Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 18 نومبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

مقبوضہ کشمیرمیں نسل کشی کی تیاری،22 مساجد شہید

قومی نیوز جمعه 30  اگست 2019
مقبوضہ کشمیرمیں نسل کشی کی تیاری،22 مساجد شہید

لاہور( ویب ڈیسک) بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں ایک اور گھنائونی سازش پر کام شروع کرتے ہوئے وادی کے چار علاقوں سے کشمیری مسلمانوں کی متعدد بستیاں زبر دستی خالی کرا کے آ ر ایس ایس کے جنونی ہندوئوں کو وہاں بسا دیا، مزاحمت پر درجنوں کشمیری مرد اور خواتین کو شہید کر دیا گیا جبکہ نوجوان لڑکیوں اور لڑکوں کوگرفتار کرکے نا معلوم مقام پر منتقل کر دیا گیا۔

ان بستیوں میں 22 مساجد کو بھی شہیدکر دیا گیا۔ بستیوں سے زبر دستی نکالے گئے بوڑھوں اور بچوں کو کنٹرول لائن کے پاس بنے گھروں میں محصور کر کے فوجی پہرے لگا دیئے گئے تاکہ جنگ کی صورت میں پاکستان بمباری کرے تو نقصان مسلمانوں کو ہو۔

یہ بھی پڑھیں : بھارتی فوجی اداروں کی گھبراہٹ بڑھنے لگی

با وثوق ذرائع کے مطابق نریندر مودی نے اپنی گھنائونی سوچ کو عملی جامہ پہناتے ہوئے ڈوڈہ، اننت ناگ، اکھنور اور سامبا میں کئی بستیوں کو کشمیری مسلمانوں سے خالی کرا کے وہاں جنونی ہندوئوں کوبسانا شروع کر دیا ، بستیوں میں کشمیری مسلمانوں کی دکانوں اور دیگر کاروباری ذرائع بھی ہندو جنونیوں کے حوالے کر دیئے گئے۔

چار علاقوں میں پندرہ ہزار سے زائد آر ایس ایس کے جنونی کارکنوں کو بسا کر فوجی اسلحہ بھی دیا گیا ہے۔ان چار علاقوں کی حفاظت کیلئے بائیس فوجی چوکیاں بھی بنا دی گئی ہیں۔ اس خوفناک بھارتی سازش کے پیچھے اسرائیل اور افغانستان کی خفیہ ایجنسیاں بھی ہیں،ان آبادیوں میں ان خفیہ ایجنسیوں کے کئی افراد کو بھی رہائش دی گئی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے دومزید شہروں ادھم پور اور کاٹھوا میں بھی ایسا ہی آپریشن کرنے کا منصوبہ شروع ہو چکاہے اور بھارتی فوجیوں اور آر ایس ایس کے غنڈوں کی ایک بڑی تعداد آئندہ چند روز میں ان علاقوں میں کشمیری مسلمانوں سے گھر خالی کرائے گی جس کے بعد وہاں بھی جنونی ہندوو¿ں کو بسایا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں : مقبوضہ کشمیر میں میڈیا پر پابندیاں، مودی سرکار سے جواب طلب

ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ جہاں ہندوئوں کو مسلمانوں کے علاقوں میں بسایا جا رہا ہے وہیں پر دو علاقوں اکھنور اور سامبا میں باقائدہ را، این ڈی ایس اور موساد کے چار تربیتی کیمپ بھی بن چکے ہیں۔ ان تربیتی کیمپوں میں جہاں مسلمانوں کے قتل عام کی پلاننگ اور تربیت دی جا رہی ہے تووہیں ایسے ٹارچر سیل بھی بنائے گئے ہیں جن میں متحرک کشمیری نوجوان کو قید کیا جارہا ہے۔

(1134 بار دیکھا گیا)

تبصرے