Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 12 نومبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

سعودی عرب کی 322کمپنیوں کے مالک یا شراکت دار بھارتی ہیں

قومی نیوز منگل 19 فروری 2019
سعودی عرب کی 322کمپنیوں کے مالک یا شراکت دار بھارتی ہیں

کراچی… سعودی عرب کی 322کمپنیوں کے مالک یا شراکت دار بھارتی ہیں، بھارت ریاض کیلئے ایکسپورٹ کی چوتھی بڑی مارکیٹ ، تیل کی ضروریات کا20فیصد سعودیہ فراہم کرتا ہے،32لاکھ50ہزار بھارتی سعودیہ میں موجود، مجموعی بھارتی ترسیلات میں تقریباً12فیصد حصہ ڈالتے ہیں’سعودی آ رامکو ‘‘نے اپریل2018میں آ ئل ریفائنری کمپلیکس قائم کرنے کیلئے 44ارب ڈالرز کے معاہدے کیے۔
بھارتی،خلیجی اور امریکی میڈیا نے سعودی عرب اور بھارت کے معاشی تعلقات پر لکھا کہ گزشتہ برس سعودی عرب اور بھارت کی باہمی تجارت کا حجم39کھرب روپے( 28ارب ڈالر) تھا۔
سعودی عرب کی 322 کمپنیوں کے مالک بھارتی ہیں یا وہ ان میں شراکت دار ہیں جن کی قدر دو کھرب روپے ہے۔ بھارت کی تیل کی ضروریات کا بیس فی صد سعودی عرب فراہم کرتا ہے۔
32لاکھ50ہزار بھارتی سعودی عرب میں کا م کرتے ہیں جن کے بھیجے گئے پیسوں کابھارت کی مجموعی زرترسیلات میں تقریباً12 فی صد حصہ ہے۔
یہ خبر بھی پڑھیں : سعودی شہزادہ جارحانہ بیانات کےلئے مشہور
بھارت سعودی عرب کے لئے ایکسپورٹ کی چوتھی بڑی مارکیٹ ہے،سعودی عرب نے بھارت میں اپریل2000سے جون2018تک29 ارب روپے(208ملین ڈالر) کی سرمایہ کاری کی۔
’سعودی آ رامکو ‘‘نے اپریل2018 میںبھارت میں ایک بڑی آ ئل ریفائنری کمپلیکس قائم کرنے کے 44ارب ڈالر کے معاہدے پر دستخط کیے۔رواں برس ایک لاکھ75ہزار بھارتی مسلمان حج ادا کریں گے۔
پاکستان کے بعد سعودی ولی عہد ریاض چلے گئے جہاں سے وہ آ ج بھارت کا 2روزہ دورہ کررہے ہیں ، شہزادہ محمد بن سلمان کو اس دورے کی دعوت بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے دی تھی۔
مودی کی سعودی ولی عہد سے ارجنٹائن میں گزشتہ برس نومبر میں جی ٹوئنٹی کی سربراہی کانفرنس میں ملاقات ہوئی تھی۔
اکنامک ٹائمز کی رپورٹ میں کہا گیا کہ شہزادہ محمد بن سلمان کے دور ہ بھارت میں دونوں ممالک اسٹریٹجک پارٹنر شپ کے کیلئے سپریم کو آ رڈینیشن کونسل کے معاہدے پر دستخط کریں گے ، سعودی عرب توانائی، انفرااسٹرکچر اور ہائی ٹیک سیکٹرز میں سرمایہ کاری پر توجہ دے گا۔
سعودی کابینہ نے ولی عہد کو اتھارٹی دی ہے کہ وہ دورہ بھارت کے دوران’سعودی انڈین سپریم کوآ رڈینیشن کونسل ‘‘قائم کرنے معاہدے پر دستخط کریں،دونوںاطراف نیشنل انویسٹ منٹ فنڈ اور انفرااسٹرکچر فنڈز میں سعودی سرمایہ کاری کی یاداشت (میمورنڈم آ ف انڈاسٹینڈنگ) پر دستخط ہوں گے۔
باہمی سرمایہ کاری کے فروغ اور تحفظ کے معاہدے کی یاداشت پر بھی دستخط ہوں گے۔سعودی ریڈیو اور ٹیلی وڑن کارپوریشن اور بھارتی براڈ کاسٹنگ اتھارٹی کے درمیان تعاون کا معاہدہ بھی متوقع ہے۔
سیاحت کے حوالے سے بھی ایم او یو پر دستخط ہوں گے۔ رپورٹ کے مطابق سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا دورہ گزشتہ72 برس میں کسی بھی سعودی عرب کی تیسری ہائی پروفائل شخصیت کا بھارتی دورہ ہے۔
اکنامک ٹائمز کے مطابق بھارت سعودی عرب سے اپنی ضرورت کا 20فی صد خام تیل امپورٹ کرتا ہے۔

(349 بار دیکھا گیا)

تبصرے