Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 14 دسمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

بدترین آئینی بحران، امور مملکت ”ڈیڈ لاک“ کا شکار

قومی نیوز جمعرات 28 نومبر 2019
بدترین آئینی بحران، امور مملکت ”ڈیڈ لاک“ کا شکار

کراچی(رپورٹOصابر علی) آر می چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے معاملے پر ہونے والی قانونی جنگ کے سبب اس وقت ملک بدترین آئینی بحران کا شکار نظر آتا ہے‘ خصوصاً وفاقی وزیر قانون بیرسٹر فروغ نسیم کے مستعفی ہونے اور وزارت قانون کا قلمدان خالی ہونے کے باعث اس جاری آئینی بحران کومزید تقویت ملی ہے۔

آئینی بحران کے باعث ان دنوں امور مملکت ”ڈیڈ لاک“ کا شکار ہوگئے ہیں اور پی ٹی آئی حکومت نظام حکومت چلانے کے بجائے آئینی بحران میں پھنس کر رہ گئی ہے‘ موجودہ آئینی بحران میں روزانہ تیز وتند بیانات دینے والے خود وزیر اعظم عمران خان اور ان کے تمام ترجماتوں سمیت وفاقی وزراءکو بھی چپ لگ گئی ہے اور ان کی کچھ سمجھ نہیں آرہا ہے کہ و ہ اس آئینی بحران میں حکومت کا دفاع کس طرح کریں ۔ اس حوالے سے حکومتی ذمہ داروں کے ٹوئٹر بھی خاموش دکھائی دیتے ہیں۔

پاکستان کے قانونی معاملے پر بھارت میں سیاست

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ سمیت اپوزیشن رہنما دیگر سیاسی حلقے اور تمام سیاسی تجزیہ کار اس آئینی بحران کا ذمہ دار وزارت قانون کو قرار دے رہے ہیں اور اس حوالے سے وزارت قانون کے ذمہ داروں کی نااہلی پر ان کی ڈگریاں چیک کرنے کی بات کی جارہی ہے

واضح رہے کہ وزیر قانون کے مستعفی ہونے کے بعد وزارت قانون کا قلمدان بھی وزیر اعظم کے پاس آگیاہے‘ تاہم صدر اور وزیر اعظم قانونی نکات کو سمجھنے اور قانون کے ماہر نہیں ہوتے تمام تر قانونی امور چلانے کا دارو مدار وزیر قانون اور وزارت قانون کے ذمہ داروں پر ہوتا ہے لیکن موجودہ صورتحال کا ذمہ دار ہی وزارت قانون کے نااہل ذمہ داروں کو قرار دیا جارہا ہے

(876 بار دیکھا گیا)

تبصرے