Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 19  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

واٹر کمیشن کا حکم ٗ 40دکانیں اور ریسٹورانٹ بند

ویب ڈیسک بدھ 14 نومبر 2018
واٹر کمیشن کا حکم ٗ 40دکانیں اور ریسٹورانٹ بند

کراچی ۔۔۔۔ واٹر کمیشن کے احکامات پر سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے رہائشی عمارتوں میں قائم تجارتی مراکز‘ ہوٹلز اور دکانوں کے خلاف کارروائی کا آغاز کردیا۔ ایس بی سی اے نے ڈسٹرکٹ ایسٹ کے علاقے فیروز آبادٗ خالد بن ولید روڈ پر قائم 75 رہائشی مکانات کے مالکان کو ایک ہفتے قبل رہائشی عمارتوں میں قائم دکانیں‘ ہوٹلز اور شورومز 7 روز میں ختم کرنے کا نوٹس دیا تھا تاہم صرف 35 مکانات کے مالکان نے اپنے مکانات رہائشی مکانات کمرشل کرنے کے لئے دستاویزات جمع کرائے جبکہ دیگر عمارتوں کے مالکان نے نوٹس کے باوجود رہائشی عمارتوں میں تجارتی سرگرمیاں جاری رکھی ہوئی تھیں ۔ واٹر کمیشن کی ہدایات پر ایس بی سی اے اور ضلعی انتظامیہ نے مشترکہ طور پر خالد بن ولید‘ علامہ اقبال روڈ اور سرسید روڈ پر رہائشی عمارتوں میں قائم کار شورومز‘ ہوٹل سمیت 40 دکانوں سمیت مشہور ریستوران کو سیل کردیا ہے۔ ایس بی سی اے کی جانب سے خالد بن ولید روڈ سمیت دیگر شاہراہوں پر قائم 75 مکانات کے مالکان کو خلاف ضابطہ رہائشی مکانات کو تجارتی مقاصد کے لئے استعمال کرنے پر نوٹسز جاری کر رکھے ہیں‘ جن میں سے گزشتہ روز 40 مکانات میں قائم تجارتی مراکز ‘ہوٹلز اور دکانوں کوسیل کردیا گیا ہے جبکہ باقی ایسی تمام رہائشی عمارتیں جنہیں خلاف ضابطہ تجارتی مقاصد کے لئے استعمال کیا جارہا ہے آئندہ چند روز میں سیل کردیا جائے گا۔ واضح رہے کہ شہر بھر میں ایس بی سی اے‘ کے ڈی اے حکام کی غفلت اور ملی بھگت کے باعث رہائشی عمارتوں‘ پلاٹوں میں دکانیں‘ ریسٹورنٹس‘ شادی ہال اور کارخانے قائم ہیں جس کے باعث نہ صرف شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے بلکہ پلاٹوں کو ایس بی سی اے کی منظوری حاصل کئے بغیر تجارتی مقاصد کے لئے استعمال کرنے سے ایس بی سی اے کو کمرشلائزیشن فیس کی مد میں بھی کروڑوں روپے کا خسارہ اُٹھانا پڑرہا ہے۔ ذرائع کے مطابق شہر بھر میں رہائشی پلاٹوں پر کی جانے والی تجارتی سرگرمیوںپر واٹر کمیشن کے نوٹس لینے کے بعد ایس بی سی اے شہر بھر میں رہائشی پلاٹوں اور مکانوں میں قائم تجارتی مراکز کے خلاف آپریشن شروع کرنے کی حکمت عملی بنالی ہے‘ آئندہ چند روز میں شہر بھر میں آپریشن شروع کردیا جائے گا۔

(195 بار دیکھا گیا)

تبصرے