Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 18 نومبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

اجازت مل گئی ،نواز شریف کل لند ن روانہ ہونگے

ویب ڈیسک هفته 09 نومبر 2019
اجازت مل گئی ،نواز شریف کل لند ن روانہ ہونگے

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وزیراعظم عمران خان کی حکومت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی ہے۔وزیراعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق نے کہا ہے کہ نواز شریف کے بیرون ملک علاج کیلئے جانے پر حکومت کو کوئی اعتراض نہیں ہے۔

 

نواز شریف علاج کیلئے باہرگئے تو سنگین غلطی ہوگی

انہوں نے کہاکہ نواز شریف سخت بیمار ہیں،ان کی رپورٹس دیکھ لی ہیں،اب یہ عدالت کی صوابدید ہے کہ وہ سابق وزیراعظم کو کتنے عرصے کیلئے اور کتنی بار بیرون ملک جانے کی اجازت دے۔ذرائع کے مطابق میاں نواز شریف اپنے بھائی اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کے ہمراہ کل قومی ائرلائن کی پرواز سے لندن روانہ ہوں گے۔ذرائع کے مطابق پیر کو لندن کے ہارلے اسٹریٹ کلینک سے سابق وزیراعظم کے چیک اپ کا اپائنٹمنٹ لیا گیا ہے۔خاندانی ذرائع کے مطابق نواز شریف کے علاج کیلیے نیویارک کے ڈاکٹروں سے بھی بات چیت ہورہی ہے۔اس سے قبل شہباز شریف نے وزارت داخلہ میں سابق وزیراعظم نواز شریف کا نام ای سی ایل سے ہٹانے کے لیے درخواست دی تھی۔درخواست میں کہا گیا تھا کہ نواز شریف کی بیماری کی تشخیص نہیں ہو پارہی ہے، انہیں بیرون ملک لے جانا ہوگا۔وزارت داخلہ نے درخواست ملنے کے بعد قومی احتساب بیورو ( نیب) کو اس معاملے میں مشاورت کے لیے خط لکھ دیا ہے۔اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان اور وزیر داخلہ اعجاز شاہ نے ملاقات کی اور نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے سے متعلق بات چیت کی۔ادھروزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ نواز شریف کی صحت یا علاج پر کوئی سیاست نہیں کریں گے۔ وزیراعظم نے ترجمانوں کو نواز شریف کی بیرون ملک روانگی سے متعلق نرم موقف رکھنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ پہلے دن سے مؤقف ہے کہ سیاست کو انسانی صحت سے الگ رکھا جائے، اس لئے نواز شریف کی صحت یا علاج پر کوئی سیاست نہیں کریں گے۔ مریم نواز کا کہنا ہے کہ نواز شریف کی طبیعت بہت زیادہ خراب ہے، انہیں علاج کے لیے فوراً باہر بھیجنا چاہیے۔عدالت کے باہر صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو میں مریم نواز کا کہنا تھا کہ مجھے نواز شریف کی صحت کی بہت فکر رہتی ہے، نواز شریف کی طبیعت تشویشناک ہے، انہیں علاج کے لیے فوراً باہر بھیجنا چاہیے اور جہاں علاج ممکن ہو وہاں جانا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ میں ابھی فوری سفر نہیں کرسکتی کیوں کہ میرا پاسپورٹ عدالت کے پاس ہے، اگر نواز شریف علاج کیلئے بیرون ملک جاتے ہیں تو ان کے ساتھ جانا مجبوری ہے تاہم بڑا مشکل ہوگا کہ نواز شریف علاج کے لیے باہر چلے جائیں اور میں نہ جا سکوں۔مریم نواز نے کہا کہ سیاست پوری زندگی چلتی رہے گی لیکن والدین دوبارہ نہیں ملتے، ایک سال پہلے اپنی ماں کھوچکی ہوں اور اب میری تمام تر توجہ نواز شریف کی طبیعت پر ہے، میں 24 گھنٹے نواز شریف کے پاس رہتی ہوں، انہیں ملازموں اور نرسوں پر نہیں چھوڑ سکتی، نواز شریف کے معاملات خود دیکھتی ہوں، آج بھی بڑی مشکل سے عدالت آئی ہوں، مجھے اس وقت صرف نواز شریف کی زندگی اور صحت کی فکر ہے۔

(122 بار دیکھا گیا)

تبصرے