Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 22 اکتوبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

بھٹو فیملی سے منسوب چار کالجز کا کوئی طالبعلم پاس نہیں ہوسکا

قومی نیوز اتوار 15  ستمبر 2019
بھٹو فیملی سے منسوب چار کالجز کا کوئی طالبعلم پاس نہیں ہوسکا

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) سندھ حکومت کی جانب سے کراچی شہر کے وہ 4 کالجز جن کو بھٹو فیملی کے نام دئیے گئے ان میں انٹرمیڈیٹ پری انجینئرنگ امتحان میں ایک طالبعلم بھی پاس نہیں ہوسکا۔

ان کالجز کو ذوالفقار علی بھٹو، نصرت بھٹو، بینظیر بھٹو اور آصفہ بھٹو زرداری کے نام دئیے گئے تھے۔بورڈ آف انٹرمیڈیٹ ایجوکیشن نے بارہویں جماعت کے پری انجینئرنگ امتحان کیلئے رواں سال 267 سرکاری اور نجی کالجز کے 36 ہزار 173 طلبہ کو رجسٹر کیا تھا۔

امتحانی نتیجے میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ جن 4 کالجز کو بھٹو خاندان کے افراد کے نام دئیے گئے ہیں ان میں ایک بھی طالبعلم پاس نہیں ہوسکا اور ایک کالج تو ایسا بھی تھا جس کے کسی طالبعلم کی امتحان کیلئے رجسٹریشن ہی نہیں کرائی گئی تھی۔

یہ بھی پڑھیں : کراچی کودوسرا دارالحکومت بنانیکی تجویز

ان کالجز میں نصرت بھٹو گورنمنٹ ڈگری بوائز کالج لیاری، شہید بینظیر بھٹو گورنمنٹ گرلز کالج لیاری، ذوالفقار علی بھٹو ڈگرلزی کالج گلشنِ بہار اورنگی ٹائون اور آصفہ بھٹو زرداری گورنمنٹ گرلز ڈگری کالج شیرپائو کالونی لانڈھی شامل ہیں۔

ذوالفقار علی بھٹو ڈگری کالج کے صرف 10 طلبہ نے پری انجینئرنگ پارٹ 2 کیلئے رجسٹریشن کرائی لیکن ان میں سے کوئی بھی پاس نہ ہوسکا۔ اسی طرح نصرت بھٹو گورنمنٹ ڈگری بوائز کالج کے تمام 20 ، شہید بینظیر بھٹو گورنمنٹ گرلز کالج کی تینوں طالبات امتحان میں فیل ہوگئیں۔

2 برس قبل آصفہ بھٹو زرداری گورنمنٹ ڈگری کالج نے کورنگی کے قریب پسماندہ علاقے شیر پائو کالونی میں تعلیم کا سلسلہ شروع کیا تھا لیکن بدقسمتی سے اس کالج سے ایک بھی طالبعلم کی امتحان کیلئے رجسٹریشن نہ کرائی جاسکی۔

(213 بار دیکھا گیا)

تبصرے