Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 15 دسمبر 2018
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

خود پر یقین رکھنے والوں کی ہوتی ہے جیت صنم سعید

عاصم رحمانی اتوار 02 دسمبر 2018
خود پر یقین رکھنے والوں کی ہوتی ہے جیت  صنم سعید

پاکستانی ادکارہ اور ماڈل صنم سعید کا کہنا ہے کہ ٹی وی سے پہچان ملی ہے،یہ کہنا درست نہیں کہ فلموں کے لئے چھوٹی اسکرین کو چھوڑ دیا ہے ، اس میڈیم کو کبھی نہیں چھوڑ سکتی فلموں کی مصروفیات کی بنا پر اگر چھوٹی اسکرین پر کام نہیں کیا تو اس کی کئی وجوہات تھیں جن کے بارے میں بات نہیں کرسکتی بہر حال میرے چاہنے والوں کو میری فلمیں ’’آزاد‘‘ اور ’’کیک‘‘ سے لطف اندوز ہونے کا موقع ملے گا۔ اپنے ایک انٹرویو میں اداکارہ نے کہا کہ فلموں کی ناکامی کا رونا رونے والوں کوکچھ نہیں کہا جاسکتا‘آپ کسی کو اس کی مرضی کا کام کرنے سے نہیں روک سکتے ، ہر ایک کو حق ہے کہ وہ جوچاہے کرے اگر میرا فلموں میں کام کرنا کسی کو برالگتاہے تو وہ انہیں نہ دیکھے ، مستقبل میں آئٹم نمبرکرنے کے سوال پر ان کا کہنا تھا اس حوالے سے کچھ کہنا قبل ازوقت ہوگا ذاتی طور پر آئٹم نمبر کا شوق نہیں ،میں نہیں چاہتی کہ میرا امیج ایک آئٹم گرل کے طور پر بنے بلکہ ایک فلمسٹار کے طور پر اپنی شناخت بنانا چاہتی ہوں۔ صنم سعید نے ہندوستان میں لوگوں پر پاکستانی شوز کے مثبت اثرات پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔ اداکارہ نے کہا کہ وہ اس بات کو سمجھنے سے قاصر ہیں کہ آخر کیوں پاکستان اور ہندوستان مختلف اقوام سمجھے جاتے ہیں، حالانکہ دونوں میں بہت زیادہ مماثلت موجود ہے جس سے اندازہ ہوتا ہے کہ یہ دونوں ایک ہی ہیں۔ صنم کا کہنا تھا کہ ہندوستان اپنی کہانیاں سنانے کیلئے بولی وڈ کو استعمال کرتا ہے وہ دنیا میں بڑی فلمیں بنانے والی صنعتوں میں سے ایک ہے اور یہ لوگ فلموں کے ذریعے سیاست، محبت اور ڈرامہ دکھانے کے ماہر ہیں جبکہ پاکستان میں ہمارا میڈیم چھوٹی سکرین ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم زیادہ فلمیں نہیں بناتے جبکہ تھیٹر بھی نہ ہونے کے برابر ہے، یہی وجہ ہے کہ بیشتر افراد کے لیے تفریح کا واحد ذریعہ گھر میں بیٹھ کر ٹی وی دیکھنا ہے۔ برطانیہ میں پیدا ہونے والی صنم سعید چھ سال کی عمر میں کراچی منتقل ہوئی تھیں، ان کا کہنا ہے کہ وہ ایسے کردار منتخب کرتی ہیں جن سے خواتین کی جدوجہد کا اظہار ہوتا ہو۔ صنم نے مزید کہا کہ وہ ایسے شوز کرنے کی کوشش کرتی ہیں جو اخلاقی طور پر لوگوں کو متاثر کریں اور وہ نوجوان لڑکیوں کے لیے رول ماڈل بن کر عوام کے تصور کو تبدیل کر سکیں۔ صنم سعید نے کہا کہ ایوارڈ اور اعزازات ملنے کے ساتھ ساتھ کسی بھی فنکار کا عمدہ کارکردگی کی بنا پر نامزد ہونا بھی اعزاز سے کم نہیں ہوتا۔اداکارہ نے کہا کہ فیشن ، میوزک اور ایکٹنگ کے شعبوں میں کام کرتے ہوئے ہمیشہ کوشش کی کہ ایسا کام کروں جس کولوگ یاد رکھیں‘ خوش قسمتی سے پہلے فیشن کے شعبے میں بہت پذیرائی ملی ، اس کے بعد جب میوزک کے شعبے میں قدم رکھا توبھی اچھا رسپانس سامنے آیا لیکن ایکٹنگ کے شعبے سے ہونے والی متعدد پیشکشوں کے باعث میوزک کے شعبے میں زیادہ کام نہ کرسکی۔ لیکن اب ٹی وی سیریل اورمنفرد موضوعات کی فلموں میں اہم کردارنبھا رہی ہوں۔

(48 بار دیکھا گیا)

تبصرے

مزید خبریں