Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 22 اکتوبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

برطانوی افواج کا تعمیر کردہ بروکس چرچ

تحریر: مختار احمد جمعه 13  ستمبر 2019
برطانوی افواج کا تعمیر کردہ بروکس چرچ

عبادت گا ہیں تو عبا دت گا ہیں ہو تی ہیں خواہ کا تعلق کسی بھی مذ ہب کسی بھی فرقے سے ہو وہ بصد احترام ہو تی ہےں جہاںخدا کی عبادت کی جا تی ہے گو کہ مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی عبادتوں کے طریقے تو مختلف ہو تے ہیں لیکن کا اس کا محور و مر کز خدا کی ذات ہی ہو تا ہے شہر کراچی جب 1729 میں وجود میں آیا تو ہندﺅں نے اپنے عقیدے کے مطا بق مندر ،مسلمانوں نے مساجد ،سکھوں نے گرد وارے ،پارسیوں نے آتش کدے جبکہ مسیحی برادری نے چرچز بنا ئے جو کہ کراچی سے آغاز سے لے کر اب تک بدستور موجود ہیں جہاں لوگ خدا سجدہ ریز ہیںاب جہاں تک ماضی کے کیمپ با زار اور آج کے صدر میںسینٹرل بروکس میموریل چرچ کا تعلق ہے تو اس کی قدیم عمارت آج بھی پورے آن بان شان کے ساتھ کھڑی ہے اور عبادات کا سلسلہ 18ویں صدی سے لے کر اب تک جا ری و ساری ہے ۔

یہ بھی پڑھیں : کراچی، روشنیوں سے غلاظت کے ڈھیرتک۔۔!!

شہر کراچی جسے ماضی سے لے کر اب تک بے شمار نا موں سے پکا را گیا جب 1839میں بر طا نوی افواج نے قبضہ کیا تو چرچز کی بنیاد رکھی اس سلسلے میں اگر ابتدائی چرچوں کا تعلق ہے تو وہ یقینی طور پر منوڑہ میں بنا ئے گئے تھے اور اس حوالے سے لائٹ ہاﺅس کے ساتھ سینٹ پال چرچ بنا یا گیا تھا جو کہ کو ئی بڑا چرچ نہیں تھا مگر مسیحی برادری نے سب سے پہلے اپنی عبادات کا آغاز اسی چرچ سے کیا تھا جس کے بعد ضرورت کے اعتبار سے یہاں مزید 3چرچز بنا ئے گئے اورپھر برطانوی افواج نے ہی 1855میں ہولی ٹرنٹی ،1845میں سینٹ پیٹرک چرچ ،1856میں سی ایم ایس چرچ ،1868میں اسکوٹش چرچ ،1868میں سینٹ اینڈ ریو چرچ جبکہ 1873میں بروکس چرچ تعمیر کیا گیا جسے پہلے میتھوڈیسٹ چرچ کا نام دیا گیا تھا جبکہ اس کے بعد اب اسے سینٹرل بروکس میموریل چرچ کے نام سے جا نا جا تا ہے سے عبادات کا آغاز کیا جس کا سلسلہ اس وقت سے لے کر آج تک جا ری و ساری ہے ۔

موبا ئل مارکیٹ کے عین سامنے یہ چرچ 1873میں برٹش سولجر کے 56ویں ریجمنٹ کے فوجیوں نے تعمیر کیا تھااور کیو نکہ اسے جس جگہ تعمیر کیا گیا اس کا پتہ74گارڈن ہے لہذا اسے 74گارڈن اور سینٹرل میموریل بروکس چرچ دونوں ہی نا موں سے جا نا جا تا ہے کیو نکہ اس وقت صدر اور اس کے اطراف کے علاقوں میں جس میں ماضی کے ڈپو لائن ،لکی اسٹار اور صدر کے علاقے میں زیادہ تر فو جی خاندان آباد تھے جبکہ مشینری اسکول میں ان انگریز فو جیوں کے بچے تعلیم حاصل کر رہے تھے لہذا انہیں عبادات کی سہو لیات پہنچا نے کے لئے اس چرچ میں عبادات کا سلسلہ شروع ہوا اور کیو نکہ یہ پروٹسٹنٹ فرقے کا چرچ تھا لہذا پروٹسٹنٹ فرقے کے لوگ اسی چرچ میں عبادت سر انجام دیتے تھے اس چرچ کے پہلے پاسٹر سارجنٹ تھامس تھے جو کہ نا صرف عبادات کر وانے کا فریضہ انجام دیتے تھے بلکہ چرچ کے اندر بنا ئے گئے کچھ بنگلوں میں آج بھی سینٹ اینڈ ریو چرچ کے پاسٹر رہتے ہیں رہائش پذیر تھے اور چرچ کی دیکھ بھال کا فریضہ انجام دیتے تھے اس کے بعد اس چرچ میں پاسٹرز کے منصب پر ایسی شخصیات نے خد مات انجام دیں جو کہ مذہب پر گرفت رکھنے میں اپنا ثا نی نہیں رکھتے تھے اور انہیں دنیا بھر میں جا نا اور ما نا جا تا تھا ۔

