Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 26  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

آرمی چیف نے کڑے احتساب کا ثبوت دے دیا

ویب ڈیسک جمعه 31 مئی 2019
آرمی چیف نے کڑے احتساب کا ثبوت دے دیا

راولپنڈی……. پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے جاسوسی کے الزام میں 2 فوجی اور ایک سول افسر کی سزاوں کی توثیق کر دی ہے، بریگیڈیئر (ر) راجا رضوان کو موت کی سزا جبکہ لیفٹیننٹ جنرل (ر) جاوید اقبال کو 14 سال قید بامشقت کی سزا سنائی گئی ہے

دونوں افسران غیر ملکی ایجنسیوں کو معلومات دے رہے تھے‘ ڈاکٹر وسیم اکرم کو بھی سزائے موت سنائی گئی ہے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق لیفٹیننٹ جنرل (ر) جاوید اقبال پر جاسوسی کے الزامات تھے۔پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کی ہدایت پر ان کا کورٹ مارشل کیا گیا تھا۔این ایل سی اسکینڈل میں لیفٹیننٹ جنرل (ر) محمد افضل کو سزا دی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : مادر وطن کیلئے جان سے بڑی قربانی کوئی نہیں‘ جنرل باجوہ

اسی سکینڈل میں میجر جنرل ریٹائرڈ خالد زاہد اختر کو بھی کورٹ مارشل کے تحت سزائیں دی گئیں۔ تینوں افسران کا پاکستان آرمی ایکٹ اور آفیشل سیکرٹ ایکٹ کے تحت ٹرائل کیا گیا ہے۔سرکاری ٹی وی کے مطابق ڈی جی ایس پی آرمیجر جنرل آصف غفورکا کہناہے کہ افواج پاکستان میں ہر کوئی جوابدہ ہے‘ مذکورہ افسرا ن کو دی گئی سزا ان جرائم کے حساب سے زیادہ سے زیادہ سزا ہے‘آرمی چیف کی جانب سے توثیق کڑے احتساب کے نظام کا مظہر ہے۔

انہوں نے کہا کہ غلط طریقے سے کمائی گئی رقم کرپشن ہی ہوگی‘ جاسوسی یا منی لانڈرنگ سے کمایا گیا پیسہ بدعنوانی ہی ہے‘ فوج کے اندر احتساب کا نظام انتہائی مضبوط ہے۔دریں اثنا مختلف دفاعی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ احتساب وہ جو نظرآئے ‘جو کہاگیاوہ کردکھایا‘فوج کے تمام افسران چاہے کسی بھی رینک کے ہوں احتساب کے دائرے میں یکساں شامل ہیں ‘اسددرانی کا احتساب بھی اسی پالیسی کے تحت عمل میں آیا‘آئندہ بھی یکساں احتساب کی پالیسی پر سختی سے عمل ہوگا۔

(396 بار دیکھا گیا)

تبصرے