Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 27 مارچ 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

قومی کھیل ہاکی پستی کی جانب گامزن

کلیم عثمانی پیر 17 دسمبر 2018
قومی کھیل ہاکی پستی کی جانب گامزن

ہاکی ورلڈ کپ کے کراس اوور راؤنڈ میں بیلجیئم نے پاکستان کو آؤٹ کلاس کرتے ہوئے 0-5 سے شکست دے کر عالمی کپ سے باہر کردیا اور کوارٹر فائنل میں جگہ بنا لی۔بھارت کے شہر بھوبھنیشور میں جاری ہاکی ورلڈ کپ کے کراس اوور راؤنڈ میں پاکستان کا مقابلہ بیلجیئم کی مضبوط ٹیم سے تھا جس میں یورپیئن ٹیم نے پاکستان کو چاروں شانے چت کردیا۔میچ کے 10ویں منٹ میں بیلججیئم کو پینالٹی کارنر ملا جس پر الیگزینڈر ہینڈرکس نے گول کر کے اپنی ٹیم کو برتری دلائی جسے 13ویں منٹ میں تھامس بریلس نے فیلڈ گول کر کے دگنا کردیا۔دسویں منٹ میں گول کرکے پاکستان کو ایک صفر کی برتری دلائی۔تیرہویں منٹ میں تھامس بریلس نے گول کرکے برتری کو دو صفر کردیا۔ سیڈرک نے ستائیسویں منٹ میں گول کرکے برتری کو تین صفر کردیا۔میچ کے دوسرے کوارٹر کے اختتام سے قبل ڈی کے باہر سے سیڈرک چارلی کی جانب سے ماری گئی ہٹ پر گیند پاکستانی دفاعی کھلاڑی کی ہاکی سے لگ کر گول میں جا پہنچی جس کی بدولت چین کو 0-3 کی برتری حاصل ہو گئی۔میچ کے پہلے ہاف کے اختتام تک بیلجیئم کو عمدہ کھیل کی بدولت 0-3 کی برتری حاصل تھی لیکن دوسرا ہاف بھی پاکستان کی قسمت نہ بدل سکا۔میچ کے 35ویں منٹ میں دو پاکستانی دفاعی کھلاڑیوں کی غلطی سے بیلجیئم کو گول کرنے کا موقع ملا اور سباستین ڈوکیئر نے گیند کو گول میں پہنچانے میں کوئی غلطی نہ کی۔بیلجیئم نے اس کے بعد بھی حملوں کا سلسلہ تواتر سے جاری رکھا اور اس دوران پاکستانی ٹیم بالکل بے بس نظر آئی۔میچ کے 53ویں منٹ میں یورپیئن ٹیم کو پینالٹی اسٹروک ملا اور اس پر گول کی بدولت بیلجیئم نے 0-5 سے کامیابی اپنے نام کرتے ہوئے پاکستان کے عالمی کپ میں سفر کا خاتمہ کردیا۔عالمی کپ میں پاکستانی ٹیم کی کارکردگی انتہائی مایوس کن رہی اور وہ کوئی بھی میچ جیتنے سے قاصر رہی جبکہ ایونٹ میں قومی ٹیم صرف دو گول اسکور کر سکی۔ہاکی ورلڈ کپ کے گروپ ڈی کے آخری مرحلے کے میچوں میں نیدرلینڈز نے پاکستان کو 5-1سے شکست دے دی بھوبھنشور میں پاکستان اور نیدرلینڈز کے درمیان کھیلے گئے میچ میں نیدرلینڈز کی ٹیم کھیل پر چھائی رہی اور پہلے کوارٹر کے ساتویں منٹ میں ہی تھیری برینکمان نے گول کر کے برتری دلادی۔پاکستان کے عمر بھٹہ نے فوری طور پر نویں منٹ میں شاندار گول کے ذریعے پاکستان ٹیم کو میچ میں واپس لانے کی کوشش کی جو میچ کے 27 ویں منٹ تک برقرار رہی تاہم ویلنٹن ویرگا نے گول کرکے پاکستان پر ایک مرتبہ پھر برتری حاصل کی۔نیدرلینڈز کی جانب سے 37 ویں منٹ میں بوب ڈی ووگڈ، 47 ویں منٹ میں جورٹ کرون اور 59 ویں منٹ میں مینک وین ڈیر ویرڈین نے گول کرکے ٹیم کی جیت پر مہر ثبت کردی۔مقررہ وقت پر نیدرلینڈز کو پاکستان پر 1 کے مقابلے میں 5 گول کی برتری حاصل تھی اور میچ کا اختتام اسی برتری پر ہوا۔نیدرلینڈز کے سیووین ایس کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔قومی ٹیم نے شکست کے باوجود پری کوارٹرفائنل میں جگہ بنالی۔پاکستان کو پری کوارٹرفائنل میں جانے کے لیے نیدرلینڈز سے شکست کی صورت میں گروپ کی دوسری ٹیم ملائیشیا کو جرمنی سے ہارنا لازم تھا اگر ملائیشیا کی ٹیم یہ میچ جیت جاتی تو قومی ٹیم کی اگلے مرحلے میں رسائی مشکل ہوجاتی۔