Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 20 مارچ 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

ہیئر ڈائی کے سائیڈ افیکٹس

عالیہ نواب جمعرات 10 جنوری 2019
ہیئر ڈائی کے سائیڈ افیکٹس

اس بات سے انکار نہیں کیا جا سکتا کہ بالوں کو رنگنے سے آپ کی شخصیت میں ایک زبردست تبدیلی آتی ہے اور اگر آپ کے بالوں کا رنگ آپ کو سوٹ کر جائے تو تعریفوں کے پل بھی بننے لگتے ہیں۔کچھ لوگ بالوں کی سفیدی چھپانے کے لئے اور کچھ لوگ صرف خوبصورت دکھنے کے لئے ہیر کلر کا انتخاب کرتے ہیں۔ چونکہ یہ ڈائی مختلف طرح کے کیمیکلز سے تیار کیا جاتا ہے اس لئے اس کے سائیڈ افیکٹس سے انکار نہیں کیا جا سکتا۔

سر میں خشکی
بالوں کے لئے جن کلرز کا استعمال کیا جاتا ہے ان میں ایسے اجزا شامل ہوتے ہیں جو بالوں کی جلد کو متاثر کرتے ہیں جس کی وجہ سے خشکی کی شکایت ہو سکتی ہے۔

الرجی
ہیئر ڈائی میں پی فینائلین ڈیامائن نامی ایک کیمیکل شامل کیا جاتا ہے جو مختلف اقسام کی الرجی، آنکھوں کے گرد سوجن اور جلد پر ریشیز جیسے مسائل کی وجہ بن سکتا ہے۔

سر میں خارش اور تکلیف کا احساس
ماہرین کے مطابق بیشتر افراد کو ہیئر کلر میں موجود اجزاء کے نتیجے میں الرجی کا سامنا ہوتا ہے۔ ان علامت کا آغاز میں احساس نہیں ہوتا لیکن وقت کے ساتھ ساتھ خارش، سوجن یا سر پر رطوبت
ظاہر ہونے لگتی ہے۔

دمہ
اکثر کلرز میں امونیا کا استعمال زیادہ کیا جاتا ہے۔ یہ سانس کے رستے جسم میں داخل ہو کر کھانسی، گلے میں تکلیف اورپھیپڑوں میں سوزش کی وجہ بنتا ہے۔ دمے کے مرض کی شدت میں بھی ہیئر ڈائی خطرناک حد تک اضافہ کرسکتا ہے۔

مزید پڑھئیے‎ : بے بی آئل سے خوبصورتی

چند تجاویز:
*پورے بال رنگنے سے پہلے ایک لٹ یا سر کے تھوڑے حصے پر کلر ٹیسٹ کریں کہ کہیں اس سے کوئی نقصان تو نہیں ہو رہا۔
*ہمیشہ اچھی کوالٹی والے ہیئڑ کلر استعمال کریں۔*حاملہ خواتین پرمیننٹ ہیئر ڈائی کے استعمال سے گریز کریں۔

احتیاطی تدابیر
ہئیرڈائی سے پہلے ضروری ہے کہ کچھ باتوں کو مد نظر رکھا جائے تاکہ آپ بہتر نتائج حاصل کر سکیں اور آپ کوکسی طرح کی کوفت کا سامنا نہ کرنا پڑے۔
ڈائی سے پہلے آپ کو اپنے بالوں کی صحیح رنگت معلوم ہونی چاہئیے تاکہ آپ اپنے بالوں کے لیے
مناسب شیڈ کا انتخاب کر سکیں۔
نارمل رنگت کے بال ڈائی کرنے کیلیے مختلف شیڈز کا انتخاب کیا جا سکتا ہے جبکہ ہلکی رنگت والے بالوں کیلیے مناسب شیڈز کا انتخاب کرنے کیلیے ماہر بیوٹیشن سے مشورہ ضروری ہے۔

2۔حقیقت پسند بنیں:
ڈائی سے پہلے یہ بات ذہن میں رکھیں کہ ایک ہی دفعہ میں بالوں کے رنگ میں تبدیلی نہیں آسکتی۔ بالوں کے رنگ کو یکسر تبدیل کرنے کے لیے آپکو کئی دفعہ کلر کا استعمال کرنا پڑے گا جب کہ بالوں کو ہلکے رنگ میں رنگنے کے لیے کافی محنت درکار ہوتی ہے۔

