Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 19 نومبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

شریف خاندان کے خلاف کرپشن کے نئے کیسز

قومی نیوز جمعرات 11 اپریل 2019
شریف خاندان کے خلاف کرپشن کے نئے کیسز

لاہور( نیوز ڈیسک) حکومت نے شریف خاندان کیخلاف کرپشن کے نئے مقدمات دائر کرنے کا فیصلہ کرلیاہے۔لاہور میں وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت تحریک انصاف پنجاب کی صوبائی پارلیمانی پارٹی اور صوبائی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں نئے بلدیاتی نظام کے مسودے کی منظوری دے دی گئی۔ نئے نظام کے مسودے کو منظوری کے لیے جلد پنجاب اسمبلی میں پیش کیا جائے گا۔

اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر میاں محمودالرشید نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے شریف فیملی کے خلاف نئے کیسز کی تیاری مکمل کرلی ہے، وفاقی اور صوبائی حکومت کے اداروں نے نئے کیسز کے لیے مواد اکٹھا کر لیا۔

میاں محمود الرشید نے کہا کہ شریف فیملی کے خلاف پہلے پرانے کیسز تھے مگر اب نئے مقدمات دائر ہونگے، وزیراعظم عمران خان نے وزرا کو شریف فیملی کے خلاف کرپشن کی معلومات سے آگاہ کیا اور مزید کرپشن بے نقاب کرنے کا ٹاسک دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : بھارت میں آج سے پولنگ شروع

ا نہوں نے کہا کہ شریف فیملی کیخلاف موجودہ نیب کیسز پہلے سے چل رہے ہیں،اب حکومت اپنے مواد کی بنیادپرنئے مقدمات دائرکریگی جبکہ وزیراعظم نے سانحہ ساہیوال پر جوڈیشل کمیشن بنانے کی ہدایت کردی،وزیراعظم نے ادویہ کی قیمتیں بڑھانے والوں کے خلاف فوری کارروائی کا بھی حکم دے دیا اور ہدایت کی کہ 72 گھنٹوں میں ادویات کی قیمتوں کو پرانی سطح پر واپس لایا جائے۔

وزیراعظم عمران خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں ایک مربوط اور جامع لوکل گورنمنٹ سسٹم متعارف کرا رہے ہیں جس سے طرزِ حکومت میں انقلابی تبدیلی رونما ہوگی۔

انہوں نے رمضان المبارک میں مہنگائی اور منافع خوری کے تدارک کے لئے خصوصی اقدامات اٹھانے کی بھی ہدایت کی ۔ دریں اثنا برطانوی خبر رساں ادارے بی بی سی کو انٹرویو میں عمران خان نے کہا کہ تنازع کشمیر پر بھارت کے ساتھ امن خطے کیلئے بے حد خوش آئند اور زبردست فوائد کا حامل ہو گا، مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر ہے ، اس مسئلہ کوسلگتا ہوا نہیں چھوڑا جا سکتا،

کشمیر میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ وہاں کے لوگوں کا ردِ عمل ہے‘ انہوں نے کہا کہ ہم بھی اگر بھارت کی طرح الزام تراشی شروع کردیں تو اس سے کشیدگی مزید بڑھے گی لیکن بھارت اگر دوبارہ حملہ کرتا تو اس کا بھرپور جواب دیتے۔ عمران خان نے کہا جوہری طور پر مسلح ہمسائے اپنے اختلافات کو صرف مذاکرات کے ذریعے حل کر سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : حملہ جھوٹا،بھارتی صحافیوں نے بھی حقیقت جان لی

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا ہم پہلے ہی شدت پسند تنظیموں کو غیر مسلح کر رہے ہیں، یہ جنگجو گروہوں کو غیر مسلح کرنے کی پہلی سنجیدہ کوشش ہے۔ وزیر اعظم نے آسیہ بی بی سے متعلق ایک سوال کے جواب میں کہا سپریم کورٹ کی جانب سے توہین مذہب کے الزام میں بری کی جانے والی آسیہ بی بی بہت جلد پاکستان چھوڑ دیں گی۔

انہوں نے کہا مسعود اظہر کیخلاف قانونی کیس بنانے کی ضرورت ہے جو عدالت میں ثابت کیا جاسکے ، مسعود اظہر انڈرگراونڈ جاچکا، وہ غیرموثر اور بیمار ہے۔انہوں نے کہا ہم بلیک لسٹ ہونے کے متحمل نہیں ہوسکتے کیونکہ اس کا مطلب پابندیاں ہوگا۔

(235 بار دیکھا گیا)

تبصرے