Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 26  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

موبائل فون بچوں سے دور رکھیں

ویب ڈیسک بدھ 13 فروری 2019
موبائل فون بچوں سے دور رکھیں

ٹیکنالوجی میں جدت آئی تولیب ٹاپ اورکمپیوٹرکی جگہ آئی پیڈ زاورٹیب استعمال ہونے لگے ہرپل دنیا سے جڑے رکھنے والی ٹیکنالوجی سے خارج ہونے والی الیکٹرومیگنیٹک ریڈیئیشن یعنی تابکاری شعاعوں کے ہمارے دماغ اورجسم پراثرات اتنے خطرناک ہیں جس کااندازہ لگانابھی مشکل ہے موبائل فون کااستعمال ضرورت سے زیادہ اب عادت بن چکاہے اب توایسالگتاہے کہ انسان موبائل نہیں بلکہ موبائل انسان کواستعمال کررہاہے بے شک یہ ضرورت ہے لیکن اب عادت اورمجبوری کی شکل اختیارکرچکاہے
عالمی ادارہ صحت اورکینسرپرتحقیق کاعالمی ادارہ آئی اے آرسی نے اپنی جاری کردہ رپورٹ میں انکشاف کیاہے کہ پچھلی دودہائیوں میں بچوں کے کینسرمیں13 فیصد اضافہ ہواہے اورموبائل فون کینسرکے لئے ممکنہ رسک ہے ماہرین اطفال کے مطابق ا س کے استعمال سے دماغ کی رسولیاں ہوسکتی ہیںافسوسناک بات یہ ہے کہ اس طرح کے کیسزتواتر کے ساتھ رپورٹ ہوئے ہیںاس سے گردن کی ہڈی میں خم پیداہونے کے خطرات نمایاں نظرآتے ہیںاس کے علاوہ موبائل استعمال کرنے سے ہاتھ کے پٹھے بھی متاثرہوتے ہیںجس کے علیحدہ آپریشن ہوتے ہیں۔موبائل فون سے بچوںکو کس طرح محفوظ رکھا جائے درج ذیل ہدایت پر عمل کریں
آپ خود موبائل کااستعمال کم کریں:سب سے پہلے آپ کواپنے آپ کوبدلنے کی ضرورت ہے اگرآپ بچہ کے سامنے ہروقت موبائل استعمال کریں گے توآپ کابچہ بھی اس کی ڈیمانڈ کرے گااسے لگے گاکہ جس طرح کھاناپیناسوناجاگنازندگی کاحصہ ہے بالکل اسی طرح روزانہ موبائل کااستعمال بھی اس کی اہم ضرورت ہے یاد رکھیں بچہ سنتاکم ہے دیکھتازیادہ ہے۔
بچوں کووقت دیں:بچے موبائل اسی وقت لیتے ہیں جب وہ فارغ ہوتے ہیں انھیں سمجھ ہی نہیں آتاکہ وہ کیاکریں پہلے تو ان کی بوریت دورکریںان کے ساتھ کھیلیںانھیں کہانیاں سنائیںماضی کے واقعات اورتجربات سے آگاہ کریںاچھے برْے کی تمیزسکھائیں اورانھیں تنہائی سے بچائیںکسی بھی بچے کی ذہن سازی ،خیال سازی اورشخصیت کوبنانے کے لئے ہیومن ٹچ بہت ضروری ہے۔
کارٹون موبائل پرنہ دکھائیں:اینیمیٹڈ کارٹون الیکٹرانک گیمزاوردیگروڈیوزبچہ کوموبائل پردکھانے کی عادت نہ ڈالیں۔اگرآپ کواپنابچہ اوراس کی صحت عزیز ہے توبچہ کوضدکرنے رونے کھانانہ کھانے پرموبائل ہرگز نہ دیں یاد رکھیں موبائل فون کی بے جاعادت اب نشہ میں شمارہوتی ہے ایسی صورت میں جب تک آپ کابچہ اسے ہاتھ میں نہ لے لے مطمئن نہیں ہوتا۔