یہ بھی پڑھیں : 1500 سال قدیم مندر،ماہرین آثار قدیمہ کی دوڑیں

سینٹرل بروکس میموریل چرچ کی قدیم عمارت جو کہ آج ہیرٹیج میں شامل ہے 18ویں صدی میں قائم ہو نے کے با وجود انتہا ئی شان و شوکت اور مضبوطی کے ساتھ موجود ہے اس عمارت میں نا صرف پاسٹرز کے لئے رہائش گاہ موجود ہے بلکہ یہاں ایک قدیم انسٹیٹیوٹ حال بھی موجود ہے جہاں چھوٹے بچوں کو مذہبی تعلیم دی جا تی ہے جبکہ چرچ کی عمارت انتہا ئی قدیم ہو جا نے کے با وجود آج بھی بغیر کسی تبدیلی کے اسی دیدہ زیب حا لت میں موجود ہے اور 18 ویں صدی کے کاریگروں کی محنت ،لگن و جانفشانی کی داستان بیان کر تی ہیں ۔گوکہ18ویںاور19 ویںصدی میں شہر کراچی میں بنا ئے جا نے والے چرچز جو کہ آج بھی عمدہ تعمیرات کی اعلی مثال ہیں ان چرچز میں بروکس چرچ بھی شامل ہے جس کی نا صرف قدیم عمارت دلکش منظر پیش کر تی ہے بلکہ اسے اس وقت تعمیر ہو نے والے تمام چرچز پر ایک خصوصی فوقیت حاصل ہے جس کے تحت یہاں صرف کھپریل سے بنے چھتوں کے علاوہ کو ئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے اور نہ ہی اس کے کشادہ حال جہاں ڈیڑھ سے 200 لوگوں کے بیٹھنے کی گنجائش ہے

فرنیچر ،ساﺅنڈ سسٹم یہاں تک کے پاسٹرز کی عبادت کر وانے کے لئے برماٹیک کی لکڑی سے جو پرپٹ اور ڈائس بنا یا گیا ہے اس میں بھی آج تک محض رنگ و روغن کے کبھی مر مت کی ضرورت نہیں پڑی اور آج بھی مکمل طور پر نئی حا لت میں دعوت نظارہ دے رہی ہیں جسے دیکھنے کے بعد عبادت کر نے والے بھی چند لمحوں تک مہبوط رہ جا نے کے بعد اس وقت کے کاریگروں کو داد دئے بغیر نہیں رہ پا تے اس چرچ کے پاسٹر اس وقت شاہد انور ہیں جنہوں نے گفتگو کرتے ہو ئے بتا یا کہ بروکس چرچ قدامت کے اعتبار سے پروٹسٹنٹ فرقے کا سب سے بڑا چرچ ہے اور اس میں کسی قسم کی کوئی تبدیلی نہیں کی گئی یہی وجہ ہے کہ انگریز فوجیوں نے اس کی تعمیر کے بعد اس میں جو فرنیچر ،ساﺅنڈ سسٹم اور موسیقی کے آلات رکھے تھے وہ آج بھی اچھی حالت میں موجود ہے جس سے خدا کی حمد و ثنا کی جا تی ہے ۔

(176 بار دیکھا گیا)

تبصرے