Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 29 فروری 2020
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

ہڑتال پر تاجر تقسیم‘ آدھی مارکیٹیں بند

راؤ عمران اشفاق هفته 13 جولائی 2019
ہڑتال پر تاجر تقسیم‘ آدھی مارکیٹیں بند

کراچی … بجٹ میں تاجروں پر ٹیکسوں کی بھرمار اور مہنگائی کے خلاف آج ملک بھر میں تاجروں کی جانب سے شٹر ڈائون ہڑتال کی اپیل پر تاجر 2 حصوں میں تقسیم ہوگئے‘ کراچی میں جوڑیا بازار‘ جامع الائنس مارکیٹ سمیت 100 تاجر تنظیموں نے آج کاروبار کھولنے کا اعلان کیا ہے جبکہ الیکٹرونکس مارکیٹ‘ صدر‘ صرافہ بازار‘ اردو بازار‘ گل پلازہ سمیت 400 مارکیٹوں میں کاروبار بند ہے جبکہ فلور مل مالکان نے بھی 17 جولائی کو ہڑتال کا اعلان کردیا‘ہڑتال کے معاملے پرتاجروں میں پھوٹ پڑنے کے بعد ایم اے جناح روڈ پر واقع 500 سے زائد مارکیٹوں میں کئی مارکیٹ کے باہر ہڑتال میں کاروبار بند رکھنے اور کئی مارکیٹ میں ہڑتال کی کال کو مسترد کرتے ہوئے کاروبار کھولنے کا اعلان کیا۔

آل سٹی تاجر اتحاد نے مرکزی تنظیم تاجران کی جانب سے کی جانے والی شٹر ڈائون ہڑتال سے مکمل لاتعلقی کا اظہار کیا ہے۔ تاجر رہنمائوں کے مطابق حکومت نے ہمارے11 مطالبات میں سے 10 مطالبات تسلیم کرلئے ہیں‘ اس لئے ہڑتال کا جواز نہیں بنتا۔

جوڑیا بازار ٹریڈر ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری عبدالقادر نورانی (بھولو بھائی)‘ لی مارکیٹ ایسوسی ایشن کے صدر محمود علی نے ہڑتال سے لاتعلقی کا اعلان کرتے ہوئے آج جوڑیا بازار اور لی مارکیٹ کھولنے کا اعلان کیا ہے۔

موٹر سائیکل ڈیلرز ایسوسی ایشن‘ جامع الائنس مارکیٹ کے صدر شیخ ارشاد اور خالد نور نے ہڑتال سے لاتعلقی کا اظہار کرتے ہوئے آج جامع کلاتھ مارکیٹ میں کاروبار کھلا رکھنے کا اعلان کیا ہے‘ جبکہ بوہرا پیرپینٹ ایسوسی ایشن‘ ہول سیل میڈیسن مارکیٹ‘ آل کراچی جیولرز مینو فیکچرز ایسوسی ایشن‘ آل ملیر تاجر اتحاد‘ لانڈھی‘ کورنگی بزنس فورم‘ پاپوش نگر ٹریڈرز‘ کپڑا مارکیٹ لیاقت آباد‘ گلشن اقبال تاج اتحاد‘ گلشن حدید مارکیٹ ‘ کے ایریا مارکیٹ کورنگی‘ شاہ فیصل مارکیٹ‘ سندھ آٹو پارٹس اسکریپ امپورٹڈ اینڈ ڈیلر ایسوسی ایشن کے صدر محمد علی قریشی نے ہڑتال سے لاتعلقی کا اظہار کرتے ہوئے آج مارکیٹ کھلے رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : اسد عمر کی کارکردگی چھوڑیں‘ ٹائمنگ غلط ہے

قبل ازیں انجمن تاجران سندھ کے صدر جاوید تحسین نے دعویٰ کیا ہے کہ آج کراچی سمیت سندھ بھر میں تاجر شٹر ڈائون ہڑتال کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ شہر کی 80 سے زائد ماکیٹوں کے رہنمائوں نے آج کاروبار بند رکھنے کا اعلان کیا۔

تاجروں میں موجود اداکاروں کی جانب سے ہڑتال کی مخالفت کی بھرپور مذمت کرتے ہیں‘ چند مفاد پرست تاجر احتجاجی معیار کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں‘ حکومت تاجروں کے مسائل حل کرنے میں کوئی دلچسپی نہیں رکھتی ‘ ٹیکسوں کا بوجھ ڈال کر کاروبار کو تباہ کیا جارہا ہے‘ مہنگائی سے عوام کی چیخیں نکل گئی ہیں‘ اضافی ٹیکسوں کے خاتمے تک ہم چین سے نہیں بیٹھیں گے جبکہ دوسری طرف تاجر تنظیموں میں ہڑتال کے معاملے پر پھوٹ پڑجانے پر دکاندار پریشان تھے۔

دکانداروں کے مطابق مارکیٹوں میں ایک گروپ ہڑتال کی حمایت کررہا ہے جبکہ دوسرا گروپ ہڑتال کررہا ہے‘ کاروبار کھلا رکھیں یا بند کریں۔ ادھر آل فلور مل ایسوسی ایشن کے چیئرمین نعیم بٹ نے بھی گندم اور جوپر اضافی ٹیکسوں کے خلاف 17 جولائی کو ہڑتال کا اعلان کردیا۔نعیم بٹ کے مطابق ٹیکسوں کے نفاذ کے بعد 10 کلو آٹے کا تھیلا 40 روپے مہنگا ہوجائے گا۔

قبل ازیں شہر میں متعدد علاقوں میں گزشتہ 2 وز سے متعدد دودھ کی دکانیں بند ہیں۔ دکانداروں کے مطابق منڈی سے ہمیں ساڑھے 5 ہزار روپے من دودھ مل رہا ہے اس لئے 94 روپے لیٹر دودھ فروخت کرنا مشکل ہے‘ قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے دودھ والوں کے گھروں کے چولہے ٹھنڈے ہوگئے ہیں۔

(943 بار دیکھا گیا)

تبصرے