Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 23 اکتوبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

پان کے کیبن میں پیٹرول پمپ

قومی نیوز جمعه 05 اپریل 2019
پان کے کیبن میں پیٹرول پمپ

معدزت کے ساتھ لیکن حقا ئق یہ ہے کہ ملک میں کئی مقامات پر جعلی اور نمبر دو کا ر و با ر کر نے وا لو ں کا راج ہے علا قائی پو لیس ان سے بھتہ خوری کر نے میں اور آ شیر با د میں ملوث ہو تی ہے حیدر آباد میں بھی کئی ایک کا ر و بار نا جا ئز طر یقے اور غیر قا نو نی عمل کے متر ا دف ہے بغیر لائسنس اور بغیر کسی تصد یق کے دھڑ لے سے جا ری ہے‘ لطیف آباد حیدر آباد کے مختلف علا قو ں میں بنے پیٹر ول پمپ یا منی پمپ مشینیں لگاکر پیٹر ول کی غیر قانونی طر یقے سے فروخت کر نے میں ملو ث ہیں حقا ئق سے پر دہ چاک ہو نے پر جھو ٹ پر مبنی نہ جا نے کسی با اثر شخص کا نام سے د نیا اور کسی غیر متعلقہ ادا رے کے اہلکا رو ں کی کا لائسنس جعلی دنیا ان غیر قا نونی پیٹر ول پمپ اور پمپ مشینو ں سے پیٹر ول سپلا ئی کیاجا ر ہا ہے جوکہ غیر قانونی فر و خت کر نے کے ز مر ے میں آتا ہے لطیف آباد اے سیکشن کی حد ودمیں ایسا ہی ایک منی پیٹرول پمپ کی کھلے عام پیٹر ول مشینو ں سے سپلا ئی کر رہاہے‘ پیٹر ول پمپ پر کام کر نے والے ملا زمین کا کہنا ہے کہ اس پمپ سے گز شتہ کئی ماہ سے پیٹرول کی فر و خت کی سپلا ئی جا ری ہے جبکہ ان کے ما لک وانتظامیہ کسی کو کچھ بتا نے کی مجا ز نہی نہیں دکھا ئی دیتی ہے‘ لطیف آباد یو نٹ نمبر دس کی شا ہر اہ پر قائم معر و ف گور نمنٹ ا سکول کمپر ھسنیو ہا ئی ا سکول سے چند گز کے فاصلے پر کو ہسار کو ملنے والی شاہر اہ پر بند کے قریب مذکو رہ پیٹرول پمپ غیر قا نو نی طر یقے سے رہائشی علا قے میں قائم کر دیا گیا ہے

جبکہ اس کی انتظامیہ کی جا نب سے نہ ہی کو ئی لا ئسنس یا کو ئی اجازت نا مہ یا پھر پیٹرول پمپ کے قائم کر نے کے قوانین کے مطا بق پیٹرول پمپ قائم کر نے کے لیے او گرا سمیت دیگر ادا رو ںکے اجا ز ت نا مے کی بھی ضر ور ت محسوس ہی نہیں کی گئی اور چند پیٹرول مشین نصب کر کے اپنا غیر قا نو نی د ھند ہ روا ں دو ا ں رکھے ہو ئے ہیں‘ جبکہ اے سیکشن تھانے کی پولیس او بی سیکشن تھا نے کی پولیس یا کو ئی اور متعلقہ پو لیس اس غیر قا نو نی پیٹر ول پمپ کے قائم کیے جانے کی اطلاعات ہی نہیں ر کھتی نہیں‘ بلکہ اس خبر پر کہ وا قعی یہ منی پیٹر ول پمپ قائم ہو گیا ہے‘ جبکہ علا قے مکینو ں کی جا نب سے کچی آ با دی اور بند پر ر ہا ئش پذ یر افراد اس غیر قا نونی منی پیٹرول کو بندکے ایک خا لی پلا ٹ پر چند مشینیں نصب کر کے اپنا کا ر و با رشروع کیا ۔ز رائع کے مطابق جو کہ غیر قا نونی ہے ز را ئع نے انکشا ف کیا کہ اے سیکشن تھا نے اور بی سیکشن تھانے‘ جبکہ ایئر پو رٹ تھانہ سمیت دیگر راشی پولیس افسران و اہلکا رو ں کی منی پیٹرول پمپ کی انتظامیہ کو آ شیر با د حا صل ہے اور یومیہ‘ جبکہ کئی راشی افسران کو ہفتہ اور ضلع پو لیس سمیت ڈی آئی جی کے بعض را شی افسران کی آ نکھو ں پر چر بی چڑ ھا کر رشو ت کی ادائیگی کی جا رہی ہے اور بغیر اجا ز ت بغیر لا ئسنس اور بغیر ٹیکس کے منی پیٹرول پمپ انتظا میہ اس کا رو با ر کو عر و ج دیئے ہو ئے ہیں

یہ بھی پڑھیں : دھنی تڑپ تڑپ کے مرگئی

اور کیو ں نہ کر یں کا ر و با ر رقم حکو مت کو ٹیکس کی شکل میں نہیں اداکی جا رہی ہے تو کیا ہو اہے‘ مقامی پولیس کو تو ٹیکس بھتہ کی ادائیگی تو ایما ند ا ری سے کی جا رہی ہے شہر یو ں کی جا نب سے غیر قا نو نی منی پیٹر ول پمپ کے کا ر و با رکو ر ہا ئشی علا قو ں سے فوری بند کر اکر ان کے کا ر و با رمیں ا ستعمال ہو نے والی جگہو ں اور پیٹر ول بھر نے والی مشینو ں جبکہ دیگر آ لا ت کو بھی انتظامیہ اپنی تحو یل میں لیں اور منی پیٹرول پمپ جو کہ حیدر آ باد کے پھلیلی پر یٹ آبا دلیا قت کا لو نی اسلام آباد چوک‘ آ فندی رو ڈ‘ کا لی موری چوک‘ لطیف آباد و قا سم آ باد کے مختلف علا قو ں میں قائم منی پیٹرول پمپ کی انتظامیہ کے خلا ف کا رر وائی کی جا ئے اور تو اور اے سیکشن بی سیکشن اور ڈی آئی جی سمیت متعلقہ اداروں کی لا پر وا ہی اور بے قا عد گیو ں میں پا ئے جانے والے افسران واہلکا ر و ں کے خلا ف بھی حقیقی معنو ں میں کا رر وائی کیے جا نے کی ضر ور ت ہے تاکہ اس غیر قا نو نی منی پیٹر ول پمپ کے کا ر و با رمیں ملوث افر اد پیٹرول پمپ حیدر آباد سمیت قرب و جو ار میں قا ئم کر نے کی ضر ویا ت اور غیر قا نو نی عمل کر نے کے لیے ایک لا کھ مر تبہ سو چنے پر مجبو ر ہو بہر حا ل یہ منی پیٹرول پمپ ما فیا کیسی شکل ا ختیا ر کر رہے ہیں‘ اس مافیا کے خلا ف فوری قا نونی کا رر وائی کر تے ہوئے بے در یغ اور بے ر حما نہ گر فتار یا ں عمل میںلائی جائیں اور انکے سر پر ستو ںاور سر کاری اداروںکے بعض را شی افسران جو کہ سہو لت کا ر ی کا کر دار ادا کر رہے ہیں‘ انہیں بھی نہیں بخشا جا ئے تو پھر جا کر یہ منی پیٹر ول پمپ ما فیا اپنے عر و ج کا زوال ہو تے دیکھے گا۔

(308 بار دیکھا گیا)

تبصرے