Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
اتوار 15  ستمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

پیٹرول 4.26 ڈیزل 4.5 روپے مہنگا‘ مہنگائی کی نئی لہر

ویب ڈیسک هفته 01 جون 2019
پیٹرول 4.26 ڈیزل 4.5 روپے مہنگا‘ مہنگائی کی نئی لہر

اسلام آباد/کراچی …… حکومت نے ماہ جون کیلیے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا ہے ، پیٹرول کی قیمت میں 4روپے 26پیسے فی لٹر، ڈیزل 4روپے 50پیسے فی لٹر ، مٹی کا تیل ایک روپے69پیسے فی لٹر اور لائیٹ ڈیز ل آئل کی قیمت میں ایک روپے 68پیسے فی لٹر اضافہ کر دیا ہے

قیمتوں میں اضافے سے پیٹرول کی قیمت112روپے 68پیسے فی لٹر، ڈیزل کی نئی قیمت 126روپے 82پیسے فی لٹر ، مٹی کے تیل کی نئی قیمت 98روپے46پیسے فی لٹر اور لائیٹ ڈیزل آئل کی نئی قیمت 88روپے 62پیسے فی لٹر ہوگئی ہے ، پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کا اطلاق یکم جون سے 30جون کے لیے ہوگا


ایف بی آر نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوںمیں اضافے کے تناظر میں سیلز ٹیکس میں ردو بدل کر دیا ہے اور پیٹرول پر سیلز ٹیکس کی شرح 12فیصد سے بڑھا کر 13فیصد ، ڈیزل ( ہائی اسپیڈ ) پر سیلزٹیکس کی شرح17فیصد سے کم کر کے 13فیصد کر دی گئی ، مٹی کے تیل پر سیلز ٹیکس 17فیصد ، لائیٹ ڈیز ل آئل پر سیلز ٹیکس 17فیصد کو موجودہ سطح پر برقرار رکھا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں :

دریں اثنا عید سے قبل پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کو جواز بناتے ہوئے ٹرانسپورٹرز نے انٹر سٹی بسوں کے کرایوں میں بھی غیر معمولی اضافہ کرتے ہوئے منہ مانگے کرائے وصو ل کرنے شروع کردیئے ہیں۔ عید منانے کے لیے اندرون ملک جانے والوں کا کہنا ہے کہ عید وں پر کراچی سے دوسرے شہر جانے والوں کو پہلے ہی لوٹ مار کا سامنا ہے کیونکہ مسافر کوچز میں رش کے باعث کرائے بڑھا کر وصول کیے جاتے ہیں

لیکن اب پٹرولیم مصنوعات میں اضافے کاجواز پیش کرتے ہوئے کرائے مزید بڑھا دیئے گئے ہیں اور عمومی کرائے کے مقابلے میں دو سو روپے سے تین سو روپے زاید بٹورے جارہے ہیں۔

کرایوں میں اضافے پر کئی مقامات پر جھگڑوں اور تصادم کے واقعات بھی پیش آئے ہیں، دریں اثناپٹرول اور ڈیزل کے نرخوں میں اضافے سے اندرون شہر بھی ٹرانسپورٹ کے کرائے بڑھائے جانے کی اطلاعات ہیں۔

دریں اثنا پٹرولیم مصنوعات کے اضافے کے باعث عید الفطر کے موقع پر مہنگائی کی نئی لہر آنے کا امکان ہے کیونکہ ٹرانسپورٹیشن کے اخراجات میں اضافے کو جواز بناتے ہوئے سبزیوں، پھلوں، بیکری آٹٹمز دیگر اشیا کے نرخ بڑھائے جائینگے۔

(466 بار دیکھا گیا)

تبصرے