Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 20 مارچ 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

عوام پر ایک اور بجلی بم کا حملہ ، 130 ارب کا بوجھ ڈال دیا گیا

ویب ڈیسک جمعرات 20 دسمبر 2018
عوام پر ایک اور بجلی بم کا حملہ ، 130 ارب کا بوجھ ڈال دیا گیا

اسلام آباد۔۔۔۔ نیپرا نے بجلی ٹیرف کا بم عوام پر گرادیا ہے اور یکساں پاور ٹیرف نظام کا اطلاق کرتے ہوئے بجلی مزید مہنگی کردی، نیپرا نے بجلی کی قیمت میں ایک روپے 27پیسے فی یونٹ اضافے کا فیصلہ کیا ہے تاہم ماہانہ 300 یونٹس استعمال کرنے والے صارفین متاثر نہیں ہوں گے ، بجلی کی قیمت میں اضافے سے صارفین پر 130 ارب روپے کا سالانہ بوجھ پڑے گا۔ تفصیلات کے مطابق،بالآخر بجلی ٹیرف بم عوام پر گرادیا گیا ہے کیوں کہ نیپرا نے  پاور ٹیرف میں 1اعشاریہ27فی یونٹ اضافہ کردیا ہے، جس کی وجہ سے صارفین پر 130 ارب روپے سالانہ بوجھ پڑے گا جو کہ ترمیمی نیپرا ایکٹ کے تحت بجلی کی ترسیلاتی کمپنیوں (ڈسکوز)کے مستحکم اکائونٹس کی بنیاد پر کیا گیا ہے۔بجلی ٹیرف کا یہ اضافہ زیادہ بجلی استعمال کرنے والے گھریلو صارفین پر پڑے گا ، بڑے کمرشل ، بجلی اور کھاد کے شعبوں پر 20پیسہ فی یونٹ سے 2اعشاریہ60روپے فی یونٹ جس میں ڈسکوز کے لحاظ سے فرق ہوگا۔ٹیرف کے اضافے سے وہ صارفین متاثر نہیں ہوں گے جو ماہانہ تین سو یونٹس تک بجلی استعمال کریں گے۔البتہ جو صارفین بلحاظ وقت (ٹی او یو)میٹرز استعمال کررہے ہیں ، انہیں پیک آور ٹیرف کے تحت 20اعشاریہ78روپے کے تحت ادائیگی کرنا ہوگی اور کم پیک ٹیرف کے تحت 16اعشاریہ70روپے فی یونٹ کے حساب ادائیگی کرنا ہوگی۔تاہم، 146ارب روپے جو کہ خالص ہائیڈل پروفٹ کی مد میں تھے اس کا بوجھ صارفین پر منتقل نہیں کیا گیا ہے کیوں کہ حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ اس رقم کا بندوبست قرضوں کے ذریعے کرے گی ، جس کی ادائیگی واپڈا کو کی جائے گی تاکہ وہ صوبوں (خیبر پختونخوا اور پنجاب)کو ادائیگی کرسکے۔اس سے قبل ریگولیٹر نے ٹیرف میں 3اعشاریہ82روپے فی یونٹ اضافے کا تخمینہ لگایا تھا جو کہ پاور ٹیر ف نظام کے فرق کے تحت تھا ،تاہم ترمیمی نیپرا ایکٹ کے اطلاق کے بعد ریگولیٹر نے نیا تخمینہ لگایا جو کہ مستحکم اکائونٹس کی بنیاد پر یکساں ٹیرف نظام کے تحت تھا۔جب ریگولیٹر نے650ارب روپے کی صلاحیتی قیمت کی بنیاد پر 3 اعشاریہ 82 روپے فی یونٹ کے اضافے کی بات کی تو پی ٹی آئی حکومت نے بجلی ٹیرف میں اوسطاً1 اعشاریہ 27روپے فی یونٹ اضافے کا فیصلہ ای سی سی کے اجلاس میں کیا ، جس میں خالص ہائیڈل منافع 146ارب روپے کا بوجھ منتقل نہیں کیا گیا۔

(137 بار دیکھا گیا)

تبصرے