Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 04 جولائی 2020
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

متحدہ پھر ”ہاٹ کیک “

ویب ڈیسک جمعرات 02 جنوری 2020
متحدہ پھر ”ہاٹ کیک “

کراچی(رپورٹO صابر علی) پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو کی جانب سے ایم کیوایم (پاکستان) کو سندھ حکومت میں شمولیت کی پیشکش کے بعد وفاقی حکومت دفاعی پوزیشن میں آگئی ہے

وفاقی حکومت نے ایک جانب ایم کیوایم (پاکستان) کے تحفظات دور کرنے کیلئے تیزی دکھانا شروع کردی ہے دوسری طرف پیپلزپارٹی کی سندھ حکومت نے لڑائی اور سخت تنقید کے بجائے دوستی کا ہاتھ بڑھاتے ہوئے پیپلز پارٹی کو تعاون کی پیشکش کردی ہے

جہاں پیپلزپارٹی اور سندھ حکومت کیلئے ایم کیوایم (پاکستان) کی اہمیت بڑھ گئی ہے تودوسری طرف وفاقی حکومت کیلئے سندھ حکومت اور ایم کیوایم (پاکستان) دونوں اہمیت اختیار کرگئی ہیں وفاقی حکومت نے ایم کیوایم (پاکستان) کو سندھ حکومت کی طرف جھکاﺅ سے روکنے کیلئے وفاقی حکومت کی جانب سے کراچی میں منصوبے شروع کرنے اور فنڈز جا٬ری کرنے کے اقدامات کے حوالے سے اعلانات شروع کردیئے ہیں

موجودہ نظام کے تحت آئندہ الیکشن قبول نہیں

وفاقی وزیر اسد عمر نے پیپلزپارٹی کی تعاون کی پیشکش اور گورنر سندھ عمران اسماعیل نے گرین لائن منصوبے کی تکمیل کیلئے وزیر اعلیٰ سندھ کی مدد مانگ لی ہے۔ پیپلزپارٹی نے ایم کیوایم (پاکستان ) کے مطالبے پر سندھ میں نیا بلدیاتی ایکٹ لانے کی پیشکش کردی ہے‘ اس طرح ایم کیوایم (پاکستان) وفاقی اور سندھ حکومت دونوں کیلئے اس وقت انتہائی اہم سیاسی جماعت بن گئی ہے تاہم اب یہ ایم کیوایم (پاکستان) پر منحصر ہے کہ وہ اس صورتحال کا فائدہ اٹھانے کیلئے کیا حکمت عملی اختیار کرتے ہیں۔

جس کے نتیجے میں سندھ شہری علاقوں خصوصا کراچی‘ حیدرآباد کے عوام کیلئے وفاقی اور صوبائی دونوں حکومتوں سے ریلیف حاصل کرسکے‘ وفاقی حکومت سے نالاں ایم کیوایم (پاکستان) کے ارکان قومی اسمبلی ا ب کھل کر وفاقی حکومت کے خلاف سامنے آگئے ہیں رکن قومی اسمبلی ڈپٹی اقبال محمد علی اور ایم کیوایم کے وفد کے دیگر ارکان نے وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کے ساتھ ہونے والی میٹنگ میں وفاقی حکومت پر شدید تنقید کرتے ہوئے اسد عمر پر سوالات کی بوچھاڑ کردی

اقبال محمد علی نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کم از کم ایک دن کراچی میں گزاریں اور یہاں گھوم پھر کر صورتحال کا جائزہ لیں تاکہ انہیں کراچی کی اصل صورتحال کا اندازہ ہو۔ ایم کیوایم کے وفد کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت نے ایم کیوایم سے کیا گیا ایک وعدہ بھی پورا نہیں کیا

نئے انتظامی یونٹ کے مطالبہ پر ایم کیو ایم تنہا

وفاقی وزیر فواد چوہدری بھی اب مفاہمتی سیاست کو اہمیت دے رہے ہیں‘ فوادچوہدری کاکہنا ہے کہ حکومت اور اپوزیشن کو فاصلے کم کرنا چاہییں‘ وفاقی وزراءکے حالیہ بیانات سے لگتا ہے کہ نیا سال حکومت اور اپوزیشن خصوصا پیپلزپارٹی سے نرم گوشہ رکھتے ہوئے پی ٹی آئی اور پیپلزپارٹی کے مابین سیاسی مفاہمت کا سال ہوگا۔

پیپلزپارٹی کی اعلیٰ قیادت نے ایم کیوایم کے ساتھ مسلسل مذاکراتی عمل شروع کرنے کی ہدایت کردی پیپلزپارٹی کے مطابق ایم کیوایم کے ساتھ مذاکرات میں آئینی، سیاسی ،انتظامی پیکج پر بات ہوگی اور کراچی واٹر اینڈ سیوریج کو میئر کے ماتحت کرنے پر بھی غور ہوسکتا ہے۔پیپلزپارٹی سندھ میںبلدیاتی کونسلز کے میئرز، چیئرمینز کو مزید مالی وانتظامی اختیارات دئیے جائیں گے۔ پیپلزپارٹی کا وفد اس ضمن میں جلد ایم کیوایم کے مرکز کا دورہ کرے گا۔

(1462 بار دیکھا گیا)

تبصرے