Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 24 جون 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

کبھی حسد نہیں کی ۔ماریہ بی

عاصم رحمانی هفته 05 جنوری 2019
کبھی حسد نہیں کی ۔ماریہ بی

ماریہ بی کے نام سے کون واقف نہیں ،ان کا نام نہ صرف اندرون ملک بلکہ دنیا بھر میں معیار کی علامت سمجھا جاتا ہے۔
اگرچہ پاکستان میں فیشن ڈیزائننگ کا ماضی صدیوں پر محیط نہیں بلکہ گزشتہ دو دہائیوں نے اس انڈسٹری کو وہ مقام دیا ہے جس کی مثل ملنا ہی مشکل ہے۔
اور بلاشبہ اس کا کریڈٹ ماریہ بی جیسے لوگوں کو جاتا ہے جنہوں نے اپنی تخلیقی صلاحیتوں اور دن رات کی محنت سے دنیا بھر میں پاکستان کے ٹیلنٹ
کو متعارف کروایا ،جس بناء پر آج بلا شبہ ہم اپنی اس انڈسٹری پر جتنا بھی فخر کریں کم ہے۔ماریہ بی کے ڈیزائن سب ہی دیکھنا چاہتے ہیں‘ ماریہ بی کے برانڈ کی پورے ملک میں برانچز ہیں، جہاں پر خواتین کیلئے منفرد طرح کے ملبوسات دستیاب ہیں۔
ماریہ بی نے اپنے کام کا آغاز 14 برس قبل کیا،جب خواتین اس فیلڈ میں تو کیا کسی بھی فیلڈ میں نہ ہونے کے برابر تھیں ،
لیکن ماریہ بی ایک عزم لے کر اس فیلڈ میں آئیں تھی کہ وہ اپنی کامیابی منوا کر ہی دم لیں گی اور آج بھی ان سے ملنے والے ان کے لہجے کی مضبوطی سے ان کی کامیابی کی وجہ جان جاتے ہیں۔
ماریہ اپنے اس کاروبار کے ذریعے خواتین کیلئے مشعلِ راہ بننا چاہتی تھیںوہ خود کہتی ہیں کہ ’’ڈیزائننگ کی فیلڈ میں آنے کا مقصد اس شعبے میں انقلابی تبدیلیاںلانا اور اس کو ملکی خواتین کیلئے قابل رسائی بنانا ہے تاکہ خواتین زیادہ سے زیادہ اس طرف آئیں اور بناء کسی شک و شعبے یہ جان جائیں کہ ان کے لئے دنیا میں کوئی رکاوٹ نہیں ہے بس وہ آئیں اور چھا جائیں۔
‘‘ ماریہ پاکستان انسٹیٹیوٹ آف فیشن ڈیزائن میں سال 1998ء کی کلاس کی پہلی ویلی ڈکٹورین قرار پائیں جس کے بعد انہوں نے اپنا کاروبارلانچ کیا۔ بلا شبہ اس کے بعد یہ کہا جا سکتا ہے کہ ماریہ کا سفر تیزی سے آگے بڑھا اور انہوں نے پیچھے مڑ کے دیکھنے کا کبھی تصور بھی نہیں کیا۔ ماریہ بی نے کہا کہ آرٹ اور کپڑوں کے متعلق میرا جنون وہ واحد وجہ تھی جو مجھے فیشن ڈیزائننگ کے کیرئیر میں لایا۔
ہمارے ڈیزائن کا واحد فلسفہ یہ رہا ہے کہ ڈیزائنر کپڑوں کو خواتین کیلئے قابل رسائی بنایا جا سکے۔ ماریہ بی کا کہنا تھا کہ کام نیک نیتی سے کیا جائے تو کچھ مشکل نہیں،اب خواتین بہت سے کام کررہی ہیں اور وہ ہر گز بھی چیلنجز سے گھبراتی نہیں ہیں۔ہم نے پاکستان میں ایک اچھوتا ریٹیل نیٹ ورک قائم کیا ہے ۔

(254 بار دیکھا گیا)

تبصرے