Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 04 جولائی 2020
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

کراچی، حیدرآباد پولیس لاک ڈاؤن پر عمل کرانے میں ناکام

ویب ڈیسک هفته 20 جون 2020
کراچی، حیدرآباد پولیس لاک ڈاؤن پر عمل کرانے میں ناکام

کراچی (کرائم رپورٹر راؤ عمران))کراچی میں پولیس اور انتظامیہ کورونا وائرس کے پھیلاو کو روکنے کیلیے لگائے گئے لاک ڈاؤن پر عمل درآمد کروانے میں ناکام ہوگئی۔ملیر اور گلشن اقبال کے سیل کیے گئے علاقوں میں چہل پہل جاری رہی، لوگوں نے ماسک کا استعمال بھی نہیں کیا۔لاک ڈاؤن والے علاقوں میں لوگ آزادی سے گھومتے پھرتے نظر آئے جبکہ پولیس اہلکار بھی ڈیوٹی سے غائب تھے۔اگرچہ حکومت کی جانب سے کورونا سے بچاؤ اورمرض کے پھیلاؤکو روکنے کیلیے کراچی کے بعض علاقوں میں لاک ڈاؤن جاری ہے تاہم یہ لاک ڈاؤن محض نام کا ہے کیونکہ بیشتر علاقوں میں اس پر عمل درآمد نہیں کیا جارہا۔ میڈیاکی ٹیمیں متعلقہ علاقوں میں پہنچیں تو کئی دکانیں تو بند دکھائی دیں لیکن احتیاطی تدابیر نظر نہیں آئیں۔ ماڈل کالونی، ملت ٹاؤن، قائد آباد، کورنگی اور قیوم آباد سمیت دیگر علاقوں کا دورہ کیا گیا، جہاں عوام احتیاطی تدابیر سے بہت دور نظر آئے۔ ملیر کے علاقے ملت ٹاؤن میں کورونا وائرس کے 10 کیسز رپورٹ ہوئے، لیکن لوگوں کو پرواہ نہیں، شہریوں کی بڑی تعداد بغیر ماسک کے مٹر گشت کرتی دکھائی دی۔کورنگی اور قیوم آباد میں بھی صورتحال اس سے کچھ مختلف نہ تھی، قانون نافذ کرنے والے بھی کہیں دکھائی نہ دئیے۔ دریں اثنا چند علاقوں میں لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی پر انتظامیہ حرکت میں آگئی مارکیٹوں بازاروں پر چھاپے درجنوں افرادکو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا تفصیلات کے مطابق حساس یوسیز سمارٹ لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی پر مختیارکار بن قاسم فرحان جتوئی نے اسٹیل ٹاؤن پولیس کے ہمراہ گلشن حدید فیز ون فیز ٹو نیشنل ہائی ویکرونا حساس قرار یوسیز میں کاروائی کرکے دکانوں،ہوٹلوں، اسٹیٹ ایجنسیز کے اوپر کاروائی درجنوں افرادکو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا مختیارکار بن قاسم فرحان جتوئی کے مطابق ڈپٹی کمشنر ملیر کے احکامات پر سمارٹ لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جا رہی ہیدوسری طرف حکومت کی جانب سے دعویٰ کیا گیا تھا کہ لاک ڈاؤن میں حساس علاقوں میں ایک گھر سے صرف ایک شخص کو کاموں کے لیے نکلنے کی اجازت ہوگی، وہ بھی ماسک اور شناختی کارڈ کے ہمراہ، لیکن متاثرہ علاقوں شہریوں کی غیر سنجیدگی کا عالم یہ ہے کہ انہوں نے حکومتی ہدایات اور حفاظتی اقدامات دونوں کو ہوا میں اڑا دیا ہے۔کمشنر کراچی نے اعلان کیا تھا کہ لاک ڈاؤن کے علاقوں میں رہنے والے سرکاری اور غیر سرکاری ملازم دفاتر سے چھٹیاں لے لیں۔انہوں نے مزید کہا تھا کہ کسی کو بھی لاک ڈاؤن والے علاقوں سے باہر جانے کی اجازت نہیں ہوگی اور ماسک کا استعمال لازمی ہوگا۔واضح رہے کہ کمشنر کراچی کے دفتر سے جاری نوٹیفکیشن میں کہا گیا تھا کہ لاک ڈاؤن والے علاقے میں گھر سے ایک فرد کو سامان کی خریداری کی اجازت ہوگی۔ان علاقوں میں گھر سے باہر نکلنے والوں کو وجہ بتانا ضروری ہوگی، گھروں پر تقاریب کی اجازت بھی نہیں ہوگی۔ لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرنے والوں پر قانونی کارروائی کی جائے گی۔نوٹیفکیشن کے مطابق لاک ڈاؤن کے علاقوں میں پبلک ٹرانسپورٹ اور ڈبل سواری کی پابندی ہے، ان علاقوں میں ہوم ڈیلیوری کی اجازت بھی نہیں ہے۔نوٹیفکیشن میں مزید کہا گیا کہ لاک ڈاون والے علاقے میں حکومت کی جانب سے موبائل ڈسپنسری اور موبائل یوٹیلٹی اسٹور کا انتظام کیا جائے گا جبکہ ایسے علاقوں میں مستحق افراد میں راشن کی تقسیم کا کام بھی حکومت نے اپنے ذمہ لے لیا۔کراچی کے علاقے قیوم آباد، لانڈھی چھتیس بی، ماڈل کالونی، الفلاح، ملیر ہالٹ، معین آباد، کینٹ بازار، بزرٹا لین، کھارادر، لی مارکیٹ، صدر، برنس روڈ، اردو بازار، آگرہ تاج، بہار کالونی میں لاک ڈاؤن لگایا گیا ہے۔خیابان محافظ، خیابان بدر، بہادر آباد، محمد علی سوسائٹی، عیسیٰ نگری، گلشن اقبال بلاک 7، 13 ڈی، 14، 15 اور 11، گلستان جوہر بلاک 2 اور 13 اور صفورا گوٹھ بھی لاک ڈاون والے علاقوں میں شامل ہیں۔اس کے علاوہ طارق روڈ، مارٹن کوارٹرز، فاطمہ جناح کالونی، جہانگیر روڈ، تین ہٹی، سولجربازار، سعید آباد، کیٹل کالونی، گلشن حدید، جعفر طیار، قائد آباد، گلشن معمار، گلبرگ اور نارتھ کراچی کے بعض علاقوں میں بھی لاک ڈاؤن ہے

