Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 16 نومبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

دارالصحت اسپتال سیل کرنے پر دو گروپ آمنے سامنے

صابر علی جمعرات 25 اپریل 2019
دارالصحت اسپتال سیل کرنے پر دو گروپ آمنے سامنے

کراچی…گلستان جوہر میں واقع اسپتال دارالصحت میں بدھ کی شب اس وقت دلچسپ صورتحال پیدا ہوگئی ‘ جب سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن کے ذمہ داران اسپتال کو سیل کرنے پہنچے تو علاقہ مکینوں کے 2 گروپ آمنے سامنے آگئے‘ جس میں ایک گروپ اسپتال کو مکمل سیل کرنے اور دوسراگروپ اس کی مخالفت میں مظاہرہ کررہا تھا‘ بعد ازاں متعلقہ ذمہ داران نے اسپتال کی او پی ڈی کو سیل کردیا

جبکہ اسپتال میں نئے مریضوں کے داخلے پر بھی پابندی عائد کردی‘ اسپتال کو سیل کرنے کے خلاف مظاہرہ کرنے والے گروپ کے شرکاء کا موقف تھا کہ اسپتال کے متعلقہ عملے نے یقیناً مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کیاہے‘ جس کے نتیجے میں ایک معصوم جان ضائع ہوئی ہے‘ ا س مجرمانہ غفلت پر متعلقہ ذمہ داران کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ضرور ہونا چاہئے

تاہم اسپتال کے عملے کے چند اہلکاروں کی سزا پورے اسپتال اور اس میں داخل مریضوں کو نہیں دینا چاہئے ‘ لوگوں کا موقف تھا کہ دارالصحت گزشتہ 15 سے 20 سالوں سے گلستان جوہر اور اس سے ملحقہ علاقوں کے لوگوں کو علاج ومعالجے کی سہولت فراہم کررہا ہے اور اس عرصے میں اسپتال میں کبھی کوئی ایسا افسوسناک واقعہ رونمانہیں ہوا

یہ بھی پڑھیں : کورنگی‘ بخار میں مبتلا بچی کو ڈاکٹر نے موت کا انجکشن لگا دیا

ایک واقعہ کو بنیاد بنا کر پورے اسپتال کے خلاف مستقل بنیادوں پر کارروائی علاقے کے لوگوں کو علاج ومعالجے کی بہت بڑی سہولت سے محروم کرنے کے مترادف ہے‘ لوگوں کا موقف تھا کہ کراچی کیا پورے ملک میں کون سا ایسا اسپتال ہے ‘ جہاں اس قسم کے بارہا واقعات رونما نہیں ہوتے لیکن آج تک کسی اسپتال کے خلاف اس طرح کی کارروائی نہیں ہوئی

دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ دارالصحت اسپتال کے خلاف انتہائی اقدام کے پس منظر میں اسپتال کے مالکان کو سیاسی انتقام کانشانہ بنانا مقصود ہے‘ واضح رہے کہ مذکورہ اسپتال کراچی کی ‘ ایک سیاسی جماعت کے شہید رہنما کے بھائی چلا رہے ہیں‘ یہی وجہ ہے کہ ایک واقعہ کو بنیاد بنا کر اسپتال کوسیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے

جبکہ شہر میں چھوٹے بڑے اسپتالوں کی کمی نہیں ہے‘ جہاں غریب ومتوسط طبقے کے لوگوں سے علاج ومعالجہ کے نام پر لوٹ مار جاری ہے اور جہاں قوانین کے برعکس اسپتال چلائے جارہے ہیں۔

(372 بار دیکھا گیا)

تبصرے