Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 20  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

وزیر اعظم عمران خان امریکا روانہ

قومی نیوز هفته 20 جولائی 2019
وزیر اعظم عمران خان امریکا روانہ

کراچی(قومی اخبارنیوز) وزیر اعظم عمران خان دورہ امریکا کے لئے روانہ ہوگئے وہ بائیس گھنٹے سفر کے بعدآج رات کو پہنچیں گے دورہ امریکا کے موقع پرجنرل باجوہ کا کردار اہم ہوگا۔ امریکا، روس اور چین جانتے ہیں پاکستان کے تعاون کے بغیر افغانستان میں کوئی تصفیہ نہیں ہوسکتا۔

وزیر اعظم عمران خان کے دورہ امریکا کے موقع پر سرمایہ کاری کی ضرورت پر زور دیا جائے گا اور افغانستان میں جنگ کے خاتمے اور شدت پسندوں کے خطرات کو ختم کرنے میں مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں : بھارتی معیشت کو بھی جھٹکے،قرضے کی ضرورت پڑگئی

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ ا ٓرمی چیف قمر جاوید باجوہ بھی دورہ امریکا میں عمران خان کے ساتھ ہوں گے اور دورے کے موقع پر وہ پس پردہ مذاکرات میں کلید ی کردار ادا کریں گے ، جس میں واشنگٹن کو امداد کی بحالی اور تعاون کی جانب راغب کیا جائے گا۔

تجزیہ کار عائشہ صدیقہ کا کہنا ہے کہ اس دورے کی سخت نگرانی کی جائے گی کیوں کہ انہیں پیسوں کی سخت ضرورت ہے۔گزشتہ سال صدر ٹرمپ نے پاکستان کو سیکورٹی معاونت کی مد میں دیئے جانے والے لاکھوں ڈالرز دینے سے انکار کردیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : امیزون کے بانی جیف بیزوس امیر ترین شخص

عمران خان کا ماننا ہے کہ بدھ کے روزحافظ سعید کی گرفتاری سے صدر ٹرمپ کو مثبت اشارے دیئے گئے ہیں۔جنہوں نے اس خبر کو اپنی ٹوئٹ میں خوش آئند قراردیا تھا۔ٹرمپ نے کہا تھا کہ یہ ان کی انتظامیہ کے پاکستان پر دباﺅ کا نتیجہ ہے کہ دس سال کے بعد حافظ سعید کوگرفتار کیا گیا ہے۔

صدر ٹرمپ افغانستان میں فوجی مداخلت کے خاتمے کی خواہش کا بھی اظہار کرچکے ہیں اور جنگ کے خاتمے کے لیے کسی معاہدے کے حوالے سے پاکستان کا کردار اہمیت کا حامل ہے۔ وہ یہ بھی چاہتے ہیں کہ افغانستان دولت اسلامیہ جیسی شدت پسند تنظیم کا مرکز نہ بن جائے۔

یہ بھی پڑھیں : عمرا ن خان واشنگٹن میں جلسے سے خطاب کرینگے

ایک تجزیہ کار کا کہنا تھا کہ امریکا، روس اور چین جانتے ہیں کہ پاکستان کے تعاون کے بغیر افغانستان میں کوئی تصفیہ نہیں ہوسکتا۔بھارت بھی اس دورے پر خصوصی توجہ دے گا۔

نئی دہلی نے ایف اے ٹی ایف پر بھی زور دیا ہے کہ وہ پاکستان کو بلیک لسٹ ممالک کی فہرست میں شامل کرے۔تاہم بھارت کے ٹرمپ انتظامیہ سے مسائل دوسرے ہیں جو کہ تجارت کے حوالے سے ہیں اور اسے افغان امن عمل سے دور کیے جانے پر تشویش ہے۔

(488 بار دیکھا گیا)

تبصرے