Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 15 جولائی 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

سعودی ولی عہد پاکستانیوں کے ہیرو بن گئے

ویب ڈیسک جمعرات 21 فروری 2019
سعودی ولی عہد پاکستانیوں کے ہیرو بن گئے

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے گزشتہ روز وزیر اعظم ہائوس میں عمران خان کے ساتھ ناشتہ کیا‘ سعودی مہمان سے صدر پاکستان عارف علوی‘ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی قیادت میں پارلیمانی وفد ‘ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ ‘ اسپیکر وڈپٹی اسپیکر کی ملاقاتیں ہوئیں‘ ایوان صدر میں سعودی ولی عہد کے اعزاز میں ظہرانہ دیا گیا‘ جہاں اس سے قبل شہزادہ محمد بن سلمان کو ا یک پر وقار تقریب میں پاکستان کا اعلیٰ ترین سول ایوارڈ ’’نشان پاکستان‘‘ دیاگیا۔ پاکستان میں سعودی عرب کی بڑی سرمایہ کاری اور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا بڑا استقبال ‘ گرمجوشی مصافحے ہوئے‘ وزیر اعظم عمران خان اور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی موجودگی میں دونوں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون اور سرمایہ کاری کے تقریباً 28 کھرب روپے مالیت کے معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط کئے گئے‘ دستخط کی تقریب وزیر اعظم ہائوس میں منعقد ہوئی‘ ان معاہدوں کے تحت سعودی عرب متبادل توانائی‘ ریفائنری ‘ پیٹروکیمیکل پلانٹ ‘ معدنی وسائل ‘ بجلی کی پیداوار کھیل اور اسٹینڈرڈائزلیشن کے شعبوں میں سرمایہ کاری کرے گا۔
سعودی ولی عہد شہزاد محمد بن سلمان نے وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے اپنے اعزاز میںدیے گئے عشائیہ میں اظہار خیال کرتے ہوئے ان کی قیادت کو پاکستان کے لیے نہایت اہم قرار دیا‘ ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کی قیادت میں پاکستان بہت آگے جائے اور مستقبل میں پاکستان ایک اہم ملک بن کر ابھرے گا‘ ہمیں مل کر بہت کچھ کرنا ہے‘ پاکستان میں مزید سرمایہ کاری کریں گے اور ہر سال اس سرمایہ کاری کا حجم مزید بڑھے گا‘ اب 28 کھرب کی سرمایہ کاری دراصل پہلامرحلہ ہے‘ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ سعودی عرب ہمارا عظیم دوست ہے‘ جس نے ہر مشکل وقت میں ہمارا ساتھ دیا‘ باہمی تعلقات کونئی بلندیوں تک لے جانا چاہتے ہیں‘ عشائیہ میں وزیر اعظم نے کھل کر سعودی ولی عہد سے سعودی عرب میں مقیم پاکستانیوں کے مسائل سے انہیں آگاہ کیا اور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے سعودی عرب میں کام کرنے والے پاکستانیوں ‘ یہاں سے جانے والی عازمین حج اور وہاں قید پاکستانیوں کیلئے آسانیاں پیدا کرنے کی پرزور درخواست کی ۔ عمران خان نے کہا کہ اوور سیز پاکستانیز ان کے نزدیک انتہائی اسپیشل ہیں‘ جو دل میں رہتے ہیں‘ وزیر اعظم نے ولی عہد سے پاکستانی حجاج کیلئے 3 بڑے سعودی ایئر پورٹس پر امیگریشن کا انتظام کرنے کی درخواست بھی کی‘ جس پر شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا کہ میں آپ کو انکار نہیں کرسکتا‘ اس حوالے سے جو ممکن ہواکروں گا‘ ہم سعودی عرب میں کام کرنے والے پاکستانیوں کیلئے ہر طرح کی ممکنہ سہولیات فراہم کریں گے‘ میں سعودی عرب میں پاکستان کا سفیر ہوں اور جس طرح سعودی باشندوں کا خیال رکھا جاتاہے‘ اسی طرح ان پاکستانیوں کا بھی خیال رکھوں گا۔
سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے یہ الفاظ آ ب زر سے لکھے جانے کے قابل ہیں‘ شہید ذوالفقار علی بھٹو کے دور میں جس طرح پاک سعودی شخصیت کی قیادت میں شہزادہ محمد بن سلمان کے دورے کے دوران ان کی تجدید اور احیاء ہوتا نظر آتا ہے‘ ہم سمجھتے ہیںکہ سعودی ولی عہد نے وزیر اعظم سے کیا گیاوعدہ صرف چند گھنٹوں بعد ہی سر زمین پاکستان پر ہوتے ہوئے پورا کردیااورانہوںنے فوری طورپر 2107 پاکستانی قیدیوں کی رہائی کا حکم دے دیا‘ سعودی ولی عہد نے پاکستانیوں کی رہائی کا حکم دے کر جہاں ہزاروں پاکستانیوں کے گھروں خوشی بکھیر دی ہیں‘ وہاں ہزاروں پاکستانیوں کے دل بھی موہ لیے ہیں‘ ہم اوصاف کے اداریوں میںوزیر اعظم سے درخواست کرچکے تھے کہ وہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان سے وہاں قید پاکستانیوں کی رہائی اور مختلف شعبوں میں مزید پاکستانیوں کو ملازمتیں دینے ‘ بالخصوص پاکستانی ہنر مندوں کی وہاں کھپت کے بارے میں بات کریںاورانہیں باور کرائیں کہ دیگر ممالک پر پاکستانی ہنر مندوں اور لیبر کر ترجیح دی جائے‘ ہم سمجھتے ہیں کہ سعودی ولی عہدنے اپنے قول وفعل اور عملی اقدامات سے اہل پاکستان کے دل جیت لیے ہیں۔

اور سب سے بڑھ کر یہ بات قابل تحسین ہے کہ اب پاکستانی قیادت بالخصوص عمران خان کو جو خراج تحسین ہے کہ اب پاکستانی قیادت بالخصوص عمران خان کو خراج تحسین پیش کیا گیاہے اور کہا گیاہے کہ ان کی قیادت میں پاکستان کا مستقبل تابناک اور روشن ہے‘ یہ ان کی قیادت کو درحقیقت ایک عالمی رہنما کا خراج تحسین قرار دیا جاسکتا ہے‘ عمران خان کے دور میں پاکستان کو غیر ملکی سرمائے کو محفوظ سمجھا جانا ان کی دیانتداری اور ملک وقوم سے مخلص ہونے کی واضح دلیل اور ان پر بے پناہ اعتماد کا اظہار ہے۔

(169 بار دیکھا گیا)

تبصرے