Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 19 جون 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

تھری بھوک سے نڈھال سرکاری افسر مالا مال

حاجی عید و خان جیلانی جمعه 11 جنوری 2019
تھری بھوک سے نڈھال سرکاری افسر مالا مال

سانگھڑ کے قحط زدہ صحرائے اچھرو تھر کے متاثرین کی امدادی گندم انتظامیہ کی ملی بھگت سے اوپن مارکیٹ میں فروخت کی جارہی تھی‘ خیبرانی پولیس نے سڑک کو حراست میں لے لیا‘

اوپن مارکیٹ میں گندم کی قیمت ساڑھے پانچ لاکھ روپے بتائی جاتی ہے‘ بتایا جاتاہے کہ ٹرک میں 379 من گندم بھری ہوئی تھی‘ تھر متاثرین کے لیے امدادی گندم فراہم کی گئی تھی‘ ذرائع کے مطابق انچارج مختیار کار سانگھڑ یونس کھوسو نے مقامی بیوپاری تلوک چند اور دھرم داس سے ملی بھگت کرکے امدادی گندم کو اوپن مارکیٹ میں فروخت کے لیے بھیج دیا‘

اطلاع ملنے پر ضلع مٹیاری کی پولیس اسٹیشن خیبرانی کے ایس ایچ او بچل دل نے جیوانی چیک پوسٹ پر ناکہ بندی کرتے ہوئے ٹرک کو حراست میں لے لیا‘ ٹرک نمبر TAB-159 بلوچستان لسبیلہ کے ڈرائیور برکت نے بتایا کہ گندم کا ٹرک ریونیو سینٹر چوٹیاریوں گورنمنٹ پرائمری اسکول سوڈو خان ملاح سے لوڈ کی گیا‘

ڈرائیور برکت کا مزید کہنا تھا کہ بیوپاری دھرم داس نے ٹرک میں 15156 کلو گرام گندم لوڈ کراتے ہوئے کہا کہ گندم کا ٹرک حیدر آباد دستگیر کانٹے کے قریب علی آٹا چکی پر خالی کرنا ہے‘ ڈپٹی کمشنر سانگھڑ نثار احمد میمن کا کہنا ہے کہ ریونیو سینٹر پر ریکارڈ کے مطابق گندم پوری ہے ‘

مزید پڑھئیے‎ : حیدرآباد…برباد..!!

تاہم واقع کی انکوائری کے لیے ای ڈی سی ون کو احکامات دیئے گئے ہیں‘ ملوث اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی‘ ذرائع کے مطابق گندم کی فروخت میں مختیار کا ر سانگھڑ یونس کھوسو مبینہ طورپر ملوث ہے‘ سانگھڑ مختیار کا ر سانگھڑ پولیس کھوسو کی سربراہی میں متاثرین اچھڑو تھر کو امدادی گندم کی تیسری قسط تقسیم کی جانی تھی‘

باوثوق ذرائع کے مطابق مختیار کار سانگھڑ یونس کھوسو نے چوٹیاریوں کے مقامی بیوپاری تلوک چند کے ساتھ ملی بھگت کرکے گندم کو حیدرآباد اوپن مارکیٹ میں فروخت کرنے کا مکمل پروگرام بنایا‘ امدادی گندم کا ٹرک بیوپاری تلوک چند سے سود ے بازی کرتے ہوئے فروخت کیا‘

تلوک چند نے سانگھڑ کے بیوپاری دھرم داس سے سودے بازی کرتے ہوئے فروخت کردیا‘ سانگھڑ کے بیوپاری دھرم داس نے سانگھڑ کے ٹرک اڈے کے مالک مجاہد سے کرائے پر ٹرک نمبر TAB-159 بلوچستان لسبیلہ حاصل کیا‘ دوسری طرف ڈسٹرکٹ فوڈ آفیسر منور آرائیں کا کہنا ہے کہ اس گندم کے ساتھ ہمارا کوئی واسطہ نہیں ہے ‘

مطلوبہ سینٹر ریونیو کے حوالے ہے ‘ جبکہ رابطہ کرنے پر ایس ایچ او خیبرانی بچل دل نے بتایا کہ ٹرک حراست میں لیاگیاہے‘ مزید جانچ پڑتال کررہے ہیں‘ مطلوبہ ملنے والے ٹرک کے خلاف 550 کی کارروائی میں شوکردیا گیاہے‘ دوسری جانب سانگھڑ چوٹیاریوں میں متاثرین کے لیے کئی روز گزر گئے‘

ریلیف والی گندم نہ ملنے پر متاثرین سارا دن افسران کا صبح سے شام تک انتظار کرتے ہوئے اپنے گھروں کو خالی ہاتھ چلے گئے اور متاثرین میں نبی بخش جونیجو‘ محمد رمضان ‘ سید باقر شاہ‘ کرشن ‘ گلاب اور دیگر نے احتجاج بھی کیااور وزیر اعلیٰ سند اعلیٰ حکام فورا نوٹس لیں‘ ڈپٹی کمشنر سانگھڑ نے کوئی کارروائی اتنے دن گزرنے کے باوجود کچھ نہیں کیا؟

(225 بار دیکھا گیا)

تبصرے