Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 13 نومبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

قرضوں کا حجم 45 ہزار ارب روپے تک پہنچنے کا خدشہ

ویب ڈیسک هفته 26 اکتوبر 2019
قرضوں کا حجم 45 ہزار ارب روپے تک پہنچنے کا خدشہ

اسلام آباد (قومی اخبار نیوز) وزارت خزانہ نے آئندہ پانچ سالوں میں قرضوں کا حجم 45 ہزار ارب روپے تک پہنچنے کا خدشہ ظاہر کیا ہے، حکومتی قرضوں میں ساڑھے14 ہزار ارب روپے اضافے ہوسکتا ہے۔

 

مہنگائی پر حکومت کیخلاف غم وغصے میں اضافہ

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور سابق وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کی زیرصدارت اسلام آباد میں ہوا۔اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے وزارت خزانہ کے ڈائریکٹر جنرل ڈیٹ پالیسی نے بتایا کہ قرضوں کی بھاری ادائیگیوں کے باعث ہر تین چار ہفتوں میں حکومت کو بنکوں سے قرضہ اٹھانا پڑتا ہے۔بریفنگ میں بتایا گیا کہ پانچ سالوں کے دوران غیرملکی قرضوں میں اضافے اور مقامی قرضوں میں کمی کی پالیسی اختیار کی جائے گی، پانچ سالوں کے دوران مقامی قرضے ساڑھے بیس ہزار ارب روپے سے بڑھا کر ستائیس ارب روپے تک رہنے کی پالیسی ہے،

وزارت خزانہ کے ڈائریکٹر جنرل ڈیٹ پالیسی کا کہنا تھا کہ اس دوران قرضوں کا جی ڈی پی میں تناسب اسی فیصد سے کم کر کے 66 فیصد تک لانے کی پالیسی پر عمل کیا جائے گا، پانچ سالوں میں بیرونی قرضے چالیس فیصد اور اندرونی قرضے ساٹھ فیصد پر رکھنے کی کوشش کی جائے گی۔چیئرمین ایف بی آر نے کمیٹی کو بتایا کہ رواں مالی سال کے دوران ٹیکسں وصولیوں میں 16 فیصد اضافہ ہوا ہے، کمیٹی اراکین نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کی کارکردگی پرعدم اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ بڑے پیمانے پر نئے ٹیکس عائد کرنے، روپے کی قدر میں کمی، مہنگائی اور جی ڈی پی گروتھ کو شامل کرنے محض سولہ فیصد اضافہ ناکافی ہے۔

(1192 بار دیکھا گیا)

تبصرے