حیدر آباد (ر پو رٹ۔ ارشدانصاری)کر و نا وا ئرس کے پیش نظر حیدر آباد میں ضلعی کی 30تحصیلو ں کے 91علا قو ں سے زا ئد متاثرہ علا قے سیل، ضلعی انتظامیہ کی سفا ر شات کے بعد جمعہ کے رو ز نو بجے کے بد متاثرہ علا قو ں کو خا ر دا ر تا ریں لگا کر سیل کر دیا گیا ا سما رٹ لا ک داؤن پر عملد ر آمد کر انے کے لیے پو لیس وینجر ز کو تعیناتی کی گئی کر و نا وا ئر س کے متاثرہ ر یڈ زون کی یونین کو نسل سیل کی گئی ضلعی انتظامیہ ز را ئع بعض مقا مات شہر ی بغیر ما سک کے گھو متے بھی دکھائی دیئے۔ تفصیلات کے مطا بق حیدر آباد ضلع کے دیگر شہر وں کی طرح ملک میں بھی بڑ ھتے ہوئے کر و نا وا ئر س کے پیش نظر حیدر آباد ضلعی انتظامیہ کی جا نب سے ا سما رٹ لا ک ڈا ؤن کیے جانے کے فیصلے کے مطا بق دیئے گئے تر تیب شدہ پلان کے تحت ضلع حیدر آباد کی تین تحصیلو ں کی مختلف یو سیو ں کے 91سے زا ئد علا قو ں کو جمعہ کی صبح نو بجے کے بعد سیل کر دیاگیا تھا ضلعی انتظامیہ کی جا نب سے متا ثرہ علا قو ں کو خا ر دار تا رو ں سے سیل کرکے پولیس وینجر زکے اہلکا روں کو تعینات کر تے ہوئے کیا گیا تھا ضلعی انتظامیہ کی جا نب سے سیل شدہ علا قو ں میں کھانے پینے کی ا شیا کی دو کانیں بھی چھ بجے تا دو بجے دو پہر تک کھو لے جانے کے ا حکامت دیئے گئے تھے جس کے سبب متاثرہ علا قو ں کی بعض دو کانیں کھلی دکھا ئی دیں جبکہ سیل کیے گئے علا قوں میں نقل و حر کت پر سخت پا بندی عائد کی گئی تھی کر و نا وائر س کے متا ثرہ ر یڈ زون کی بتا یا جاتاہے کہ نو یونین کو نسل کو بھی سیل کیا گیا تھا زرا ئع کے مطابق قاسم آباد، لطیف آباد اور سٹی کے متا ثرہ علا قو ں میں شہریو ں کیجا نب سے ایس اوپیز پر عمل نہیں کیا گیا اورنہ ہی ضلعی انتظامیہ کی جا نب سے متا ثرہ علا قوں میں شامل بعض علا قو ں میں ایس او پیز پر عملد ر آمد کر انے میں مقامی انتظامیہ بھی نا کام دکھائی دی گئی اس مو قع پر متاثرہ علا قو ں کے علا قہ مکینو ں کی جا نب سے فضلو ل گھر وں کے با ہر بیٹھے چہر و ں پر ما سک بھی نہیں لگائے گئے جبکہ بعض گلیو ں پر اور شا ہر اہو ں پر شہر ی فضول گھو متے بھی دکھائی دیئے جس پر پو لیس اور مقامی آ بادی کے مابین تلخ کلا می کے وا قعا ت بھی رونما ہوئے کی ا طلا عات سو شل میڈ یا کی زنیت بھی بنی دکھا ئی دی ز را ئع کے مطابق رات کے او قات میں پو لیس ودیگر سیکیو ر ٹی ادا رو ں کے اہلکا رو ں کی جا نب سے شہر یوں کو گھر وں تک محیط رہنے کے ا علا نات کا سلسلہ بھی جا ری رہا ا سمارٹ لا ک ڈاؤن کی صو ر تحال کو ما نیٹر کر نے کے حو الے سے پو لیس وینجر ز کے افسران اہلکا روں کے ہمراہ متا ثرہ علا قوں پر گشت کر تے بھی دکھا ئی دیے، تاہم ان کا گشت بھی لاک ڈاؤن موثر نہ بنا سکا

(102 بار دیکھا گیا)

تبصرے