Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 04 جولائی 2020
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

وفاق سندھ کو اسلام آباد کی کالونی نہ سمجھے ،مراد علی شاہ

ویب ڈیسک جمعرات 11 جون 2020
وفاق سندھ کو اسلام آباد کی کالونی نہ سمجھے ،مراد علی شاہ

کراچی (اسٹاف رپورٹر)وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ وفاق سندھ کو اسلام آباد کی کالونی نہ سمجھے، مرکز کی جانب سے سندھ کیلئے سندھ انفرا اسٹرکچر ڈیولپمنٹ کمپنی بنادی گئی، بتایا جائے کیا ایسا پنجاب، کے پی کے اور بلوچستان میں بھی کیا گیا؟نیشنل اکنامک کونسل کی میٹنگ میں شرکت کے بعد وزیراعلیٰ سندھ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم کو کچھ لوگ صحیح گائیڈ نہیں کر رہے، وفاق میں کابینہ کے 50 لوگوں کی میٹنگ بلائی جاتی ہے اور نیشنل اکنامک کونسل کی میٹنگ ہونے نہیں دی جاتی، این ای سی کو مذاق نہ بنایا جائے۔مراد علی شاہ نے کہا کہ وزیراعظم کا مشکور ہوں انہوں نے کہا این ای سی کی میٹنگ جلد ہوگی، قانون کے مطابق این ای سی کی میٹنگ سال میں 2 مرتبہ ہوتی ہے، جب 45 افراد کی میٹنگ ہوسکتی ہے تو 13 افراد کی میٹنگ کیوں نہیں ہوسکتی۔انہوں نے کہا کہ این ای سی کی میٹنگ فروری، مارچ میں ہونی چاہیے تھی، وزیر اعظم نے اجلاس بلانے پر اتفاق کیا اور کہا کہ دو اجلاس بلائیں گے۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ 2018 اور 2019 کی گروتھ کا ٹارگٹ 6 اعشاریہ 9 بتایا گیا، اصل گروتھ 1 اعشاریہ 2 تھی، اتنا فرق کبھی نہیں ہوا۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ غلط اعداد و شمار کا نقصان صوبوں اور وفاق کو بھی ہوتا ہے، اس سال کی گروتھ کیا ہوگی حقائق بتائے جائیں۔انہوں نے کہا کہ ورلڈبینک کا کہنا ہے کہ اس سال گروتھ منفی 2 کے قریب ہوگا، کورونا کا بحران ہے لیکن اعداد و شمار درست بتائے جائیں۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ وفاق کی طرف سے کہا گیا کہ ورلڈ بینک بھی ہمارے اعداد و شمار استعمال کرتا ہے، ہم نے کہاکہ ہمارے تحفظات نوٹ کرلیں اعداد و شمار پر ہمیں بھروسہ نہیں ہے۔مراد علی شاہ نے کہا کہ نیشنل اکنامک کونسل کی میٹنگ ہوئی ہے، میٹنگ آرٹیکل 156 کے تحت ہوتی ہے، آئین میں یہ کم سے کم دوبار ہونا لازمی ہے۔ وزیر اعلی نے کہا کہ کل شام کو اسلام آباد جانا تھا، جب ایئرپورٹ پہنچے تو فون آیا کہ صوبائی وزراء وڈیولنک کے ذریعے شریک ہوں۔انہوں نے کہا کہ کل بھی وزیر اعظم نے 5 گھنٹے 50 لوگوں کی میٹنگ کی، میں نے کہا کہ میں وزیراعظم سے ملنا چاہتا ہوں، تو مجھے سختی سے منع کیا گیا کہ آپ نہیں آئیں اور کہا گیا کہ اگر اسلام آباد میں آئے بھی تو ویڈیولنک پرشریک ہوں گے۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ این ای سی کے آفیشل ممبرز صرف 13 تھے، آج کی میٹنگ میں پھر آنے دیا گیا، بجٹ سے دو دن پہلے میٹنگ بلاکر مذاق بنایا گیا، اب تو بجٹ تیار ہے۔مراد علی شاہ نے کہا کہ وزیراعظم سے شکایت کی، انہوں نے وعدہ کیا کہ اگلی بار میٹنگ جلد بلائیں گے۔

(126 بار دیکھا گیا)

تبصرے