3۔وگ پہن کر دیکھیں :
اگر آپ بالوں کے رنگ کو بالکل تبدیل کرنا چاہتے ہیں تو ڈائی سے پہلے مطلوبہ رنگ کی یا اس سے ملتی جلتی وگ لگا کر دیکھیں اس طرح آپ کو پتہ چل جائے گا کہ یہ رنگ آپ پر جچے گا بھی یا نہیں۔

4۔زیادہ مقدار میں کلر خریدیں:
بالوں کی لمبائی اور گھن کے لحاظ سے کلر کی ضرورت پیش آتی ہے۔ اس لیے خریدتے وقت اپنے بالوں کی لمبائی کو پیش نظر رکھتے ہوئے کلر خریدیں لمبے بالوں میں دو سے تین پیک استعمال ہوسکتے ہیں۔کیوں کہ تمام بالوں کو ایک سا رنگنے کے لیے اوپر سے نیچے تک ایک جیسا کلر لگانا پڑتا ہے۔

5۔صحیح فارمولے کا انتخاب کریں:
اپنی جلد کی حساسیت کے حساب سے صحیح فارمولا منتخب کریں۔حساس جلد والی خواتین کو کریمی فارمولے والے کلر استعمال کرنے چاہیں تاکہ وہ بہہ کر مانگ میں یا چہرے پر نہ جاسکیں۔ اسی طرح گھنے اور گھنگریالے بالوں والی خواتین کو جیل یا لکویڈ فارمولا استعمال کرنا چاہیے۔

6۔سوئمنگ سے گریز کریں:
پول میں موجود کلورین بالوں کے رنگ کو کاٹ سکتی ہے۔ اس لیے ضروری ہے کہ ہئیر ڈائی سے پہلے اور بعد دو ہفتے تک پول میں نہانے یا اس کے پاس بیٹھنے سے گریز کریں۔

7۔اپنی پسند کے رنگ سے ہلکا رنگ خریدیں:
ماہرین کا کہنا ہے کہ آپ اپنے لیے جو رنگ خریدنا چاہتے ہیں اس سے ایک دو شیڈز ہلکا رنگ لیں۔ کیونکہ ڈبے میں موجود کلر ڈبے کے اوپر بنی تصویر کے بالوں کے رنگ سے زیادہ گہرا ہوتا ہے۔ رنگ کو ہلکا کرنے سے ہلکے شیڈ مء￿ ں خرید لینا زیادہ بہتر ہوگا۔

8۔ہئیر ڈائی سے پہلے شاور نہ لیں:
سر کی جلد کا قدرتی تیل کلر سے ہونے والی بے چینی یا جلن سے بچاتا ہے۔ ماہرین کے مطابق بغیر دھلی ہوئی جلد کلر کے لیے زیادہ مناسب ہے۔ اس لیے جب آپ ہئیر ڈائی کا ارادہ کریں تو اس سے ایک دن پہلے سے شیمپو کا استعمال ترک کردیں۔
نوٹ:تیل لگے بالوں میں کلر نہ لگائیں۔

9۔شیمپو تبدیل کرلیں:
کلیری فائنگ یا خشکی دور کرنے والے شیمپو میں موجود سلفیٹ اور دوسرے کیمیکلز بالوں کا رنگ کاٹ دیتے ہیں۔ اس لیے ضروری ہے کہ بالوں کی رنگت کو محفوظ رکھنے والے شیمپو استعمال کیے جائیں۔

10۔نقصان کے لیے تیار رہیں:
ہئیر ڈائی سے پہلے یہ بات ذہن میں رکھیں کہ کلر لگانے سے بالوں کو نقصان پہنچتا ہے۔ چاہے آپ بالوں کے رنگ کو تبدیل کریں یا اپنے بالوں کا رنگ ہی استعمال کریں دونوں طرح کے کلر میں ہائیڈروجن پر آکسائیڈ کی موجودگی بالوں کو نقصان پہنچاتی ہے۔ بالوں کی چمک برقرار رکھنے کے لیے ہفتے میں ایک دفعہ تیل کا استعمال ضرور کریں۔

(112 بار دیکھا گیا)

تبصرے