موبائل ضرورت کی چیز ہے:بچہ کواحساس دلائیں کے موبائل فون ضرورت کی چیز ہے اسی لئے اسے صرف ضرورت کے وقت ہی استعمال کرناچاہئے ساتھ ساتھ موبائل کے اضافی استعمال سے ہونے والے نقصانات سے بچہ کوآگاہ کریں
سگنل آف کردیں:ان تمام انرجی سورسس کا ٹرن آف ٹائم بھی ہوناچاہئے تبھی آپ بچ سکتے ہیں اگرآپ نے کوئی بھی ڈیوائس آن رکھی ہے تواس کے اثرات مستقل آپ پرپڑتے رہیں گے اس سے پلوشن ہرطرف پھیلتی رہے گی اگر اس سے بچناہے تواستعمال کے بعداسے آف کرنانہ بھولیں
موبائل فون ہمیشہ ہاتھ میں نہ رکھیں :اگرآپ اپنے ہاتھ میں موبائل فون رکھیں گے توآپ کابچہ بھی رکھے گا اس بات کااحساس سب سے پہلے آپ کوکرناہے کہ صرف ضرورت کے وقت ہی موبائل اپنے ہاتھ میں رکھیںاگرآپ خودہروقت موبائل استعمال کریں گے توآپ کابچہ بھی اسی عادت کواپنائے گا کیونکہ آپ کابچہ آپ ہی کاطرزعمل اختیارکرتاہے۔
ٓآپ کابچہ کیادیکھتاہے:اس بات کاخیال رکھنابہت ضروری ہے کہ بچہ کس طرح کامواد دیکھ رہاہے بچہ جودیکھتاہے اسی سے اس کی خیال سازی اورخیال سازی سے ذہن سازی ہوتی ہے اورذہن سازی سے کرداربنتاہے اب فیصلہ آپ کریں کہ آ پ اپنے بچہ کاکردار کیسا دیکھناچاہتے ہیں۔
تربیت پرتوجہ دیں:پہلے گراونڈ نہیں توبچے گلیوں میں ہی کھیل لیتے تھے اب حالات کے ڈرسے یہ بھی ممکن نہیں رہا اکثرماوںنے اپنی تربیت کی ذمہ داری سے جان چھڑالی ہے۔تربیت کرناایک بڑامشکل عمل ہے اس کے لئے صبروبرداشت چاہئے بچہ کئی سوالات پوچھتاہے وقت مانگتاہے پہلے والدین وقت دیتے تھے سوال کاجواب دیتے تھے اس طرح ان کے اندرجوجذبہ ہوتاتھاوہ بچوں میں منتقل ہوجاتاتھا
جذباتی ذہانت کی نشوونما :مطالعہ کے مطابق جوبچے زندگی میں ہرلحاظ سے کامیاب ترین بنتے ہیں ان میں جذباتی ذہانت بہت زیادہ ہوتی ہے والدین کی تربیت سے بچوں میں جذباتی ذہانت کی نشوونماہوتی ہے اس میں کچھ چیزیں بہت اہم ہیں جیسے شکرگزاری ،صبروبرداشت وڑن بات کرناتصورکرناادب واحترام وغیرہ
10۔آگاہی مہیاکریں:آنکھوں میں اندر آپٹیکل نروکاسسٹم ہوتاہے موبائل کی شعاعوں سے وہ تحریک میں آجاتی ہے جس سے آنکھیں خراب ہوتی ہیںتوجہ کی کمی ہوتی ہے غصہ زیادہ آتاہے فیصلہ کرنے میں مشکل درپیش آتی ہے آپ جوچاہتے ہیں کے آگے جاکرآپ کابچہ ڈاکٹرانجینئر یا کامیاب انسان بنے توجان لیں کہ اس موبائل سے اگلے دس سالوں کے اندربچے کی ذہنی کارکرگی مکمل طورپرختم ہوسکتی ہے۔
اُصول بنائیں
کھاتے وقت بچہ کوموبائل ہرگزنہ دیں یہ نہ سوچیں کہ وڈیودیکھتے دیکھتے بچہ کھاناآرام سے کھالے گا
گھرکے تمام افراد کے لئے دسترخوان پرموبائل ساتھ رکھنے پرپابندی لگائیں
کئی بیماریوں کی وجہ موٹاپے سمیت یہی ہے کہ اگرکھاناکھاتے وقت آپ کھانے پردھیان نہ دیںتو آپ کوپتہ نہیں ہوتاکہ آ پ کیااورکتناکھارہے ہیں ا س کی لذت دماغ جذب نہیں کرپاتاجس کی وجہ سے آپ کھانے کی افادیت سے بھی محروم ہوجاتے ہیں
ہفتے میں ایک دفعہ ایک گھنٹہ کے لئے بچوں کوموبائل دینے کااصول مرتب کریں
ہروقت اورہرجگہ موبائل فون کوسامنے ہرگزنہ رکھیں
احتیاطی تدابیراپنائیں
وائرلیس نیٹ ورکنگ کی بڑھتی ہوئی فریکوئنسی کی شکل میں ہمارے دماغ کے گرد گھیراتنگ ہوتاجارہاہے اسی لئے بچوں کوآگاہی دیں کہ:
مناسب والیم کے ساتھ ہینڈ فری ،بلوٹوتھ یااسپیکر کااستعمال کریں
سوتے وقت موبائل فون تکیے کے نیچے نہ رکھیں
موبائل فون کواستعمال کے وقت بھی جسم سے کم ازکم چھ انچ کے فاصلے پررکھیں۔
چارجنگ کے دوران موبائل فون استعمال نہ کریںبرقی مصنوعات کاچارجنگ کے دوران استعمال سے خطرہ اتنابڑھ جاتاہے کہ یہ جان لیوابھی ثابت ہوسکتاہے
اندھیرے میں موبائل کے استعمال سے گریزکریں۔

(224 بار دیکھا گیا)

تبصرے