Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 22 اکتوبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

مہلت ختم، ایکشن شروع،زرداری کو مشکل ترین صورتحال کا سامنا

قومی نیوز جمعه 28 دسمبر 2018
مہلت ختم، ایکشن شروع،زرداری کو مشکل ترین صورتحال کا سامنا

کراچی… تجزیہ کاروں کے مطابق آصف زرداری کی تقریر ماضی کے برخلاف قدرے مختصر اور کمزور تھی۔ سینئر صحافی مظہر عباس کا گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ الزامات بہت سنگین ہیں، آصف زرداری اور ان کی ہمشیرہ کو عدالت میں مشکلات کا سامنا کرنا ہو گا، اس مرتبہ بچنا مشکل ہے کیوں کہ یہ رپورٹ ایف آئی اے نے ٹھوس شواہد کے ساتھ بنائی ہے اور انہیں اگر مزید چار ہ مل گئے تو مزید چیزیں سامنے آنے کے بھی قوی امکان ہیں۔ آصف زرداری خود پر لگے الزامات کا دفاع کر نہیں پا رہے۔ تجزیہ کاروں کے مطابق سندھ کے وزیر اعلیٰ مراد علی شاہ کا نام بھی جے آئی ٹی میں پہلی مرتبہ آصف زرداری کے سہولت کار کے طور پر سامنے آیا ہے۔مبصرین کہتے ہیں کہ بلاول کی تقریر میں بھی اکثر باتیں پرانی تھیں ‘لیکن یہ واضح ہے کہ جو موقف آصف زرداری کا ہے وہی بلاول بھٹو بھی دہرا رہے ہیں۔ سینئر صحافی اور تجزیہ کار کے آر فاروقی کہتے ہیں کہ بلاول نے جے آئی ٹی کو جھوٹا قرار دے کر اسے مسترد کرنے کی ہمت تو کی، مگر آصف زرداری نے تو اس پر بات ہی نہیں کی۔ ان کے مطابق یہ معاملہ اتنا سادہ نہیں کہ صرف اٹھارہویں ترمیم کے خاتمے کیلئے پیپلز پارٹی کی قیادت خصوصاً آصف زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کے گرد شکنجہ کسا جا رہا ہے ، گزشتہ دس برسوں کے دوران کراچی میں بہت کچھ ہوا ہے۔ بلڈنگ کنٹرول کا ڈی جی منظور قادر کاکا، ڈاکٹر عاصم حسین، ایڈمنسٹریٹر ثاقب سومرو، شرجیل انعام میمن اور نثار مورائی کے ذریعے کمائے گئے اربوں روپے کہا ں گئے ؟ فالودے والے ، رکشہ ڈرائیور اور دکانداروں کے اکاؤنٹس میں موجود اربوں روپے کیوں اور کیسے پہنچے ؟ اس سب کا جواب تو دینا ہوگا۔ سندھ میں سرکاری فنڈز کی خورد برد اور بدعنوانی کا معاملہ انتہائی سنگین ہے۔ انسداد بدعنوانی کے محکمہ کی کارکردگی کو مایوس کن قرار دیتے ہوئے اس پر بھی سوال اٹھائے جا رہے ہیں۔دریں اثناء فاقی کابینہ نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں بڑا ایکشن لیتے ہوئے جے آئی ٹی کی رپورٹ میں شامل سابق صدر آصف زرداری ، بلاول بھٹو ، فریال تالپور،وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ ،قائم علی شاہ اور صوبائی وزرا سمیت172 افراد کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کی منظوری دے دی۔

(257 بار دیکھا گیا)

تبصرے