Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعه 18 اکتوبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

بے بس انتظامیہ

ارشد انصاری جمعه 19 اپریل 2019
بے بس انتظامیہ

گز شتہ د نو ں حیدر آباد میں بھی تجاو زات کے خلاف ایک با رپھر آ پریشن کیا گیااینٹی انکر و چمنٹ اور پو لیس سمیت مقا می انتظامیہ کو قا بضین کی جانب سے مزاحمت کا سامنا کر نا پڑا پو لیس اور انکر و چمنٹ عملے کی کا رر وائی کو ر کوا نے کے لیے سندھ کی حکو متی پارٹی کے رہنما نے کار ر وائی رکوادی ضلع حیدر آباد کی انتظا میہ کا تجا و زات کے خلا ف آ پریشن جا ری رہا‘ اسسٹنٹ کمشنرلطیف آ باد جا و ید شر کی قیا د ت میں بلدیہ کے انسد ا دتجا و زات عملے نے پو لیس کی بھاری نفری کے ہمر اہ حا لی روڈ پر وا قع جنرل بس اسٹینڈ کی 10.63ایکٹر ا راضی و ا گز ار کر وانے کے لیے کام کا آغا زکیا تو پہلے مر حلے میں غیر قا نونی پیٹرول پمپ کو مسما ر کر نے کی کو شش کی تو قا بضین نے عملے کو یر غمال بنا تے ہوئے کار ر وائی ر کو ا دی

ا طلا ع ملنے پر ایک اور سیا سی جما عت کے رہنما بھی پہنچ گئے اور جا و ید شر کو بات چیت کے بہا نے پیٹر ول پمپ کے د فترمیں لے گئے۔جہا ں بلد یہ کے قائم مقام ڈا ئر یکٹر لینڈ محسن شیخ بھی پہنچ گئے سیا سی جما عت کے عہد ید اران نے ا سسٹنٹ کمشنر کو عدا لتی لیٹر کی کا پی تھما تے ہوئے کہا ہے کہ ان کے پاس پیٹرو ل پمپ اور سیا سی جماعت کا د فتر مسمار نہ کرنے کااسٹے آرڈر مو جو دہے میڈ یا کے نما ئند و ںکی ٹیم نے پہنچ کر اسٹنٹ کمشنر لطیف آباد سے سوال کیا ہے کہ سیا سی جما عت کا د فتر کیو ں مسما رنہیںکیا جا ر ہاہے‘ جس کی وجہ سے 2سال قبل بھی کا رر وائی ر ہ گئی تھی ‘جبکہ ڈپٹی کمشنر حیدر آباد نے بھی تجا و زات مسما ر کر نے کے وا ضح ا حکام جا ری کر رکھے ہیں‘ اسٹنٹ کمشنر کا اس سلسلے میں کہنا تھاکہ اسے کوئی ا حکام نہیںملے جن کے پا س عدالتی اسٹے ہے ان کے خلا ف کا رروائی نہیں کر یں گے اورنہ ہی سیا سی دفتر اور پیٹر ول پمپ مسما ر کریں گے اور پھرسیاسی عہد ید اران سے اسسٹنٹ کمشنر لطیف آ باد خو ش گپیو ں میں مصر وف ہو گئے

یہ بھی پڑھیں : پان کے کیبن میں پیٹرول پمپ

جبکہ عملہ ان تجاوزات کے ا طراف دو با رہ تعمیر کر دہ دو کا نوں کومسمارکرنے لگا تو دکا ند ا رو ں نے شد یدمزا حمت شروع کر دی اوربلدیہ عملے کا گھیر ا ئو کر لیا اور دکانداروںکا کہنا تھا کہ پہلے سیا سی جما عت کے د فتر کو مسما ر کیا جائے لیکن بلدیہ عملہ بضد ر ہا جس پر مشتعل دکاند اروں نے عملے اور مشینر ی پر پتھر ا ئو شر وع کر دیا جس سے صور تحال تصا دم سی ہو گئی اور د کا ند ار سر اپا احتجا ج بن کر بلدیہ عملے پر پتھر ا ئو کر تے ر ہے جس کی ا طلا ع ملنے پر پو لیس کی بھاری نفر ی بد ین بس ا سٹینڈ پہنچ گئی‘ ان کی آ مد سے قبل بھاری مشینر ی کے شیشے دکاند ا رو ں کے پتھر ا ئو کیے جانے کے با عث ٹو ٹ گئے تھے اور دیگر نقصانات بھی ہوئے اور بلدیہ کے انسد اد تجا و ازات سے تعلق رکھنے والے عملے کوبھی چوٹیں آئیں

بدین بس اسٹینڈ ایک جنگی مید ان کا منظر پیش کر ر ہا تھا پو لیس نفری نے مشتعل نو جو ا نو ن اور د کا ند ا رو ںکو گھیر ے میںلے لیا پو لیس افسر اور نگزیب عبا سی نے دیگر پو لیس نفری کے ہمر اہ دکاندارو ں سے مذا کر ات کیے اور دو کا نو ں سے سامان نکالنے کی مہلت بھی دی اور پھر کیا تھا بلدیہ کے انسد ا د تجا و زات کے عملے نے جنرل بس ا سٹینڈ تجاو زات کے عملے نے جنرل بس ا سٹینڈ پر 80سے زائد چھو ٹی بڑی دوکا نو ں اور مسجد سے ملحقہ3 گھروں کو بھی مسمار کر دیا‘جبکہ بتا یا جا تاہے کہ انسد اد تجا و زات کے عملے نے اس سے 2سال قبل بھی ان مذ کو رہ دکا نو ں کومسما ر کیا تھا‘