اگر ملائیشیا اپنا میچ برابر کرتاتو پاکستان کو پری کوارٹرفائنل میں پہنچنے کے لیے نیدرلینڈز سے میچ کو برابر کرنا پڑتا۔ورلڈکپ میں پاکستانی ٹیم کو نیدرلینڈز سے قبل جرمنی کے ہاتھوں بھی شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا جبکہ ملائیشیا کیخلاف میچ ڈرا ہوا تھا ایک سابق ہاکی اولمپئن کی کال موصول ہوئی اور انہوں نے انتہائی جذباتی انداز میں بولنا شروع کیا کہ پاکستانی ٹیم بھارت میں کر کیا رہی ہے؟قومی کپتان ورلڈ کپ سے باہر ہو گیا، ٹیم کے کھلاڑی اپنی کارکردگی پر توجہ دینے کی بجائے بھارتی گانوں پر رقص وسرود کی محفلوں میں مصروف ہیں، ہلا گلہ اس وقت اچھا لگتا ہے جب ٹیم کی گراؤنڈ کے اندر بھی پرفارمنس غیر معمولی ہو اور وہ کوئی ہدف حاصل کرچکی ہو، پاکستانی ٹیم ورلڈ کپ کے ابتدائی میچ میں جرمنی کے ہاتھوں شکست سے دو چار ہو چکی، ملائیشیا کے خلاف بھی بڑی مشکل سے میچ ڈرا کرنے میں کامیاب ہو سکی، خوش قسمتی سے ایونٹ کی صورتحال ایسی ہے کہ مایوس کن کارکردگی کے باوجود گرین شرٹس ورلڈ کپ کی ٹائٹل کی دوڑ میں شامل تھی ۔سابق اولمپئن کی باتوں پر غور کیا تو ان میں خاصی صداقت دکھائی دی، اس بار ورلڈ کپ کا فارمیٹ ایسا ہے کہ ابتدائی میچوں میں اچھا کھیل نہ پیش کرنے والی ٹیمیں بھی ٹائٹل کی دوڑ میں شامل ہیں۔ فارمیٹ کے مطابق ہر گروپ کی فاتح ٹیم کوارٹرفائنل میں جگہ بنائے گی جبکہ ہر گروپ کی دوسرے اور تیسرے نمبر کی ٹیمیں دوسرے رائونڈ میں کھیلیں گی جہاں سے 4 کوارٹرفائنل میں پہلے سے موجود 4ٹیموں کے ساتھ شامل ہوجائیں گی۔ اسی فارمولے کے تحت ارجنٹائن، آسٹریلیا، بھارت اور جرمنی کی ٹیمیں اپنے گروپس میں پہلے نمبر پر آنے کی وجہ سے ٹاپ 8میں جگہ بنانے میں کامیاب رہیں۔پاکستانی ٹیم ورلڈ کپ کے گروپ ’’ڈی‘‘ میں شامل تھی، اس میں جرمنی تو اپنے پول میں ٹاپ کرنے کے بعد کوارٹرفائنل کے لیے کوالیفائی کر چکا تھا،تاہم سوچنے کی بات یہ ہے کہ کیا گرین شرٹس اب بھی مضبوط حریف کو زیر کرنے کے قابل ہیں؟سابق اولمپئن کی بات سے پوری طرح متفق ہوں کہ تفریح میں کوئی بری بات نہیں ہے لیکن یہ چیزیں بھی اسی وقت اچھی لگتی ہیں جب آپ کی گراؤنڈز کے اندر بھی پرفارمنس غیر معمولی ہو، پاکستان ہاکی ٹیم کی کارکردگی کی جو موجودہ صورت حال ہے، وہ سب کے سامنے ہے، گرین شرٹس ورلڈ کپ میں کوارٹرفائنل کی دوڑ سے بھی باہر ہونے پر نہ صرف پاکستانی ٹیم کی عالمی سطح پر سبکی ہوئی بلکہ اسپانسرز بھی قومی کھیل سے منہ موڑسکتے ہیں۔پاکستان ہاکی ٹیم کی ورلڈ کپ میں بدترین
شکست پر سابق کھلاڑی برس پڑے اور وزیر اعظم سے قومی کھیل کی تباہی کا نوٹس لینے کا مطالبہ بھی کر دیا۔سابق اولمپئن نوید عالم کا کہنا ہے کہ ملکی ہاکی کا سیاہ دن ہے، ورلڈ کپ کے دوران قومی ٹیم ایک بھی میچ نہ جیت سکی، بیلجیم سے شرمناک شکست سے دو چار ہو کر ورلڈ کپ کی دوڑ سے بھی باہر ہو گئی۔نوید عالم نے کہا کہ کئی برسوں سے ہاکی فنڈز ذاتی جبیوں میں جارہے ہیں جس کا نتیجہ آج قوم نے دیکھ لیا، کرپشن کے خلاف متحرک ادارے پاکستان ہاکی کی بدحالی کا بھی جائزہ لیں۔نوید عالم کا مزید کہنا تھا کہ جو 4 سال بویا تھا وہ آج کاٹ لیا، میگا ایونٹ میں گرین شرٹس کی کارکردگی سے سر شرم سے جھک گئے ہیں، ہاکی پاکستان کی عزت و توقیر تھی، چند لوگوں نے دنیا بھر میں رسوا کرادیا، وزیر اعظم سے مطالبہ ہے کہ وہ فوری طور پر ہاکی کی تباہی کا نوٹس لیں۔سابق کپتان محمد ثقلین نے کہا کہ پاکستان ہاکی کے ساتھ مذاق کیا جارہا ہے، جب تک جواب طلبی نہیں ہوگی، ہاکی میں بہتری نہیں آسکتی۔

(190 بار دیکھا گیا)

تبصرے