Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 10 دسمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

آج صبح دارالصحت اسپتال انتظامیہ کیخلاف مقدمہ درج

قومی نیوز پیر 15 اپریل 2019
آج صبح دارالصحت اسپتال انتظامیہ کیخلاف مقدمہ درج

کراچی … دارالصحت اسپتال کی مبینہ غفلت نے9 ماہ کی بچی کو مفلوج کردیا ، آج صبح پولیس نے اسپتال انتظامیہ کے خلاف مقدمہ درج کرلیا جبکہ انتظامیہ نے غلطی تسلیم کرتے ہوئے اسٹاف کو معطل کردیابچی کے والد کا کہنا ہے کہ واقعہ غیرتربیت یافتہ نرسنگ اسٹاف کے غلط انجکشن سے واقعہ پیش آیا

صوبائی مشیر اطلاعات نے غفلت کے مرتکب افراد کے خلاف کارروائی کا عندیہ دے دیا۔تفصیلات کے مطابق یہ واقعہ گزشتہ ہفتے شہر قائد کے علاقے گلستان ِ جوہر میں واقع دارالصحت اسپتال میں پیش آیا جب قیصر نامی شخص اپنی جڑواں بچیوں کو ڈائیریا کی شکایت میں لے کر ہسپتال پہنچا۔

یہ بھی پڑھیں : کراچی میں جرائم کی شرح بڑھ گئی

ہسپتال کی مبینہ غفلت سے معذور ہوجانے والی بچی کا نام نشوہ بتایا جارہا ہے جس کی عمر محض 9 مہینے ہے۔ بچی کے والد کے مطابق 3مختلف اوقات میں دونوں بیٹیوں کوڈرپس لگائی گئیں، جب بیٹیوں کوگھرلے جانے لگے تونشوہ کی حالت خراب ہونے لگی۔

متاثرہ بچی کے والد کے مطابق اس وقت اسپتال کے ڈاکٹرنے کہا کہ ایک رات اوررکیں صبح تک ٹھیک ہو جائیگی،صبح کے وقت معیزنامی نرسنگ اسٹاف آیااورڈرپ لگائی۔ بچی کے والد کا دعویٰ ہے کہ جوانجکشن 24گھنٹے کے اندرجسم میں تحلیل کیاجاتاہ یوہ یکمشت لگادیا جس کے لگتے ہی بیٹی کی حالت خراب ہونے لگی اورہونٹ پیلے پڑگئے۔

والد قیصر کا کہنا ہے کہ ہسپتال نے بعدمیں تصدیق کی کہ بچی کو غلط انجکشن کی وجہ سے اس کی طبیعت بگڑ گئی۔ نشوہ ایک ہفتے تک وینٹی لیٹرپراسپتال میں ہی ایڈمٹ رہی اور گزشتہ رات جب وینٹی لیٹر ہٹایا گیا تو بچی پیرالائز ہوچکی تھی۔

یہ بھی پڑھیں : بی جے پی نے نغمہ ’’ پاکستان زندہ باد ‘‘ چوری کرلیا

بچی کے والد کا کہنا ہے کہ انہوں نے ہسپتال کے عملے اور انتظامیہ کے خلاف غفلت برتنے کا پرچہ بھی کٹوادیا ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ معیزکاکام صرف بیڈسیٹ کرنایامریض کواٹھانا بٹھانا ہے۔ غیر تربیت یافتہ عملے نے میری پھول جیسی بچی کومفلوج کردیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ دارالصحت ہسپتال میں ایساپہلی مرتبہ نہیں ہوا، ماضی میں بھی ہسپتال اسی اقسام کی غفلت کامرتکب ہوتا رہاہے۔میڈیا نمائندوں نے اسپتال کے مالک عامر چشتی سے اس معاملے پررابطہ کرنے کی کوشش کی تو انہوں نے اپنا موقف دینے سے انکا ر کردیا۔

اس حوالے سے وزیراعلیٰ سندھ کے مشیر اطلاعات مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ اگر یہ بات درست ہے توبہت افسوسناک واقعہ ہے۔والدین ہیلتھ کیئرکمیشن میں معاملے کولے جاسکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ ازخود ہیلتھ کیئرکمیشن سے اس معاملے پربات کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت والدین سے مکمل تعاون کریگی، تفصیلات ہمیں بھجوائیں۔ مجرمانہ غفلت پرکارروائی کی جائے گی۔ہیلتھ کیئرکمیشن معاملے کی تحقیقات کریگا،مجرمانہ غفلت ہوئی توسندھ حکومت ہسپتال کیخلاف کارروائی کریگی۔

غفلت کے مرتکب افرادکیخلاف کارروائی کی جائیگی۔اس حوالے سے رکن سندھ اسمبلی نصرت سحر عباسی کا کہنا ہے کہ عامرچشتی نے بات سے انکارکیاہے توکوئی نہ کوئی گڑبڑہوئی ہے،دارالصحت اسپتال میں ایساواقعہ پہلی بار نہیں ہوا۔

انہوں نے کہا کہ یہ ظلم ہورہاہے،عوام ایسے لوگوں کواسمبلیوں میں بھیج دیتے ہیں۔خداراعوام ایسے لوگوں کواسمبلیوں میں نہ بھیجیں۔

یہ بھی پڑھیں : بیوی ذہین ہونی چاہیے،بلاول بھٹو شادی کیلئے راضی

نصرت سحر عباسی کا کہنا ہے کہ اس معاملے اسمبلی میں ہیلتھ منسٹرسیضرور بات کروں گی،وزیرصحت سے کہوں گی کہ ایسے واقعات کوروکنے کے اقدامات کئے جائیں۔

تمام وزرا ٹھنڈے آفسوں میں بیٹھے ہیں،کوئی باہرنکل کرنہیں دیکھتا،سندھ کے اسپتالوں میں بہت ابتر حالت ہے۔

(341 بار دیکھا گیا)

تبصرے