Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعرات 04 جون 2020
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

2018 جعلی پولیس مقابلوں کے نام رہا

قومی نیوز منگل 01 جنوری 2019
2018 جعلی پولیس مقابلوں کے نام رہا

کراچی میں سال 2018 ءمیںہونے والی پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ کے حوالے سے تو کراچی کے مختلف علاقوں میں امن و امان کے قیام کے دوران فائرنگ اور دیگر پرتشدد واقعات میں سال 2018 میں 12پولیس اہلکار لقمہ اجل بنے۔

جبکہ گذشتہ سال ہلاک ہونے والے اہلکاروں کی تعداد 21 تھی۔پولیس اہلکاروں کی ہلاکتوں میں کمی کیلئے پولیس میں پورے سال بلٹ پروف جیکٹس اور دیگر ضابطہ اخلاق پر عمل درآمد کی کوششیں کی جاتی رہیں،تفصیلات کے مطابق سال 2018میں بھی پولیس کو پیشہ وارانہ خدمات کی انجام دہی کے دوران اپنی جان کا نذرانہ پیش کرنا پڑا۔

رواں سال کے ابتدائی 10ماہ کے دوران مختلف علاقوں میں فائرنگ سے 9پولیس اہلکارجاں بحق ہوئے،رواں سال 24نومبرکو ڈیفنس کے علاقے میں چینی قونصل خانے پر دہشتگردوں کے حملے کو ناکام بناتے ہوئے 2پولیس اہلکاروں نے جام شہادت نوش کیا،ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بننے والے زیادہ تر پولیس اہلکاروں کو دوران ڈیوٹی یا ڈیوٹی کے بعد گھر آتے یا جاتے ہوئے نشانہ بنایا گیا۔

2018 جعلی پولیس مقابلوں کے نام رہا

شہر میں سال 2018ءجعلی پولیس مقابلوں کے نام رہا، نقیب اللہ محسود، انتظار اور مقصود جعلی مقابلوں میں زندگی کی بازی ہارگئے،جعلی مقابلے میں سابق ایس ایس پی راو انوار کی ٹیم تاحال مفرور ہے، مقدمات کی تحقیقات جاری، کوئی ایک جعلی مقابلے کا کیس بھی منطقی انجام تک نہ پہنچ سکا.

نہ ہی ملزمان کو سزا ہو ئی تفصیلات کے مطابق اکیس ویں صدی کا ایک اور سال اختتام کے قریب شہر کراچی جو کہ میگا سٹی کے نام سے جانا جاتا ہے ‘سال2018 ءمیں بھی یہ شہر جعلی پولیس مقابلوں کے نام رہا‘جنوری میں ہی تین 3 پولیس مقابلے جعلی نکلے.

رواں سال کے ابتدائی13 جنوری بروز ہفتہ کو شاہ لطیف ٹاون میں سابق ایس ایس پی ملیر راﺅ انوار کا مقابلہ جعلی نکلا.

نقیب قتل کیس میں راﺅ انوار کی ٹیم تاحال مفرور ہے‘ابھی اس جعلی مقابلے کی باز گشت چل رہی تھی کہ ڈیفنس میں اے سی ایل سی پولیس نے کار پر فائرنگ کرکے نوجوان انتظار کو موت کی نیند سلا دیا‘جس کی تحقیقات تاحال جاری.

تاہم مقتول انتظار کا باپ انصاف کے منتظر ہیں‘ابھی ان دو جعلی پولیس مقابلوں کے مقدمات کسی نتیجے پر نہیں پہنچے تھے کہ 20 جنوری کو ایک اور جعلی مقابلہ سامنے آگیا.

شارع فیصل پر پولیس اہلکاروں نے فائرنگ کرکے نہتے شہری مقصود کو ابدی نیند سلادیا، سی سی ٹی وی فوٹیج منظرعام پر آئی تو پولیس افسران کی دوڑیں لگ گئیں‘13 اگست شہر میں آزادی کا جشن منانے کی تیاری تھی‘کہ رات ڈیفنس موڑ پر پولیس اور ملزمان کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا۔

ایک گولی سگنل پر کھڑی گاڑی میں والدین کے ساتھ بیٹھی ننھی ایمل کولگی‘ایمل ماں باپ کی گود میں تڑپتے ہوئے جان دےدی،اس مقابلے میں ایک ملزم ماراگیاتھااورایک گرفتارہواتھا۔

(403 بار دیکھا گیا)

تبصرے