Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 18  ستمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

سڑکوں کےساتھ کراچی کی سیاست میں بھی غلاظت کے ڈھیر

قومی نیوز جمعرات 22  اگست 2019
سڑکوں کےساتھ کراچی کی سیاست میں بھی غلاظت کے ڈھیر

کراچی(رپورٹO صابر علی) وفاقی حکومت، سندھ حکومت اور کراچی کی بلدیاتی قیادت تمام تر دعوﺅں کے باوجود کراچی کی گندگی وغلاظت کو تو صاف نہ کرسکے البتہ ایک دوسرے پر سنگین الزامات کی بارش اور غیر مہذب زبان استعمال کرتے ہوئے کراچی کی سیاست کو بھی گندہ کردیا

کراچی میں کئی برسوں سے گندگی وغلاظت کے ڈھیر ختم کرنے کیلئے جہاں ایک جانب سندھ حکومت اور کراچی کی بلدیاتی قیادت کے مابین محاذ آرائی جاری تھی کہ وفاقی حکومت کی جانب سے وفاقی وزیر علی زیدی بھی اس محاذ آرائی کا حصہ بن گئے کراچی میں صفائی کا اعلان کرتے ہوئے میئر کراچی کے ساتھ مل کر کراچی سے گندگی صاف کرنے کا بیڑہ اٹھایا

کئی روز سے جاری اس صفائی مہم کے باوجود کراچی سے کچرے کے ڈھیر ختم ہونے اور کراچی صاف ہونے کے بجائے گندگی کے ڈھیروں میں روز افزوں اضافہ ہورہا ہے اور اب یہ صورتحال ہے کہ کراچی سے گند صاف کرنے والے یہ تینوں دعویدار کراچی کی گندگی صاف کرنے کے بجائے ایک دوسرے پر کیچڑ اچھال رہے ہیں

یہ بھی پڑھیں : پہلے صوفی بزرگ حضرت عبداللہ شاہ غازی

پہلے مرحلے میں وفاقی حکومت او ر کراچی کی بلدیاتی قیادت نے سندھ حکومت کو ٹارگٹ بنایا‘ تاہم اب اس لڑائی میں کراچی کے سابق ناظم اعلیٰ مصطفی کمال بھی کود پڑے ہیں اور اب یہ لڑائی کراچی کے ایک سابق ناظم اعلیٰ مصطفی کمال اور موجودہ میئر کراچی وسیم اختر کے درمیان جنگ وجدل کی شکل اختیار کرگئی

کراچی کی سابق اور موجودہ بلدیاتی قیادت نے ایک دوسرے کو جس طرح آڑے ہاتھوں لیا ہوا ہے اور ایک دوسرے کے خلاف شرمناک الزامات لگائے جانے کا سلسلہ جاری ہے‘ اس کے نتیجے میں کراچی سے گندگی اور کچرا صاف کرنے کی مہم اب کراچی کی سیاست کو گندہ کرنے کی مہم اختیار کر گئی ہے

یہ بھی پڑھیں : شہباز شریف فیملی مالی بحران کا شکار

پیپلزپارٹی نے میئر کراچی اور ایم کیوایم (پاکستان) کو پی ٹی آئی کی بی ٹیم قرار دے دیا ہے‘ جبکہ ایم کیوایم (پاکستان) میئر کراچی وسیم اختر کی حمایت میں میدان میں نکل آئی ہے اور میئر کراچی کا دفاع کرتے ہوئے مصطفی کمال کو پیپلزپارٹی کا حمایتی قرار دے دیا ہے۔

کراچی سے گندگی صاف کرنے کے نام پر صفائی مہم چلانے کے دعویدار تینوں فریقوں کی اس لڑائی کے نتیجے میں کراچی صفائی مہم بری طرح ناکام نظر آتی ہے‘ مذکورہ تینوں فریقوں کے تمام تر دعوﺅں کے باوجود کراچی خصوصاً ضلع وسطی گندگی اور کچرے کا مزید ڈھیر بنتا جارہا ہے اور کسی جانب سے صفائی کے عملی اقدامات کہیں نظر نہیں آتے اور صرف فوٹو سیشن پر زور دیا جارہا ہے۔

(835 بار دیکھا گیا)

تبصرے