Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعه 06 دسمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

کے الیکٹرک کراچی والوں کی کھال اتارلے گی،سپریم کورٹ

قومی نیوز جمعرات 25 جولائی 2019
کے الیکٹرک کراچی والوں کی کھال اتارلے گی،سپریم کورٹ

کراچی… سپریم کورٹ نے کے الیکٹرک کی بدترین کارکردگی پر ریمارکس میں کہاہے کہ کے الیکٹرک کو صرف آ مدن سے غرض ہے یہ پاکستانی نہیں یہ تو یہاں صرف کمانے آ ئے ہیں انہیں جتنا کمانا تھا کمالیا اب یہ کراچی والوں کی کھال بھی ادھیڑ کرلے جائینگے، میئرکراچی وسیم اختر نے بھی کے الیکٹرک کیخلاف شکایات کا انبار لگاتے ہوئے کہاکہ کے الیکٹرک نے ہمارے 7 ارب روپے دینے ہیں ہماری زمین استعمال کرتے ہیں ہمارے پیسے بھی دباکر بیٹھے ہیں اور ہماری ہی بجلی بھی کاٹ رہے ہیں۔

مئیر کراچی وسیم اختر عدالت میں پھٹ پڑے۔ وسیم اختر نے کہا کہ الیکشن کرانے کی ضرورت ہی نہیں تھی۔ جب اختیارات ہی نہیں دینے تھے تو مئیر بنانے کا فائدہ۔ دن رات دبائو میں کام کرتا ہوں۔ مگر کچھ کرنے کے لیے اختیارات ہی نہیں۔ یہ تو انہوں نے سپریم کورٹ کے حکم پر الیکشن کرادیئے۔

سیکرٹری بلدیات نے کہا کہ اگر یہ کام کریں تو ان سے زیادہ با اختیار ادارہ کوئی نہیں۔ بدقسمتی ہے کہ مئیر کراچی اور کے ایم سی حکام اجلاس میں بھی نہیں آتے۔ جسٹس گلزار احمد نے سیکرٹری بلدیات پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریماکس دیئے یہ منتخب مئیر ہیں ،اب آپ انہیں اپنے دفاتر میں طلب کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں : جمشیددستی کاانوکھا احتجاج ، سرمنڈوالیا

جسٹس گلزار احمد نے سیکرٹری بلدیات سے مکالمہ میں کہا کہ آپ کو تو ان کے پاس خود چل کر جانا چاہئے۔ سیکرٹری بلدیات نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ جی میں خود ان کے پاس بھی جانے کو تیار ہوں۔ میئر کراچی نے کہا کہ کے الیکٹرک نے ہمارے 7 ارب دینے ہیں۔

کے الیکٹرک سے پول، کیبلز اور کرائے کی مد میں اربوں روپے دلوائے جائیں۔ عدالت نے کے الیکٹرک کے وکیل سے مکالمہ میں کہا کہ آپ کے ایم سی کی بجلی کاٹ رہے ہیں تو اپنے حصے کی ادائیگی بھی تو کریں۔ عدالت نے ریماکس دیئے مئیر صاحب، آپ کے ملازمین اور افسران بھی تو مفت کی بجلی استعمال کرتے ہیں۔

جسٹس گلزار احمد نے ریماکس دیتے ہوئے کہا کہ دینے کے پیسے نہیں تو موم بتی اور لالیٹن کا استعمال کریں۔ دوران سماعت عدالت نے ریماکس دیئے مئیر صاحب، اگر یہ مسائل حل نہیں کر سکتے تو آ پ کے وجود کا فائدہ کیا۔

میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ ٹینشن میں مجھے نیند نہیں آ تی، جس پر جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ لگتا تو نہیں آ پ تو بہت ریلیکس نظر آ رہے ہیں۔ عدالت عظمیٰ نے کے الیکٹرک اور کے ایم سی کے مابین بجلی کے بلوں کی ادائیگی کے تنازع سے متعلق چیف سیکرٹری کو جمعرات 25 جولائی کو اجلاس بلاکر مسئلے کا حل نکالنے کا حکم دیدیا۔ سپریم کورٹ نے مزید سماعت 2 ہفتوں تک ملتوی کردی۔

(683 بار دیکھا گیا)

تبصرے