Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 18  ستمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

حیدر آباد پولیس کی پھر تیاں

ویب ڈیسک جمعه 01 فروری 2019
حیدر آباد پولیس کی پھر تیاں

ہمارے ملک پاکستان میں کہتے ہیں کے اگربعض ادارے ہی کرپشن جرائم اور سہولت کار ی میں ملوث ہو تو پھر ان اداروں کو انتظامیہ بھلا کیا سیکورٹی اور انصاف کی فراہمی ممکن ہو سکتی ہے یقیناََ جواب نہ میں ہی آئے گا ملک بڑوں شہروں میں موجودہ دور میں بھی ایک شناخت رکھنے والا شہر حیدرآباد بھی ہے جہاں یومیہ کی بنا پر اب بھی جرائم کی وارداتیں رپورٹ ہو رہی ہیں اور کئی جرائم کی وارداتوں کے متاثرہ شہر ی بھی ایف آئی آر درج کرتے اور بعض کو پولیس پروٹیکشن کی ضرورت کے تحت تھانوں اور ایس ایس پی آفس حیدرآباد کا گرد دکھائی دینا روز کا معمول بنتا جا رہا ہے

جہاں متاثرہ شہریوں کی جانب سے منشیات عصمت فروشی با اثرافراد اور پولیس تھانوں کے اہلکاروں کی ذیادتیوں کیخلاف ڈی آئی جی حیدرآباد اور اب ایس پی حیدرآباد کے آفسروں اور انصاف کی آواز بلند کرنے والے میڈیا ہائوسز کے باہر متاثرین کی جانب سے احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ آج تک جاری دکھائی دیتا ہے متاثر ین کسی سرکاری ادارے کی کرپشن پولیس زیادتیوں اور بااثر افراد کی ذیادتیوں کیخلاف آواز حق بلند کرتے ہوئے حکام بالا سے منشیات فروشوں عصمت فروشی اور دیگر جرائم پیشہ افراد کی سرپرستی کرنے والے پولیس اہلکاروں کیخلاف ضلع پولیس کے افسران سے اپنے جائز مطالبات کو حل کرانے اور بالخصوص ایف آئی آر درج نہ کرنے کے عمل کیخلاف سراپا احتجاج دکھائی دیتے ہیں

جس کے ازالے کیلئے ضلعی انتظامیہ پولیس کے چیف ایس ایس پی حیدرآباد سرفراز نواز شیخ نے میڈیا کو جرائم کی دنیا رپورٹس اور قومی اخبار میڈیا گروپ کی جرائم پیشہ افراد کی بیچ کنی اور ان جرائم پیشہ افراد کی سر پرستی کرنے کے انکشافات کا نوٹس لیتے ہوئے گزشتہ دنوں حیدرآبادمیں جرائم کی وارداتوں اور پولیس بے قاعدگیوں پر مختلف تھانوں کا سرپرائز دورے اور پولیس تھانوںکے اہلکاروں کو مسائل کی بروقت مدد کرنے اور ان کی رپورٹ درج کرنے کے فوری احکامات دیئے گئے جبکہ ایس ایس پی حیدرآباد سرفراز شیخ کی زیر صدارت پولیس ہیڈ کوارٹر میں اجلاس منعقد کیا گیا جس میں ایس پی ہیڈکوارٹر ڈی ایس پی‘ پی آئی اے‘ایس ڈی پی اوز اور تھانوں کے ایس ایچ اوز نے شرکت کی

اجلاس میں ایس ایس پی حیدرآباد کے پولیس افسران و اہلکاروں کو یہ ہدایت کی گئی کہ تھانے پر آنے والے سائل کے ساتھ خوش اخلاقی اور نرمی سے پیش آئیں اور ان کی دادرسی کریں تمام ایس ڈی پی اوز روزانہ اپنے آفس میں اپنے سب ڈویژن کے لوگوں سے ان کی شکایات اور درخواستیں سنیںگے جبکہ ایس پی ہیڈ کواٹر بذات خود تھانوں کا سرپرائز وزٹ کر یں اور تھانوں کی کاکردگی کو چیک کریں اور تمام ایس ایچ او ز شام 4 سے 6بجے تک اپنے اپنے ان درخواستیں سنیں گے اور سائل کی ایف آئی آر میں صحیح دفعات درج کرائینگے

