Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 13 نومبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

چُپ تعزیہ کا جلوس برآمد،ایمرجنسی نافذ

ویب ڈیسک بدھ 06 نومبر 2019
چُپ تعزیہ کا جلوس برآمد،ایمرجنسی نافذ

کراچی (کرائم رپورٹر) چُپ تعزیئے کے جلوس کے موقع پر شہر میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی‘ گلبہار سے ٹاور تک شہر کی سڑکوں کو سیل کردیا‘ ڈبل سواری پر پابندی‘ جلوس کی گزرگاہ پر موبائل فون سروس متاثر ہوگی‘ جبکہ بلند عمارتوں پر پولیس کے شوٹر متعین کردیئے گئے‘ اہم شاہراہوں پر بدترین ٹریفک جام ہوگیا۔

نذو نیاز ، پکوان اور ڈیکوریشن کا کاروباربڑھ گیا

 

اطلاعات کے مطابق آج صبح انجمن امامیہ کے تحت نشتر پارک سے چُپ تعزئیے کا جلوس انجمن کے سیکریٹری جنرل نواب امتیاز حسین لکھنوی کی قیادت میں برآمد ہوا۔ جلوس سے قبل نشتر پارک میں سالانہ مجلس برپا ہوئی جس سے علامہ علی قرار نقوی نے خطاب کیا۔ جلوس کی گزرگاہ ایم اے جناح روڈ‘ پریڈی اسٹریٹ‘ صدر‘ ریگل چوک‘ جامع کلاتھ‘ کھارادر کے راستوں کو کنٹینرز لگاکر بند کردیا گیا تھا‘ جلوس کی سیکورٹی پر 17 ایس ایس پیز سمیت 4705 پولیس اہلکار اور 3 ہزار سے زائد رینجرز اہلکار متعین کئے گئے۔ جلوس سے قبل گزرگاہ کا بم ڈسپوزل اسکواڈ نے 2 بار جبکہ سراغ رساں کتوں نے بھی گزرگاہ کو چیک کیا‘

 

بلند عمارتوں پر نشانے باز متعین کئے گئے جبکہ شہر کی فضائی نگرانی بھی کی جارہی تھی۔ محکمہ داخلہ کی جانب سے کراچی سمیت سندھ بھر میں ڈبل سواری پر پابندی عائد کی گئی ہے‘ پابندی کا اطلاق رات 12 بجے تک ہوگا‘ پابندی سے 12 سال سے کم عمر بچے ‘ صحافی‘ بزرگ شہری و خواتین مستثنیٰ ہوں گے‘شہر کی اہم مارکیٹیں صبح سویرے بند تھیں۔

 

پولیس کے مطابق جلوس 11 بجے تک حسینیہ ایرانیاں امام بارگاہ کھارادر پہنچ کر ختم ہوجائے گا جس کے بعد راستے کھول دیئے جائیں گے اور شہر کے بازار بھی کھل جائیں گے‘ تاہم آج دوپہر کو چُپ تعزئیے کا جلوس قصر معیب رضویہ سے برآمد ہوگا‘یہ جلوس ناظم آباد‘ گلبہار‘ لسبیلہ‘ تین ہٹی‘ جیل روڈ چورنگی سے ہوتا ہوا مارٹن کوارٹر‘ شاہ نجف امام بارگاہ پر اختتام پذیر ہوگا۔ جلوس کے سلسلے میں گلبہار لسبیلہ سمیت گزرگاہ پر واقع عام راستوں کو کنٹینرز لگاکر بند کرنا پڑا‘ شہر کی اہم سڑکوں کی بندش کی وجہ سے صبح سویرے سے ہی شارع فیصل‘ یونیورسٹی روڈ‘ لیاقت آباد‘ صدر کے علاقوں میں بدترین ٹریفک جام تھا۔

(403 بار دیکھا گیا)

تبصرے