Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعه 18 جنوری 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News ! Best Urdu Website in World

بے گھروں کیلئے شیلٹر ہومز

عمران عاقل جمعرات 20 دسمبر 2018
بے گھروں کیلئے شیلٹر ہومز

وزیراعظم عمران خان نے اقتدار سنبھالنے کے فوری بعد جن دو سیکٹروں میں کام کو ترجیح دی ہے۔ ان میں سے ایک روزگار اور دوسرا بے گھروں کیلئے چھت کا سایہ فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے اپنے عہد اقتدار میں 50لاکھ کم قیمت گھر اور ایک کروڑ ملازمتیں فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ لاہور اور پشاور میں شیلٹر ہومز کا آغاز بھی اسی سلسلے کی کڑی ہے۔ گو کہ یہ عارضی قیام گاہیں ہیں، لیکن سخت سردی کے موسم میں یہ عارضی پناہ گاہ بھی کسی نعمت سے کم نہیں ہے، جہاں کھانے پینے کے علاوہ طبی سہولتیں بھی فراہم کی گئی ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے 14 دسمبر کو پشاور میں غریب اور نادار مزدوروں کیلئے شیلٹر ہوم (پناہ گاہ) کا افتتاح کیا ہے۔ قبل ازیں وزیراعظم لاہور میں بھی شیلٹر ہوم کا افتتاح کرچکے ہیں جو غریبوں اور ناداروں کو چھت کا سایہ فراہم کررہا ہے۔ پشاور میں قائم مرکزی شیلٹر ہوم میں 20 کمرے اور 5 بڑے ہال ہیں، جس میں 200 افراد رہائش اختیار کرسکتے ہیں۔ 3 کمرے فیملیز کیلئے مختص کئے گئے ہیں جبکہ چار مختلف بس اڈوں کے قریب بھی سرکاری مہمان خانے بنائے گئے ہیں تاکہ رات گئے ٹرانسپورٹ نہ ملنے پر ان مہمان خانوں میں عارضی طور پر رات گزاری جاسکے۔ یہاں بستروں کا معقول انتظام ہے۔ اس طرح کے چار شیلٹر ہومز (پناہ گاہوں) میں 500 تک بے گھر افراد کو رہائش فراہم کی جائے گی۔ یہ ملک کے غریب اور بے گھر افراد کو سستی رہائش گاہیں فراہم کرنے کی سمت پہلا قدم ہے۔ اس طرح کے شیلٹر ہومز جلد ہی کراچی، اندرون سندھ اور بلوچستان میں بھی نظر آئیں گے۔ وزیراعظم عمران خان کی خصوصی ہدایت پر گورنر سندھ عمران اسماعیل نے اس سلسلے میں کام شروع کردیا ہے۔ ان کا سماجی تنظیموں اور فلاحی اداروں سے بھی رابطہ ہے تاکہ پرائیویٹ سیکٹر کو بھی اس سلسلے میں فعال اور متحرک کیا جائے۔ گزشتہ دنوں انہوں نے حیدر آباد میں معروف رفاہی ادارے سیلانی ویلفیئر ٹرسٹ کے تحت تعمیر کردہ غریبوں کیلئے سستے فلیٹوں کے ایک منصوبے کا افتتاح بھی کیا ہے۔ اس منصوبے کے تحت کم آمدنی والے افراد کیلئے 92 سستے فلیٹس تعمیر کئے گئے ہیں، جن کی چابیاں گورنر سندھ نے الاٹیوں کے حوالے کی ہیں۔ اس تقریب میں وفاقی وزیر فیصل واوڈا، ایم پی اے حلیم عادل شیخ، ندیم صدیقی اور سیلانی ویلفیئر ٹرسٹ کے چیئرمین مولانا محمد بشیر احمد فاروقی نے بھی خصوصی طور پر شرکت کی۔ گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا کہ وہ جلد ہی سیلانی ویلفیئر کو وزیراعظم سے 5 ہزار فلیٹوں کی تعمیر کیلئے زمین لیکر دیں گے۔ جس طرح ٹرسٹ لوگوں کی خدمت کررہا ہے وہ متاثر کن ہے۔ گورنر سندھ نے کہا کہ کچھ عرصہ قبل وہ کراچی کے علاقے بہادر آباد میں سیلانی ویلفیئر کے کاموں کا جائزہ لے چکے ہیں۔ ٹرسٹ کے زیر اہتمام یومیہ ایک کروڑ روپے کا کھانا غریبوں کو کھلایا جاتا ہے اور کوئی بھوکا نہیں سوتا۔ انہوں نے سیلانی ٹرسٹ کے فلیٹوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یہ فلیٹ جتنی کم قیمت میں بنائے گئے ہیں یہ کام صرف ایماندار اور دیانتدار ادارہ ہی انجام دے سکتا ہے۔ 11 ہزایر روپے ماہانہ میں تو صرف موٹر سائیکل مل سکتی ہے لیکن سیلانی ویلفیئر ٹرسٹ نے اس رقم میں کم آمدنی والے گھرانوں کو فلیٹ فراہم کئے ہیں جو بڑا کارنامہ ہے۔وزیراعظ‘ عمران خان نے اپنی حکومت کے ابتدائی 100 دنوں میں بے گھر افراد کیلئے شیلٹر ہومز، مہمان خانوں اور فلاحی اداروں کے تعاون سے کم آمدنی والے افراد کو سستے گھروں کی فراہمی کا جو سلسلہ شروع کیا ہے یہ مدینہ منورہ جیسی فلاحی ریاست بنانے کی سمت ایک قدم ہے۔ پیپلز پارٹی نے 1970ء کا الیکشن روٹی، کپڑا، مکان کے نعرے پرلڑا اور حکومت حاصل کی تھی لیکن عوام کو آج تک یہ سہولتیں میسر نہیں آئی ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے حکومت حاصل کرتے ہی روزگار اور بے گھروں کیلئے شیلٹر ہوم اور سستے گھروں کی اسکیمیں شروع کرکے بیروزگاروں اور چھت کے سائے سے محروم افراد کیلئے امید کی شمع روشن کردی ہے۔

(54 بار دیکھا گیا)

تبصرے