Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 18  ستمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

بلند آ واز میں ”اذان“ قانونی جنگ مرغے نے جیت لی

قومی نیوز هفته 07  ستمبر 2019
بلند آ واز میں ”اذان“ قانونی جنگ مرغے نے جیت لی

پیرس (ویب ڈیسک) فرانس کے دارالحکومت پیرس میں رائے عامہ پر حاوی ہونے والا کیس مرغے نے جیت لیا۔ مرغے پر یہ کیس تھا کہ وہ بلند آ واز میں ”اذان“ دیتا ہے، عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا ہے کہ مرغے کو بانگ دینے سے روکا نہیں جا سکتا۔

برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق فرانسیسی عدالت میں مرغے کے حق میں فیصلہ سنایا گیا، فیصلے میں کہا گیا ہے کہ موریس نامی اس مرغے کو صبح سویرے بانگ دینے سے روکا نہیں جا سکتا۔ یہ کیس ہمسایوں کی جانب سے کیا گیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ صبح سویرے مرغے کی بانگ سے ہماری نیند خراب ہوتی ہے۔

یاد رہے کہ اس کیس کی وجہ سے فرانسیسی عوامی رائے منقسم ہو گئی تھی، کچھ لوگ مرغے کے حق میں تھے اور کچھ لوگ اس کیخلاف آ وازیں بلند کر رہے تھے۔ اس کیس کو دیہی، شہری زندگی کے درمیان جنگ کے طور پر رپورٹ کیا جا رہا تھا۔

یہ بھی پڑھیں :

بھارت کی خلاء میں بھی رسوائی

غیر ملکی ریٹ لاگو،فائیو اسٹار ہوٹلوں کا کاروبار متاثر

خبر رساں ادارے سے بات کریتے ہوئے مرغے کی مالکن کورین فیسو کا کہنا تھا کہ عدالت نے ہمسایوں کی جانب سے مرغے کو خاموش کرانے کے مطالبے کو مسترد کر دیا ہے۔ آ ج مرغے نے پورے فرانس کے لیے جنگ جیت لی ہے۔ اس کی عمر چار برس ہے اور یہ میرے ساتھ بحر اوقیانوس کے چھوٹے ساحلی جزیرے ’اولیراں‘ میں رہتا ہے۔

مرغے کیخلاف عدالت میں شکایت معمر جوڑے نے کی تھی جنہوں نے اولیراں جزیرے پر چھٹیاں منانے کے لیے گھر خرید رکھا تھا۔ مقدمے کی سماعت چار جولائی کو شروع ہوئی تھی۔وکیل دفاع ڑولیاں پاپینو نے فاضل عدالت کو بتایا کہ 40 پڑوسیوں میں سے صرف دو افراد کو ہی مرغے کی بانگ سے شکایت ہے۔

حیران کن طور پر اس سے قبل فرانس میں گائے کے بولنے اور چرچ کی گھنٹی کی آ واز کے خلاف مقدمات دائر ہو چکے ہیں لیکن ان میں سے کسی کو بھی اتنی پذئرائی نہیں ملی جتنی کہ مرغے کے کیس کو ملی ہے۔

(88 بار دیکھا گیا)

تبصرے