Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعه 23  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

دنیا میں رہوں کہیں بھی پاکستان ہے میری پہچان

ویب ڈیسک هفته 09 فروری 2019
دنیا میں رہوں کہیں بھی پاکستان ہے میری پہچان

پاکستان کی مشہور اداکارہ ریما نے لالی ووڈ انڈسٹری والوں کو مفید مشورہ دیتے ہوئے کہاہے کہ لکیر کے فقیر نہ بنیں، کچھ نیا کریں۔ انہوں نے کہا کہ مولا جٹ مشہور ہوئی تو ویسی ہی فلمیں بننے لگیں، سب نے اسی طرز پر فلمیں بنانا شروع کردیں، یہی وجہ پہلے بھی پاکستانی فلم انڈسٹری کے زوال کا سبب بن چکی ہے۔ سابقہ اداکارہ ریما کا کہنا تھا کہ فلم انڈسٹری میں جدت لانے کی ضرورت ہے ، حال میں ہی 2 نئی فلمیں اچھی اور مزاحیہ طرز پر بنائی گئیں ، اب ضرورت ہے کہ لوگ اس نئے ٹرینڈ کو کاپی نہ کریں۔ ر یما خان نے کہا کہ پاکستانی فلم انڈسڑی کی کامیابی کے لئے آج بھی پر امید ہوں ‘ فلمسازوں کو منفر د فلمیں لاکر انڈسڑی کی رونقیں بحال کر نی چاہیے۔ اپنے ایک انٹرو یو میں ریما خان نے کہا کہ پاکستان فلم انڈسڑی کی جو ایک پہچان ہے اس کو ختم کرنے کی بجائے اس کو دوبارہ بحال کر نے کی ضرورت ہے جو صرف منفر د فلمیں بنانے سے ہی ممکن ہوسکتا ہے اور میں مایوس نہیں ہوں بلکہ آج بھی پاکستانی فلم انڈسڑی کی کامیابی کیلئے پر امید ہوں۔ یاد رہے کہ جب ریما نے سن انیس سو نوے میں محمد اسلام بٹ کی اردو فلم’’ بلندی‘‘ کے ساتھ اپنے فلمی کیریئر کا آغاز کیا تو اس وقت لالی وڈ کی فلم نگری میں انجمن، نیلی، نادرہ، مدیحہ شاہ اور شاہدہ مِنی کا راج تھا۔ لیکن جاوید فاضل کی ہدایت میں بننے والی اس فلم کی کامیابی نے نہ صرف ریما کو فلمی صنعت میں اپنے قدم جمانے کا موقع فراہم کیا بلکہ اداکار شان اور ریما کی فلمی جوڑی کو کسی بھی فلم کی کامیابی کی ضمانت بنا دیا۔ شان کے ساتھ ابتدائی فلموں زہریلے، عشق، ناگ دیوتا، پیار ہی پیار، سیلاب، دِل، آگ، شمع اور صاحبہ میں ریما کی اداکاری نے سب کو متاثر کیا۔ تاہم ان کی کامیابی کا اصل دور سن انیس سو ترانوے سے شروع ہوتا ہے جب ریما اور شان کی جوڑی کو حنا، انجمن، چکوری، چاندنی، نیلم اور انسانیت جیسی کامیاب فلمیں ملیں۔ ہدایت کارہ شمیم آرا کی فلم ’’ہاتھی میرے ساتھی‘‘ میں وہ اداکار محسن خان کے ساتھ جلوگر ہوئیں اور اس فلم نے کامیابی کے نئے جھنڈے گاڑے۔ تاہم اداکارہ ریما کے فن کے اصل جوہر ہدایت کار الطاف حسین کی فلم ’’رانی بیٹی راج کرے گی‘‘ میں کھلے۔
٭٭٭٭٭

(251 بار دیکھا گیا)

تبصرے