Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 04 جولائی 2020
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

کراچی: شام 7 بجے کے بعد سخت لاک ڈاؤن کا حکم

ویب ڈیسک منگل 23 جون 2020
کراچی: شام 7 بجے کے بعد سخت لاک ڈاؤن کا حکم

کراچی(کرائم رپورٹر راؤ عمران اشفاق)کراچی میں لاک ڈاؤن پر شام 7 بجے انتہائی سطح پر عملدرآمد کرنے کا حکم جاری کردیا گیا ہے۔ کراچی پولیس کے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں کورونا وائرس سے پیدا تازہ صورتحال میں حکومتی ایس او پیز پرعمل درآمد 100 فیصد یقینی بنانے کیلئے نئی حکمت عملی ترتیب دی گئی ہے جس پر آج شام سات بجے سے مکمل عمل درآمد شروع کردیا جائے گا۔کراچی میں شام 7 بجے سے شہریوں کی غیر ضروری نقل و حرکت اور کمرشل سرگرمیوں پر مکمل طور پر پابندی عائد کی جائے گی۔پولیس ترجمان کے مطابق ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن کی صدارت میں کے پی او میں ہونے والے اعلیٰ سطح کے اجلاس میں ڈی آئی جیز، ایس ایس پیز اور دیگر متعلقہ پولیس افسران نے شرکت کی۔ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن نے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کراچی پولیس کے افسران اور جوان محدود وسائل میں رہتے ہوئے اپنے فرائض کی انجام دہی میں جاں فشانی سے مصروف ہیں۔انہوں نے کہا کہ موجودہ وبائی صورتحال کے تحت حکومتی احکامات پر عملدرآمد کیلئے جامع حکمت عملی ترتیب دے دی گئی ہے۔اجلاس میں ڈی آئی جی ٹریفک اور دیگر ڈسٹرکٹ ایس ایس پیز نے لاک ڈاؤن کے حکومتی احکامات پر عملدرآمد کرانے کے حوالے سے بریفنگ دی۔ایڈیشنل آئی جی کراچی نے تمام پولیس افسران کو ہدایت کی کہ آج شام سات بجے سے لاک ڈاؤن پر مکمل اور سختی سے عمل درآمد کرنے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ترجمان کے مطابق اجلاس میں کراچی کے اسٹریٹ کرائم کے سدباب کے حوالے سے کئے جانے والے اقدامات پر بھی بریفنگ دی گئی۔ذرائع کے مطابق شہر میں کرونا کیسز میں اضافے اور پولیس کی جانب سے لاک ڈاؤن میں نرمی پر کراچی پولیس کا سخت ایکشن کراچی پولیس چیف غلام نبی میمن نے کہا کہ عوام سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ 7بجے کے بعد گھروں سے غیر ضروری باہر نہ نکلیں شام 7 بجے کے بعد لاک ڈاؤن کے حوالے سے سختی سے عملدرآمد کروایا جائے گا سات بجے کے بعد کمرشل سرگرمیاں اور عوام کی غیر ضروری نقل و حرکت پر مکمل پابندی ہے ڈی آئی جی ٹریفک نے بھی شام 7 بجے کے بعد اہم سڑکیں بند کرنے کا عندیہ دے دیا شہری کو بتانا ہوگا کہ وہ کس کام سے گھر سے باہر نکلا ہے کراچی پولیس کا سخت ایکشن کے بعد پولیس دکانداروں پر ٹوٹ پڑی جمشید کوارٹر تھانہ گرفتار افراد سے بھر گیا دیگر علاقوں میں بھی پولیس کا ایکشن تفصیلات کے مطابق ایڈیشنل آئی جی کراچی آفس میں اعلی سطح کا اجلاس منعقد کیا گیا اجلاس میں اسٹریٹ کرائم کے سدباب سمیت شہر میں لاک ڈاؤن کے حوالے سے کئے جانے والے اقدامات پر بریفنگ دی گئی اجلاس میں ڈی آئی جی ٹریفک اور جملہ ڈسٹرکٹ ایس ایس پیز نے لاک ڈاؤن کی حکومتی احکامات پر عملدرآمد پر بریفنگ دی کورونا وائرس سے پیدا وبائی صورت حال میں حکومتی ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گا اجلاس میں لاک ڈاؤن کے لیئے حکومتی احکامات لاگو کرنے اور عوام کی غیر ضروری نقل و حرکت کو کنڑول کرنے کے لئیے نئی حکمت عملی ترتیب دی گئی حکومت کے جاری کردہ احکامات کے تحت شام سات بجے کے بعد کمرشل سرگرمیاں اور عوام کی غیر ضروری نقل و حرکت پر مکمل پابندی ہے عوام سے اپیل ہے کہ آج شام 7 بجے سے شہر میں حکومت کے جاری کردہ احکامات کے تحت لاک ڈاؤن کے حوالے سے سختی سے عمل درآمد کیا جائیگا لہذا عوام غیر ضروری طور پر گھروں سے نہ نکلیں۔جبکہ ٹریفک پولیس کے ترجمان کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق پیرکوڈی آئی جی پی ٹریفک کراچی نے تمام ٹریفک کے ضلعی ایس پیز سے ویڈیو لنک کے ذریعے میٹنگ منعقد کی اسمارٹ لاک ڈاون کے سلسلے میں احکامات جاری کئے کہ اپنے ضلعے کی نفری کو الرٹ رکھیں،ڈی آئی جی ٹریفک و سینئر افسران مختلف علاقوں کا دورہ کریں گے،ایس پیز اپنے علاقہ میں رہیں گے اور خود انتظامات کو چیک کریں انہوں نے شام سات بجے کے بعد سڑکوں پر پولیس کا ناکہ سخت کرنے اور سڑکیں بند کرنے کے احکامت بھی دئیے اور حکم دیا کہ سڑک پر آنیوالے افراد سے پوچھا جائے کہ وہ گھر سے باہر کیوں نکلے ہیں کراچی پولیس کا سخت ایکشن کے بعد پولیس نے بھی سخت کاروئی شروع کردی جمشید کوارٹر پولیس کا سیل کئے گئے علاقے میں لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی پر کریک ڈاؤن54 دوکان دار اور ہوٹل مالکان گرفتارکاروائی جہانگیر روڈ،جمشید روڈ اور نشتر روڈ پر کی گئیں واضح رہے یہ یونین کونسل کمشنر کراچی کے احکامات پر کرونا وائرس کے بڑھتے کیسز کے باعث سیل کی گئی تھیں شارع نو رجہاں میں پولیس نے بچت بازار لگانے والے افراد کو گرفتار کرلیا تاہم کراچی پولیس کا سخت ایکشن کا شہر کے بعض تھانیداروں کا اثر نہیں ہوا محمودآباد،منظور کالونی، بلدیہ، اورنگی، آرام باغ،گلستان جوہر سمیت دیگر علاقوں میں رات گئے تک کاروبار کھلا ہوا تھا ان علاقوں میں رت جگا جیسا سماں تھا

(128 بار دیکھا گیا)

تبصرے