جبکہ منشیات فروشوں اور جرائم پیشہ افراد کیخلاف بھر پور کارروائیاں کرتے ہوئے اپنی کارکردگی دکھایئں گے پھر کیا تھا پولیس تھانوں ایس ایچ اوز اور اہلکار حرکت میں آگئے اور ڈرگ مافیا ہیروئین اور چرس شراب اور دیگر جرائم کی وارداتوں مین پوری اور لوٹا ہوا سامان وطلائی زیوارت کی برآمد گی تھانیداروں نے دکھائی دی حالی روڈ کی پولیس نے ڈرگ مافیا کے اقبال شیدی کو گرفتار کرتے ہوئے ہیرویئن و چرس کے پیکٹ برآمد کئے تو قاسم آباد تھانے کی پولیس نے لاکھوں کی چوری کی گئی رقم برآمد بھی کر کے دکھائی تو پھر ایئر پورٹ تھانے کی پولیس کیوں کسی سے پیچھے رہتی فوری کارروائی کرتے ہوئے بڑی تعداد میں غیر ملکی انڈین گٹکے کے پیکٹ برآمد کر کے ملزم محمد عارف کی گرفتاری ظاہر کر دی گئی

اور تو اور فورٹ تھانے کی پولیس نے بھی ایک ملزم اخترم کو بھی گرفتار کر کے اس کے قبضے سے 15بوتلیں شراب اور دوسری کارروائی سینکڑوں مین پوری کے ساشوں سمیت ملزم اسامہ کی گرفتاری ظاہر کی گئی اس طرح ایک درجن سے زائد ملزمان کو مختلف تھانوں کی پولیس نے منشیات فروشی غیر قانونی اسلحہ مختلف گاڑیوں سے مین پوری بڑی تعداد میں بوریاں اور پیکٹ برآمد کئے گئے پولیس نے خوام خواہ کوئی کامیابیاں حاصل نہیں کی ہے‘ صرف یومیہ کی بنیاد پر اپنے اپنے تھانوں میں جرائم پیشہ افراد کے خلاف کارروائیاں کرتے ہوئے کئی افراد کو چلان کیا گیا ہے

لیکن شہر یوں سے سے کئی طلائی زیورات پریس نقدی اور موٹرسائیکلیں چھینے کے واقعات میں کمی نہیں آتی ہے اب پھر حیدرآباد کے مختلف تھانوں کی حدود میں کئی منشیات کے اڈے اور کئی نیٹ ورک اور یگر جرائم پیشہ افراد کی کارروائیاں جارہی ہیں‘ اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ منشیات فروشی کے الزام میں پولیس منشیات فروشوں کی سرپرستی بھی کرتی آرہی ہے اور ہوسٹری کے علاقے جاڑو پہنور کے رہائشی و جامع مسجد بلال پیش امام کو منشیات فروشوں اور ہوسٹری پولیس نے اغواء کیا اور تشدد کا نشانہ بنایا تھا

مذکورہ مسائل ہوسٹری پولیس کے پاس اپنی فریاد لے کر پہنچا تو ہوسٹری پولیس نے اپنے پیٹے بھائی کا ساتھ دیا اور یوں سائل لے کر ایس ایس پی آفس پہنچا تو صرف اسکی درخواست جمع کر لی گئی لیکن فوری طور پر ایس ایس پی حیدرآباد کے آفس کے عملے نے ہوسٹری پولیس کے سپاہی جس پر مذکورہ مسائل نے الزام عائد کیا اس کے خلاف کارروائی نہیں کی اور پولیس حربے القمار پریس کلب انصاف کی اپیل لے کر میڈیا کے پاس پہنچا سائل نے بتا یا کے اپنے منشیات فروش کی جانب سے حراساں کرتے ہوئے ہوسٹری پولیس کے اہلکار سے اغواء کر واکر اسے تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے

اور اسی کے جسم کے مختلف حصوں سمیت نازک حصوں کو داغا اور لوہے کی راڈ اور چمڑے کے بیلٹ سمیت تشدد کر کے زخمی کیا گیا مسائل ایس ایس پی حیدرآباد کے عملے کی فوری انصاف کی فراہمی نہ کئے جانے کیخلاف ڈی آئی جی حیدرآباد سمیت پولیس کے اعلیٰ احکام سے اپیل کر دی ہے کے اسے انصاف فراہم کیا جائے اورمنشیات فروش اور ہوسٹری پولیس اہلکار سمیت دیگر کیخلاف کارروائی کے سزائیں دلوائی جائیں

ایس ایس پی سرفراز شیخ کی جانب سے ڈی ایس پیز اور ایس ایچ اوز کوکئی مقدمات کو دیئے جائیں گے مسائل کو فوری انصاف فراہم کئے جانے کے عمل کو یقینی بنایا جائے اور پولیس تھانے اس عمل کی عکاسی کے بجائے نفی کریں تو ان اجلاسوں احکامات انصاف کی فراہمی صورتحال میں تبدیل ہو جائی گی جہاں مسائل کو پولیس تحفظ فراہم نہ کریںبلکہ تھانیداروں اور پولیس اہلکاروجرائم پیشہ افراد سرپرستی کریں تو پھر شہریوںکو قانونی تحفظ کی فراہمی اور اقدامات صرف دکھائی دے رہے ہیں۔

(240 بار دیکھا گیا)

تبصرے