران وزیر اعظم عمران خان اوربھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی ملاقات کیلئے دونوں ممالک کے درمیاں بیک ڈور ڈپلومیسی تیز کر دی گئی ہے۔

سفارتی ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان اور نومنتخب بھارتی وزیر اعظم نریندرمودی کے مابین ملاقات متوقع ہے۔ ملاقات کے دوران دونوں وزرائے اعظم باہمی تعاون کو فروغ دینے اور خطے میں امن و امان کیلئے بات چیت کریں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے اس سلسلے میں دونوں ممالک نے رابطے تیز کردیے ہیں جبکہ اس امر کا بھی امکان ہے کہ دونوں رہنماؤں کی ملاقات کے بعد مذاکرات کے باقاعدہ سلسلے کا بھی راستہ نکالا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں : جزیروں کی سحری —–جزیروں کی افطاری

دریں اثنا بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈوبتی معیشت، فروغ پاتے جرائم اور لڑکھڑاتی خارجہ پالیسی کو سہارا دینے کیلئے وزیراعظم نریندرمودی نے بھاری بھرکم کابینہ میں وزارتیں تقسیم کیں جس میں میرٹ سے زیادہ بندر بانٹ نظر آئی۔

وزیراعظم مودی نے اپنی جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے صدرامیت شاہ کو داخلہ امور کی اہم وزارت وار دی جبکہ سشما سوراج کی جگہ حیران کن طور پر سابق سیکرٹری وزارت خارجہ ایس جے شنکر کو منصب دیدیا ، کابینہ میں یہ سب سے غیر متوقع تبدیلی ہے۔

کابینہ میں 24 وفاقی وزرا اور 24 وزرائے مملکت کے علاوہ 9 ایسے وزرا مملکت رکھے گئے ہیں جو عام وزیر مملکت کی طرح اپنے محکمے کے وفاقی وزیر کی معاونت نہیں کرینگے بلکہ یہ آزاد حیثیت سے ایسے محکموں میں کام کرینگے جن کا کوئی وفاقی وزیر نہیں۔

(549 بار دیکھا گیا)

تبصرے