Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
بدھ 21  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

عرفان صدیقی کی رہائی ،شاگردوں کا اہم کردار

ویب ڈیسک جمعرات 01  اگست 2019
عرفان صدیقی کی رہائی ،شاگردوں کا اہم کردار

اسلام آباد… ممتاز صحافی و دانشور اور ماہر تعلیم عرفان صدیقی کی رہائی میں میڈیا سے زیادہ ان کے شاگردوں نے رول ادا کیا۔ اہم ذرائع کا کہنا ہے کہ عرفان صدیقی کی گرفتاری کے ڈنڈے بعض ذرائع اس گفتگو سے جوڑ رہے ہیں جو مریم نواز نے کوئٹہ جلسے میں خطاب سے واپسی پر عرفان صدیقی سے فون پر کی تھی جس میں مریم نے دریافت کیا کہ صدیقی صاحب نے ان کی تقریر سنی ہے ؟ عرفان صدیقی نے جواب دیا کہ انٹرنیٹ پر سنی ہے۔

مریم نے ان سے رائے لی، تو انہوں نے تفصیل سے تقریر کا تجزیہ کیا جس پر مریم نے بعض اختلافی نکات سے اتفاق کیا اور بعض پر اپنی جانب سے کچھ وضاحتیں دینے کی کوشش کی۔ اس تقریر کے علاوہ نواز شریف کی صحت پر بھی بات ہوئی۔

عرفان صدیقی کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ کبھی بھی مریم نواز کے قریبی حلقے میں شامل نہیں رہے۔ مریم سے ان کا تعلق ایک چچا بھتیجی جیسا تھا‘ مریم ان کا بہت احترام کرتی تھیں‘ لیکن ان کے نزدیک عرفان صدیقی پرانے خیالات کے مالک تھے اور موجودہ تیز رفتار دور میں ساتھ نہیں چل سکتے تھے۔ جبکہ نواز شریف بلاشبہ عرفان صدیقی سے تقاریر لکھواتے تھے اور ضروری نکات بھی دیتے تھے۔

یہ بھی پڑھیں : نوجوان خواتین مالی خودمختاری کی جانب گامزن

ذرائع کا کہنا ہے کہ چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سمیت کئی اہم فوجی اور سول شخصیات عرفان صدیقی کے شاگرد رہے ہیں کیونکہ 30 برس سے زائد عرصہ انہوں نے بطور پروفیسر پڑھایا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ جن دنوں نواز شریف اور متعدد حلقوں میں کشیدگی چل رہی تھی‘ تب عرفان صدیقی نے کچھ عرصہ پل کا کردار بھی ادا کیا‘ لیکن نواز شریف کی گرفتاری کے بعد یہ سلسلہ ختم ہوگیا اور عرفان صدیقی گوشہ نشین ہوگئے۔

(469 بار دیکھا گیا)

تبصرے