Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 18 نومبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

رفاہی اور رہائشی پلاٹوں پر قائم پرائیویٹ اسکولوں کوریگولرائز کرنیکا منصوبہ

صابر علی جمعرات 29 نومبر 2018
رفاہی اور رہائشی پلاٹوں پر قائم پرائیویٹ اسکولوں کوریگولرائز کرنیکا منصوبہ

کراچی۔۔۔۔۔ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی رفاہی اور رہائشی پلاٹوں پر قائم پرائیویٹ اسکولوں کو تجارتی فیس وصول کرکے ریگولرائز کرنے کا منصوبہ تیار کرلیا‘ ذرائع کے مطابق ایس بی سی اے شہر کے مختلف علاقوں میں تجارتی بنیادوں پر قائم بلڈنگوں پر عائد تجارتی فیس لے کر اسکولوں کی ان بلڈنگوں کو بھی تجارتی قرار دے کر انہیں بطورتعلیمی ادارہ انہیں سرگرمیاں جاری رکھنے کی اجازت دے گا‘ ایس بی سی اے کا ادارہ ماسٹر پلان اس حوالے سے اسکولوں کو تجارتی مقاصد کے استعمال کی اجازت دینے کا طریقہ کار واضح کرچکا ہے‘ جس کے تحت 60 فٹ چوڑے روڈ پر قائم اسکولوں کو ریگولرائز کردیاجائے گا‘ واضح رہے کہ شہر میں10 ہزار سے زائد اسکول قائم ہیں‘ جبکہ ان اسکولوں میں ایک بڑی تعداد ایسی ہے ‘ جو 60 فٹ روڈ سے کم چھوٹی چھوٹی گلیوں میں بھی قائم ہیں۔ذرائع کے مطابق پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشن نے اسکول مالکان سے تجارتی بنیاد وںپر استعمال کی کمرشل فیس لینے پر تحفظات کا اظہار کیاہے اور اس سلسلے میں جلدوزیر بلدیات سے ملاقات کرکے تجارتی فیس میں بھی کمی کرنے پر بات کی جائے گی‘ اسکول مالکان کا موقف ہے کہ کمرشل بلڈنگ میں فلیٹ بنتے ہیں‘ جبکہ اسکول کا معاملہ ان فلیٹوں سے مختلف ہے ۔ دوسری جانب یہ موقف بھی سامنے آیا ہے کہ کمرشل بلڈنگ میں فلیٹ ایک مرتبہ فروخت کردیاجاتاہے ‘ جبکہ پرائیویٹ اسکول مالکان ہر ماہ لاکھوں روپے فیس وصول کرکے کمرشل بلڈنگ کے مالکان کی بہ نسبت زیادہ پیسے کماتے ہیں‘ ذرائع کے مطابق متعلقہ حکام کے اسکول مالکان سے پرائیویٹ اسکولوں کو ریگولرائز کرانے کے لیے معاملات طے کرلئے ہیں اور اس حوالے سے جلد کام شروع کردیاجائے گا۔

(304 بار دیکھا گیا)

تبصرے