اس مو قع پر بعض دکانداروں کا کہنا تھا کہ بلد یہ عملے کو فی کس د کان 1500سو تا 2000روپے ماہا نہ کر ایہ ادا کر تے تھے‘ جب تمام صو ر تحال کے حو الے سے قائم مقام ڈائریکٹر لینڈ سے پو چھا گیا کہ عد التی لیٹر میں بلدیہ اراضی اور سیا سی جما عت کے د فتر کا تذ کرہ نہیں تو ان کا کہنا تھاکہ قا نونی ما ہرین بھی بتا ر ہے ہیں کہ قابضین کے پا س صر ف پیٹر ول پمپ کا اسٹے آڑ در ہے نہ سیاسی د فتر کا نہیں جس سے متعلقہ ا سسٹنٹ کمشنر کو بتا دیا ہے انہوں نے مزید بتایا کہ سیا سی جماعت کے د فتر کی بلڈ نگ اس وجہ سے مسمار نہیں کی جا رہی ہے‘ ا من و ا مان کی صو ر تحال کا مسئلہ پید ا ہو نے کا خطر ہ ہے تاہم قابضین کے خلا ف عد الت سے رجو ع کیا ہے اور فیصلے کے منتظر ہیں جبکہ اس مو قع پر انچا رج انسد اد تجا و زات سیل تو حید ا حمد کا بھی یہی کہنا تھاکہ وہ اے سی لطیف آ باد کی ہد ایت پرعمل کر رہے ہیں‘ وا ضح رہے کہ حا لی رو ڈ کا جنر ل بس اسٹینڈ بلد یہ اعلیٰ حیدر آباد کی ملکیت ہے ۔

جو کہ 10.63ایکٹر پر مشتمل ہے جہا ں 30سا لو ں سے زائدعر صے سے غیر قا نونی طر یقے سے تعمیر ات کی جا تی رہی ہیں اور مو جو دہ و قت میں بھی تجا و زات قائم ہیں وا ضح رہے کہ انتظامیہ نے فر و ری 2017ء میں بس ا سٹینڈ کی ز مین و ا گز ار کر وا نے کے لیے کار ر وائی کی تھی جو کہ تین رو ز تک جاری رہی‘ لیکن اسی سیا سی جما عت کے د فتر جو ایک بس ا ڈے کے با لائی حصے پر ہے کو مسمار کر نے کے معاملے پر مصلحت اڑے آ گئی تھی اور کارر وائی ملتوی کر دی گئی تھی‘ مشاہد ے میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ گز شتہ ماہ ڈپٹی کمشنر حیدر آباد نے ایک اجلاس میں جنرل بس اسٹینڈ سے تجا و زات ہٹا کر زمین بلد یہ کے حو الے کر نے کا ا علان بھی کیا تھا یادرہے کہ گز شتہ ما ہ اے سی لطیف آباد جا و ید شر کی قیادت میں ہی مکر انی پا ڑے میں اید ھی فائو نڈ یشن کے ا سپتال کی ز مین پر قائم تجا و زات کی عدا لتی حکم پر مسما رکرنے کے لیے پو لیس کی بھاری نفری کو طلب کیا گیا تھا

یہ بھی پڑھیں : منشیات فروشوں کی شامت

لیکن پیپلز پا رٹی کے رہنما و سا بق صو بائی مشیر عبد الجبا ر خان جو کہ ایم پی اے بھی ہیں انہو ں نے قابضین کو دو رو ز کی مہلت دینے کی در خو است اید ھی فا ئو نڈ یشن کے عملے کو ا عتماد میں لیے بغیر کار ر وائی رکوادی تھی بحر حال قا بضین کو ئی بھی ہو وہ قا بل ا حترا م شخصیت نہیں ہو تا بلکہ قا نونی تقا ضو ں کے عین مطا بق کے منا فی ا صو لو ں پر قابضین افراد کہلا تے ہیں‘ جن کے خلا ف حکو متی سطح پر ہردو ر میں قا بضین قر ار دیتے ہوئے سرکاری زمین کو واہ گز ار کر انے کے لیے حکو متی ادا روںکے افسران و عملہ ان سے نمٹتا آ ر ہا ہے اور حیدر آباد میں بلدیہ کی ز مین جوکہ 10.63ایکٹر پر مشتمل ہے گز شتہ 30 سا لو ں سے قا بضین سیاسی جماعت اور بد نام ز ما نہ شخصیا ت کی آ شیر با د پر پیٹر ول پمپ ر ہا ئش اور د کا نیں تعمیر کر کے اپنے قابضین ہونے کا ثبو ت د یتے ہیں لیکن انتظا میہ نے ہمت تو کی ہے اگر وا قعی ان کے خلا ف مز ید کارروائیاں کی جاتی رہیں تو یہ قا بضین حیدر آباد کی سرکاری زمینو ں پر قبضہ کر نے کا سو چ بھی نہیں سکتے ہیں صر ف اور صرف ایک عمل انتظا میہ پو لیس سے مل کر قا بضین اور انکے سہو لت کا ر و ں کو حقیقی معنو ں میں گر فتار کرکے جیلو ں میں قید کر دیں توپھر دیکھئے حیدر آباد سے کس طر ح قابضین کا خا تمہ ہو گا۔

(268 بار دیکھا گیا)

تبصرے